شعری فارمہِ ہنز فنی تنظیم


رحمن راہی سنز اکھ کتاب چھیہ "شعر شناسی” یتھ منز کاشرین بآتن پیٹھ الگ الگ تنقیدی تبصرہ لیکھنہ چھہِ آمتۍ۔ تنقیدی تبصرہ کس ناوس پیٹھ چھہ اکثر بٲتن ہند معنی تفصیلہ سان بیان کرنہ آمت۔ اتہِ نس چھہ سوال پیدہ گژھان شعر شناسی کتھ ونو؟ شعرن ہند معنی بیان کرن یودوے اکھ بنیادی قدم ہیکہِ ٲستھ، کیا شعر شناسی چھا شعرن ہند معنی بیان کرنس تامے محدود؟ یم کاشرۍ بٲتھ کتابہِ منز شامل چھہِ تم چھہِ زیادہ تر لوکہ بٲتھ یعنی تم چھہِ نہ غالب سندۍ خیال بند شعر زِ تشریح ہنز پییکھ ضرورت۔ نہ چھہ یمن منز کانہہ مشکل لفظ یا تلمیحہ یمن ہنز وضاحت ضروری بنہِ۔ یہ کتھ چھیہ اہم تہ یمیک احساس اتھ کتابہِ منز بالکل چھہ نہ گژھان چھیہ یہ زِ لکہ بٲتن ہنز شعریت چھیہ نہ تمن منز موجود خیالن اندر۔ مثالہ پاٹھۍ نمون اسۍ اکھ لوکہ بٲتھ یُس اتھ کتابہِ منز شامل چھہ تہ وچھو زِ راہی کتھہ پاٹھۍ چھہ اتھ بٲتس پران۔ گۅڈنیتھ کرون یہ بٲتھ تتھے پاٹھۍ درج یتھہ پاٹھۍ یہ اتھ کتابہِ منز چھہ:

ہن ہن چھم لولہ چانہِ بٲرتھ
زۅلہ چھیم نو سۅندٲرے سۅندرے

تیر مژگاں دتۍ تھم دٲرتھ
گٲمہ جگرس پنجرے پٲنجرے
دٲدۍ لد چھس کوت ہیکہ لٲرتھ
زۅلہ چھیم نو سۅندٲرے سۅندرے

وژھہِ وٲنجہِ ہاوے مژرٲوتھ
پہۍ پن زٲن ہرٲیو ہریو
مژھہِ مژھ بند زن گژھے لٲرتھ
زۅلہ چھیم نو سۅندٲرے سۅندرے

گچھہ کُٹھہِ نے تھاوے وتھرٲوتھ
لچھہ ناویو مندورے سانہِ بیہہ
اچھہ دٲر زن روزے پٲرٲوتھ
زۅلہ چھیم نو سۅندٲرے سۅندرے

لالہ گومے باغہ منزہ نیرتھ
پوش لاگٲس گۅندٲرے گۅندرے
کینہہ نہ منگہ سے ییم نا پھیرتھ
زۅلہ چھیم نو سۅندٲرے سۅندرے

پانژن شین صفحن ہندس تبصرس منز چھہ راہی معنی بیان کرنہ علاوہ زہ کتھ بٲتس متعلق ونان۔ اکھ امہ کس قافیس متعلق تہ بیاکھ امہ کین بندن ہنزِ ترتیبہِ متعلق، سہ تہِ تمن منز بیان کرنہ آمتین وٲرۍ داتن ہندِ منطقہ کہ تعلقہ۔
وچھو وۅنۍ راہی کیا چھہ فرماوان:

ss

"زندگی ہند کن تہ کیول مدعا چھہ تس وۅنۍ مدنوارس سیتۍ اکھ بے پھروک میل۔ مگر یہ روایتی موضوع یمہ آیہ ورتاونہ آمت چھہ سہ ورتاو چھہ تیوت خۅش آہنگ تہ بے شونک زِ بوزن وٲلس زن چھیہ مٲنتھر لگان تہ تس چھہ نہ بٲتس منز موجود کینژن فنی خامی ین کن تہِ سہل سہل ظۅن گژھان۔” (صرف چھہ ونان "یمہ آیہ ورتاونہ آمت چھہ”۔ یہ چھہ نہ ہاوان زِ کمہ آیہ چھہ ورتاونہ آمت۔)

