کاشر رسالہ واد (قسط 1)


Image

گوڈہ "نیب” تہ پتہ "کاشر ادب”  رسالہ بند گژھنہ کنۍ یُس ژھریر کاشرس ادبی ماحولس منز پیدہ گومت اوس، خاص کر نوجوان ادیبن تہ پرن والین ہندِ خاطرہ، سہ ژھریر کور کنہِ حدس تام "واد” رسالن دور۔ گۅڈنکہ شمارہ کہ اداریہک گۅڈنیکے جملہ چھہ یتھہ پاٹھۍ شروع گژھان "ژھۅپہِ ہندس یتھ عالمس منز چھہِ وننکۍ تہ بوزنکۍ تمام ہاوس باسان وٹسۍ گامتۍ۔ مگر توتہِ چھہ بعضے انسان پھٹنس یتھ باکہ یژھان دین۔” واد رسالک گوڈنیک شمارہ دراو 1985 منز تہ امہ کس ادارتس منز ٲسۍ اقبال فہیم، م ح ظفر تہ نذیر جہانگیر۔ کینژِ کالۍ رود پتہ اقبال تہ ظفر اتھ سیتۍ تہ زیادہ پہن پوٚتس اقبالے۔ یہ رسالہ رود 1991 تام ؤری یس منز دۅیہ لٹہِ چھپان۔ امہ پتہ رود نہ میہ کشیرِ سیتۍ زیادہ تعلق لہذا چھیم نہ خبر 14 شمارہ پتہ کٲتیا بییہ شمارہ درایہ اتھ رسالس ونیک تام۔

امہ رسالہ کہ ذریعہ سپدۍ واریاہ نوجوان ادیب متعارف  تہ باقین تہِ میول چھپنک موقعہ، یمن منز خاص کر پانہ رسالک ادارہ، اقبال فہیم، م ح ظفر، نذیر جہانگر،  قاضی غلام محمد، رفیق راز، شفیع شوق، شاد رمضان، عزیز حاجنی، فیاض تلگامی، غلام احمد آجر، جی ایم آزاد، مشتاق مہدی، ثنا اللہ میر بیترِ  شامل چھہِ۔ رسالس منز رودۍ پرانہِ پییہ ہندۍ ادیب تہِ منزۍ منزۍ چھپان یمن منز چمن لال چمن، مظفر عازم، رتن لال شانت، ہری کرشن کول،  ہردے کول بھارتی، غلام احمد گاش، بشیر اختر، اوتار کرشن رہبر، غلام رسول سنتوش، امین کامل، اختر محی الدین، حامدی کاشیمری تہ رحمن راہی شامل چھہِ۔ یتھ رسالس منز ییتیاہ نوۍ تہ پرانۍ ادیب چھپان روزن تتھ چھہ پانے وقار حاصل گژھان۔ اقبال فہیمنۍ یا ونو ادارکۍ کھرۍلد اداریہ تہ تبصرو باوجود گوو یہ رسالہ سیٹھا مقبول۔

واد رسالہ کین یاد گار چیز ن منز چھہِ قاضی غلام محمد، رفیق راز تہ م ح ظفر سندۍ غزل تہ شفیع شوق سندۍ مضمون شامل۔

 گۅڈنکۍ سے شمارس منز چھپییہ امین کامل سنز نظم "تٲے نامہ”۔  یہ نظم بنییہ ریاستس منز  تمہ غیر اطمینانی تہ بیزاری  ہند پیش خیمہ یمیک نتیجہ کانسہ ہندس خیال وخوابس منز تہِ اوس نہ۔ نہ اوس کانسہِ یہ خیال زِ کامل ییہ یژھ ہش بے باک نظم ہیتھ برونہہ کن۔ امہ نظمہِ تہ امہ پتہ امہ قبیل چہ یم نظمہ  کاملن لیچھہ، نوۍ کیو ، بزرگ شاعر  لگۍ تمن ہنز پیروی کرنہِ تکیازِ امہ قسمہ چہ نظمہ  آسہ  وۅنۍ حسب حال۔ واد کس دویمس شمارس منز چھہ اکھ ذہین نوجوان جی ایم آزاد اتھ متعلق لیکھان ” گۅڈنکس شمارس منز یس چیز میہ ساروے کھوتہ زیادہ پسند آو سہ چھہ کامل صٲبن ‘تٲے نامہ’۔ یہ نظم چھیہ کاشرین ہنز مکمل داستان حیات۔ میہ سپز یہ نظم پٔرتھ پانس تہ پننین ہموطنن سیتۍ نفرت تہِ پیدہ تہ ہمدردی تہِ۔” شفع شوق چھہ تریمس شمارس منز اکھ نظمہ متعلق لیکھان "امین کاملنۍ طنزی نظم  ‘تٲے نامہ’ چھیہ اکھ یاد گار نظم آسنہ علاوہ زندگی سرنچ اکھ اہم کوشش۔”

Image

[امین کاملن چھہِ حاشیس منز نظمہ ہندۍ تم بند درج کرۍ متۍ یم واد والیو چھپاوۍ متۍ ٲسۍ نہ۔]

