ابرو دو نون، چشمان دو صاد


32

نذیر آزادن چھیہ رسول میرس پیٹھ  بہترین کتاب لیچھمژ۔ کتابہِ منز چھہ تواریخ تہ ادبی رشتہ کنۍ یہ ہاونہ آمت زِ رسول میر اوس کاشرس منز تمی شعریاتک ترجمان یۅس تمہ وقتہ فارسی تہ اردوس منز رایج ٲس۔ یہ چھیہ اہم کتھ۔ دویم اہم کتھ یۅس اتھ کتابہِ منز چھیہ، سۅ چھیہ رسول میر نین واریاہن شعرن ہنز تفہیم فارسی اردو شعریات کہ تصورہ مطابق۔ شعرن متعلق چھہ واریاہ تم نکتہ واضح کرنہ آمتۍ یمن کن نہ عام طور ظۅن گژھان اوس۔

وژنک اکھ بند یتھ متعلق نذیر آزادن غلام محمد شاد روٹمت چھہ، چھہ یتھہ پاٹھۍ:

وچھتون لیوکھ کمۍ اوستاد
ابرو دونوں چشماں دو صاد
لوح جبیں بینی قلم
کن تھاو رۅخ ہاو اے صنم

غلام محمد شاد چھہ امیک گۅڈنیک تہ دویم مصرعہ یتھہ پاٹھۍ دوان

وچھتون سہ کمۍ کور اوستاد
ابرو دو گوں چشماں دو صاد

دوگوں لفظس چھہ شاد معنی دوان : زہ کمٲنۍ

آزاد چھہ لیکھان:”اسۍ کرو فرض ِ کٲنسہِ لسم جو قسمکۍ لغت نگارن آسہِ امیک معنی کمان درج کورمت تو پتہ تہِ چھیہ نہ رسول میرنس شعرس سیتۍ اتھ کانہہ مناسبت۔ دراصل مناسبتس سیتۍ لۅے ُخۅے نہ آسنہ کنۍ چھہ شاد صٲبن ابرو کمان ترکیب نظرِ تل تھٲوتھ گۅڈہ معنی ژھونڈمت تہ پتہ لفظ تھرمت۔”

حقیقت چھیہ یہ زِ غلام محمد شاد چھہ نہ لفظ تھران بلکہ اتھ دوگون لفظس چھہ معنی تھران، خبر تم کتہِ چھہ اونمت یہ دوگون لفظ، شاید کنہِ قلمی نسخہ پیٹھہ۔ نذیر آزاد چھہ یہ مصرعہ یتھہ پاٹھۍ دوان یُس صحیح چھہ

ابرو دو نون چشمان دو صاد

نذیر آزادس ٲس نہ مثال میسر۔  ابرووس چھیہ فارسی روایتس منز نونس سیتۍ تشبیہہ دنہ آمژ۔ یہ چھہ نہ رسول میر سند پنن اختراع۔ شاید آسہِ ہے رسول میرس مولانا سنزِ مثنوی ہند یہ شعر مدنظر:

نون ابرو صاد چشم و جیم گوش
بر نوشتی فتنہء صد عقل و ہوش

اردوس منز تہِ چھہِ یم یتھے پاٹھۍ ورتاونہ آمتۍ۔ مثلا سراج اورنگ آبادی سند یہ شعر

ہیں صاد اس کی آنکھیں اور قد الف کے مانند
ابرو ہے نون نادر گیسو ہے لام گویا

مولانا چھہ یہ شعر اکس مناجاتس منز پیش کران، یمہ تعلقہ رسول میر سندِ بندکہ گۅڈنکہِ مصرعک تہِ جواز پیدہ گژھان چھہ۔ رسول میر چھہ اتھ وژنس منز معشوق سندۍ تعریف کران تہ اتھ بندس منز معشوق سند ۍ کنۍ خدایس تعریف تہ خدایہ سندۍ کنۍ معشوقس تعریف۔ امہ چی ریفرنس چھہ اوستاد لفظ، مگر ٹینگ سندس متنس منز چھہ گۅڈنیک مصرعہ عجیب گرامر پیش کران، شاد سند دیتمت مصرعہ چھہ  شاید زیادہ موزون۔

