حیات عامر حسینی سنز شاعری


کانہہ تہِ بٔڈ شاعری ہیکہِ نہ روحانی یا فکری تصوراتن تہ خیالاتن نیبر سپدتھ۔ خالص خوبصورت لفظ، آہنگ تہ خود امکانی معنی یودوے ازۍ چہ شاعری ہند بوڈ حصہ چھہِ تہ لوکن ہندین دلن تہ دماغن برابر رنزناوان چھہِ، مگر یم چھہِ نہ اتھ ادبی کارگزاری کانہہ وسیع تہ سرون معنی عطا کٔرتھ ہیکان۔ اتھ شاعری پتہ کنہِ چھہ نہ زندگی متعلق شاعر سند  پنن سوچ کارفرما۔ یہ شاعری چھیہ زیادہ تر زبانۍ تہ معنی کہ ورتاوہ کہ حوالہ اتفاقی تہ ایکسیڈنٹل۔ اتھ منز چھہِ شاعر سندیو فکری تہ عملی تجرباتو بدلہ زیادہ تر لسانی سیاقس منز سپدن والۍ خودکار تجربہ درینٹھۍ گژھان۔ یہ شاعری چھیہ واریاہن مثالن منز شعری فارمہ ہندِ ورتاو چ کرتب بازی بنان۔ حیات عامر حسینی چھہ نہ امہ قسمہ چہ شاعری منز دلچسپی تھاوان۔ یہ شاعری ہیکہ نہ کانہہ ٹیگور، اقبال یا الیٹ پیدہ کٔرتھ۔

حیات عامر سنز شاعری چھیہ امہ لحاظہ ایمبیشس تہ تمن شاعرن منز شامل گژھنچ کوشش کران یم شاعری اکھ اہم مفکری کارگزاری تصور کران چھہ‏۔تسنز شاعری چھیہ اکی آنہ انسانی تواریخ تہ وجودی مسلن کۅم کرنچ کوشش کران۔ تسننرِ شاعری منز چھہِ زمان و مکانکۍ تصورات جایہ جایہ اظہار لبان۔ سہ چھہ مقامی صورت حالس تہِ اکس وسیع انسانی تواریخی پوت منظر کس گاشس منز وچھنک قایل۔ تسنز شاعری چھیہ انسانہ سندِ روحانی شناختچ تلاش۔

حیات چھہ نہ مختصر لریکل شاعری ہند زیادہ قایل، تسنز نظم چھیہ ایمبشس آسنہ کنۍ زیچھرس کن لمان۔ یہ چھہ اکھ سفر تہ اتھ زیچھہِ وتہِ قاری یس پانس سیتۍ پکناونہ خاطرہ چھہ سہ شعر کین ظاہری گۅنن یعنی آہنگس تہ امیجری تہِ سیٹھا کٲم ہیوان۔ یہ امیجری چھیہ رلہ ملہ مقامی تہِ تہ آفاقی تہِ۔ اتھ منز چھیہ کشیر تہِ تہ عرب وعجم تہِ، یہ چھیہ کایل تہِ تہ اکایل تہِ۔امہ کس آہنگس منز چھہ تواریخ کین پڈرین ہند گرز تہ وقتہ چین کۅلن ہنز روانی تہِ۔  حیات نین نظمن منز چھہِ خیروشر،  کاز اینڈ ایفیکٹ، سوال وجواب، مسلہ تہ حل بیک آن موجود۔ سہ چھہ پننہ نظمہِ ہندِ خاطرہ اکس مانوس ماحولس منز  وسیع علامتی شناخت پیدہ کرنچ کوشش کران۔

کمۍ تام چھہ انگریزی ادبس منز وونمت زِ بٔڈۍ شاعر چھہِ "کیا” ونان تہ لۅکٹۍ شاعر چھہِ "کتھہ پاٹھۍ” ونان۔ مگر حقیقت چھیہ یہ زِ اتھ "کیا”ہس تام واتنچ وتھ چھیہ یۅہے "کتھہ پاٹھۍ”۔ حیات عامر چھہ یۅہے” کیا” وول شاعر تہ یوت یوت یہ اتھ "کتھہ پاٹھۍ” یس کامہِ لاگہ، دویمین لفظن منز یوت یوت یہ موادس نظمہِ ہنزِ ہیژ تہ زبانۍ سیتۍ  کن ہیکہِ کٔرتھ، تیوت کن زِ مواد ییہ نہ الگ پاٹھۍ بوزنہ، تیوت روزن امۍ سنزہ نظمہ کامیاب تہ میہ چھہ پورہ یقین زِ کاشرِ معاصر شاعری منز کرن اکھ نوو تہ قابل قدر اضافہ۔

حیات عامر حسینی سنز شاعری” پر 2 تبصرے

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s