دویمس شمارس منز دراو اختر محی الدین سند اکھ سیٹھہے اہم مضمون یس راج ترنگنی منز کشیرِ ہنزن جایہ ناون ہنزِ غلط نشاندہی متعلق اوس۔ سہ چھہ لیکھان ” کشیرِ ہندین گامہ ناون یہ کھرۍ کانگر اننچ کٲم چھیہ میانۍ کنۍ تمہ دۅہہ شروع سپزمژ ییمہِ دۅہہ اسہِ راج ترنگنی کشیرِ ہنز گۅڈہ کالچ تواریخ ماننک غلط فیصلہ کور۔” مضمون اوس سیٹھا دلچسپ تہ امۍ تل اکھ زبردست بحث۔ وادسے منز چھپییہ اتھ متعلق زہ خط۔ ڈاکٹر ترلوکی ناتھ سند خط اوس اختر محی الدین سندین سوالن جواب کم تہ جذباتی زیادہ، مگر بشیر اختر سند خط اوس اختر محی الدین سندین نتیجن سیتۍ کینہہ دلچسپ حوالہ دتھ اختلاف کران۔ مگر اختر محی الدینن دیت ستمس شمارس منز بشیر اختر سندین اعتراضن اختر بنام اختر خطس منز اکہ اکہ پرُن لایق جواب۔ کشیرِ چھا دراوڈ بسیمتۍ؟ اختر محی الدین تہ محمد یوسف ٹینگ چھہ یہ دعوی کران۔ یمن خطن منز آو یہ تہِ زیر بحث۔ از چھہ نہ یہ کانہہ مسلے۔ کشیرِ ہندین کینژن علاقن منز چھہ ڈی این اے ٹیسٹ کرُن، سورے اول وانگن نیرِ زِ کاشرین منز کہند کہند خون چھہ۔  

دویمس شمارس منزے چھپیوو ہری کرشن کول سنزِ ‘حالس چھہ روتل’ افسانہ سۅمبرنہِ پیٹھ رفیق راز سند تبصرہ یتھ منز تمی یہ بھارتی تہ رہبرس مقابلہ کمتر افسانہ نگار قرار دیت۔ راز سند بنیادی اعتراض اوس زِ کول سندۍ زیادہ تر افسانہ چھہِ ہنگامی نوعیتکۍ تہ بٹن ہندین مسلن تہ اکس محدود جغرافیاہس منز بند۔ امۍ تل بیاکھ بحث، اتھ متعلق آو خطن منز اختر محی الدین تہ شفع شوق سند رد عملہ علاوہ خود ہری کرشن کولن سند حوابی مضمون۔ کول سند جواب اوس مفصل تہ وایاہن اہم کتھن پھٹ کڈان مگر ژکھہِ ہوت۔ وادس منز آیہ واریاہن خطن منز ادبس تہ ادبی بحثن منز بٹل تہ مسلمانی ورتاونک الزام اکھ اکس پیٹھ لگاونہ۔ یمہ بحثک اکھ کونہ اوس اور کن تہِ اشارہ کران۔

کاشر رسالہ واد (قسط 1)” پر 9 تبصرے

  1. Vaad aaw tami vizi yeli akh khaas adbi tabqa raaj oas karaan..yi gov na nawjawaan lekharen brdaasht..mgr ami saeti yus nov wutush log su rood adba baapath jaan..kamil sbn nazm hiw tkhleeq peyi thana ta aayi baazras…waqi chhe yi nzm akh now bartsar heth..vaad chhu woni yi dapi zi ta tshokyomut…..

    پسند کریں

  2. کنہ تہ زباني منز ادبی رسالن ہنز موجودگی چھہ یمہ کتھہ ہند ثبوت زہ اتھ منز چھہ تخلیقی امکانات-کاشر زبان چھے امہ لحاظہ بدقسمت زہ اتھ منز چھپن وول کانہہ تہ رسالہ ہیوک نہ زیادس کالس چلتھ- امہ خاطرہ کس چھہ ذمہ وار’ اتھ پیٹھ پزہ کاشرین ادیبن سرن سونچن-‘نیب’ رسالن کر اکہ پیہ ہنز ادبی تربیت تہ امیک بند گژھن اوس اکھ بوڈ نقصان- ”واد” رسالن تھوو واریاہس کالس کاشر ادبی ماحول متحرک- مگر یہ تہ ژھوکیو جلدی-”نیب” رسالک احیائے نو چھہ خوش آیند قدم- وچھن چھہ یہ زہ امیک مدیر کاتس کالس ہیکہ کاشرین ادیبن ہنز بے اعتنائی ہند مقابلہ کرتھ-

    پسند کریں

    1. "وچھن چھہ یہ زہ امیک مدیر کاتس کالس ہیکہ کاشرین ادیبن ہنز بے اعتنائی ہند مقابلہ کرتھ-”
      آزاد صاب، یہ کتھ ونۍ وہ تۅہہ پٔز۔ رسالہ کڈن وول چھہ پریتھ شمارہ پتہ یتھ کمکشس منز آورنہ یوان زِ بیاکھ شمارہ کڈا کنہ نہ۔

      پسند کریں

  3. راز چھہ یُہے: "بے اعتنٲیی”۔ ﴿اتھ چھہ بے شک تواریخی تہ سمٲجی وجوہات، وجوہات آسہ ہن سِلہ بٮ۪مارہ تہ۔ غٲب گیہ!﴾
    اگر یار دل دِن، امہ وٮ۪ژھیہ ہند جواب چھہ انٹرنٮ۪ٹ۔ مگر شرط چھہ یُہے "بے اعتنٲیی” تۯاونۍ تہ دل دیُن۔
    فیس بکن انہ واریہن کتھہ۔ انٹرنٮ۪ٹک استعمال ہیکہ کرامات کرتھ ۔

    پسند کریں

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s