ٹینگ چھہ یہ مصرعہ پننس کلیاتس منز دۅن جاین دوان۔ پننس تبصرس منز تہ متنس منز۔ مگر دۅشونی جاین چھہ "دو نون” بدلہ "دونوں” دوان یُس زن غلط۔ چھہ۔ دراصل چھہ ٹینگ مچھہِ پیٹھ مچھ ماران۔ تمۍ یتھ نسخس پیٹھ یہ وچھہ تتہِ تہِ چھہ یہ "دونوں” د‏تھ، "دو” پتہ لفظہ ژھینچ جاے تراونہ ورٲے "نوں” یمیک مطلب "دۅشوے” چھہ۔ نذیر آزاد چھہ بلۍ ونان زِ ٹینگ سندس متنس منز چھہ مناسبتک خیال نظرِ گژھان۔ اگر ٹینگن یہ صحیح لیوکھمت آسہِ ہے (نونس چھہِ نہ فارسی یا اردو یا کاشرس منز "نوں” ونان، بییہ چھیہ دو تہ نون لفظن درمیان لفظہ جاے ضروری)، شاد کیازِ لگہِ ہے "دونوں” لفظک بیہ محل تہ بیہ مطلب ورتاو وچھتھ اتہِ نس کانہہ مطلب وول لفظ ژھانڈنہِ۔ افسوس چھہ زِ تس آو نہ صحیح تہ برونہہ کنیک لفظ ٲستھ تہِ "نون” اتھہِ۔

امہ اکہِ بندہ علاوہ چھیہ نہ ٹینگ تہ شاد سندس متنس منز کانہہ فرق۔ البتہ چھہ اکھ مصرعہ ٹینگ غلط دوان

موسیقار زن ونہِ زار

شاد سند مصرعہ  چھہ صحیح باسان۔

سازندر زن وایہِ تار

رسول میرن چھہِ کینژن شعرن منز معشوق سندِ ظاہری حسنہ کین تعریفن منز فارسی شعری روایت چہ دیکھا دیکھی منز حروف تہجی ورتاوۍ متی یتھہ پاٹھۍ اسۍ پیٹھمس بندس منز وچھان چھہِ۔ نذیر آزاد چھہ ٹینگس تھر کھٲلتھ ونان "میرن (کور) پزۍ پاٹھۍ بقول محمد یوسف ٹینگ یہ (عربی/فارسی/اردو) رسم خط مستحکم تہ قلعہ بند۔”

ٹینگس چھیہ یتھنے چیزن ہنز تلاش آسان۔ سہ چھہ امہ قسمہ کیو بیانو سیتۍ پننہِ تنقیدچ آرایش کران۔ ونان چھہ "شعر کہ تخلیقی استعمالہ سیتۍ (بنوو رسول میرن) عربی، فارسی رسم الخط تہ خاص کر تمیک نستعلیق طرز کاشرِ زبانۍ ہنز تہذیبی وراثت۔” ٹینگس چھہ یتھنے غیر ادبی معیارن مدنظر شاعرن تھر کھالنس مزہ یوان۔

سوال چھہ یہ زِ کیا رسول میرس برونہہ اوس نا حروف تہجی کٲنسہِ شعرن منز ورتوومت؟

محمود گامی تس برونہہ ونان:

الف قد میون سپد دال

رسول میرس برونہہ ینہ وول سۅچھ کرال چھہ حروف تہجی ین پیٹھ اکھ پورہ وژن ونان، یمیک اکھ بند مثالہ پاٹھۍ پیش چھہ:

خ خودی نشہِ یُس نہ پیوے
د دنیا گوس نالۍ
ذ ذلتس منز سہ پیووے
بوز عربی روویے

رسول میر اوس اکہِ شعری روایتچ تقلید کران یتھ منز حروف تہجی سیتۍ معشوق سندس حسنس تعریف کرنہ ٲسۍ یوان، نستعلیق کتہِ آو اتھ منز؟ میم دہان ما چھہ نستعلیق میم، بلکہ چھہ یہ نسخ میم یعنی عربی زبانۍ ہند میم ییتہ پیٹھہ یہ حروف تہجی ورتاونچ روایت فارسی یس منز آمژ چھہ۔ رسول میر سنزِ شاعری منز یۅس شوخی یا خوش مزاجی (playfulness) چھیہ تمہ کنۍ آو یہ استعمال تس زیادہ بکار۔ رسول میرس برونہہ چھہ حروف تہجی یک ذکر شیخ العالم کران:

کل علم چھے الف لام میم شین

تیلہِ کونہ دمو اسۍ کاشرِ زبانۍ منز عربی فارسی خط مستحکم کرنک اعزاز شیخ العالمس؟

حروف تہجی فارسی شعرچہ روایژ ہندس تقلیدس منز ورتاونس تہ کاشرِ زبانۍ منز یہ نستعلیق خط مستحکم کرنس کس تعلق چھہ؟ سہ کمۍ تہ کر کور کاشرِ کہ خاطرہ کانہہ تہِ رسم خط مستحکم؟ یہ رسم خط اوس کشیرِ منز فارسی یس ستیۍ آمت تہ فارسی لیکھنہ خاطرے اوس ورتاونہ یوان، کاشرۍ قلمی نسخہ تہِ اگر اتھ منز لیکھنہ آے تم آیہ نہ رسول میر سندیو یمو شعرو کنۍ لیکھنہ۔ فارسی کنۍ اوس یہ خط رسول میرس برونہہ کشیر ہندس تہذیبی وراثتس منز شامل سپدمت۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s