سند اننچ روایت

یہ ٲس اکھ روایت تمہ زمانچ ییلہ عام انسان پننہِ تقدیرک پانہ مٲلک اوس نہ۔ کیا دینی، کیا علمی، کیا مالی، تمام معاملن منز اوس سماجہ کین کینژن فردن پتہ پتہ پکان۔ یہ اوس محتاج انسان۔ دینی معاملن منز اوس عام انسانہ سند گۅناہ ثواب مذہبی رہنماہن (یمن اسۍ از ملہ ونان چھہِ) مٹہِ تکیازِ عام انسانس نہ ٲس تعلیم تہ نہ سۅد بۅد ۔ ماخذن تام تہ ٲسکھ نہ دسترس۔ کانہہ تہ معاملہ آسہِ ہے کیا چھ ٹھیک کیا غلط تہِ پتاہ کرنہِ ٲسۍ کنی ٹکھ مذہبی رہنماہن نش نوان۔ تمے ٲسکھ وتہ ہاوک بنان۔ یۅہے حال اوس علمک۔ علم تہِ ما اوس عام۔ خواندگی ٲس نہ عام تہ علم کپارۍ آسہِ ہے عام، بییہ ٲس نہ تم ذریعہ تہ یم ازکۍ کس انسانس دستیاب چھہِ۔ صرف ٲسۍ کینہہ شخص آسان یمن عٲلم ناو پیوٚو۔ یمنے نش اوس عام انسان ژاٹہ کوٚٹ کٔرتھ بیہان۔ سیاسی معاملن منز اوس بادشاہ صٲب  یا تسند نایب عام انسانس پیٹھ راجا تاجا کرنہِ بیہان۔ پانے۔ پننی مرضی۔ بادشا اوس خدایہ سند نایب ماننہ یوان۔ مالی حالت ٲس یہ ز کینزنے شخژن نس اوس مال، ملیکت تہ دولت۔ یمے ٲسۍ عام انسانن بیگارِ لاگان۔ یہ اوس اکھ دنیا یس یتھے پاٹھۍ چلان اوس۔ انسانی تمدنک اکھ  مرحلہ۔ اتھ دنیاہس منز ٲس لازما شخص پرستی۔ واریاہن کلچرن منز چھیہ نہ یہ شخص پرستی ونہِ تھپھ تلان۔

ازکۍ کس زمانس منز چھہ پریتھ فرد پننہِ تقدیرک پانہ مٲلک۔ تکیازِ ازچھیہ تعلیم عام، خواندگی تہ ماخذن تام چھیہ عام انسانہ سنز دسترس۔ پرانین ہنز سند اننچ روایت ٲس پرانۍ سے دنیا ہس منز شوبان تہ معنی تھاوان۔ ییلہ تعلیم عام گژھان چھیہ سندِ ہنز جاے چھیہ دلیل رٹان۔ سند اننۍ ٲس پرانہِ دنیاہچ مجبوری، ازچ حقیقت چھیہ دلیل، یتھ استدلال تہِ ونان چھہِ۔ مچھہِ پیٹھ مچھ مارنۍ اوس پرانہِ دنیاہک وطیرہ۔ اتھۍ دنیا ہس منز ٲسۍ لوکھ زبانۍ ہندین معاملن منز، لفظہ کس استعمالس تہ باقی معاملن منز پرانین شاعرن ہنز سند پیش کران تکیازِ تہندۍ شعر ٲسکھ جٹ پٹ یاد آسان۔ کتابہ ما آسہ لوکن نشہِ، ڈکشنری ما آسہ۔ ساروے کھوتہ بٔڈ ریفرنس ٲس لوکن ہندس یاداشتس منز پرانین ہندۍ شعر۔ ہتن نفرن ہنز دلیل ٲس اکس شاعر سنزِ سندِبرونہہ کنہِ لٲر ہش پتھر پیوان۔

اگر پرانۍ تہِ سندے یاژہ ژھانڈان آسہن نویر کپارۍ ییہِ ہے، نوۍ استعمال کپارۍ گژھہن عام۔ تمن ٲس گاہے گاہے پننہ مجبوری منزہ نیرتھ بغاوت کرنۍ پیوان۔