بہرحال، گویا راہی یس چھیہ اتھ بٲتس منز فنی خامی نظرِ گژھان۔ وضاحت چھہ کران:

"بٲتس منز ورتاونہ آمتۍ قافیہ چھہِ امچ ٹاکارہ مثال۔ ہرگاہ قافیہ بندی ہندین کلاسیکل اصولن کن گژھو تیلہِ زن گژھۍ نہ مثالے دٲرتھ تہ لٲرتھ ہوین لفظن سیتۍ نیرتھ، پٲرٲوتھ ہوۍ لفظ ہم قافیہ گنزراونہ ینۍ۔”

مگر سیتی چھہ ونان اتھ بٲتس "منز باونہ آمتۍ جذبات چھہِ تیتۍ وتشل زِ یہ فنی بے قاعدگی چھیہ نہ کانہہ عیب باسان۔” حقیقت چھیہ یہ زِ فنی خامی چھیہ فنی خامی تہ کنہِ تہ صورتس منز ییہ یہ عیب گنزراونہ یوت تام نہ امیک کانہہ جواز یا ضرورت یا مجبوری آسہِ۔ (یم وتشل جذبات چھہ تمام لوکہ شاعری منز، اتھ منز کیا خاص کتھ چھیہ یمہ کنۍ قافیس کن ظۅن چھہ نہ گژھان، تہِ گوژھ ونن۔)

اکہ طرفہ چھہ ونان زِ یہ چھیہ فنی خامی تہ بییہ طرفہ چھہ ونان یہ چھہ نہ عیب، وجہ چھہ بیان کران ز "بوزن وول چھہ نہ اتھ ظۅنسے گژھان۔ میہ وون بوزن وول۔ پرن والۍ سنز کٔر نہ میہ کتھ تکیازِ گیون بٲتن گژھہِ نہ چھٲپی نظمن ہنز نظر کرنۍ۔”

گویا اگر نہ اتھ اچھو سیتۍ وچھو، قافیچ خامی چھیہ نہ محسوس گژھان۔ مگر راہی چھہ نہ اتھ بٲتس اچھو سیتۍ تہِ سنان، بوزتھ چھہ نہ سوالے۔ گۅڑنچی کتھ چھیہ یہ زِ بٲتھ چھہ تتھ ہیتس (فارمہِ) منز یتھ اسۍ وژن ونان چھہِ۔ یہ ژینن چھہ ضروری۔ راہی چھہ اتھ بٲتھ ؤنتھ امہ چہ فارمہ نظر انداز کران حالانکہ روایتی شاعری منز چھیہ فارم اہم۔ بٲتھ چھیہ نہ کانہہ شعری ہیت، نہ لفظ منظومہ یُس راہی اکثر ورتاوان چھہ۔ اگر امہ بٲتچ ہیت مدنظر روزِ، امچ تنظیم تہِ ییہ برونہہ کن۔ فن چھہ فارم ورتاونک طریقہ تہ سلیقہ۔ یوت تام نہ فارم بدِ ییہ کڈنہ، فنچ کتھ کتھہ پاٹھۍ سپدِ۔ قافین منز بے قاعدگی وچھنک وجہ چھہ یہ زِ راہی چھہ اتھ بٲتس نظمہ ہندۍ پاٹھۍ پران تہ ہیرہ پیٹھہ بۅن تام کنے قافیہ تصور کران۔ دویم غلطی یۅس راہی کران چھہ، سۅ چھیہ یہ زِ سہ چھہ بٲتہ کین قافین "قافیہ بندی ہندین کلاسیکل اصولن” ہنزِ نظرِ وچھان؟ کم کلاسیکل اصول؟ تہ چھیہ نہ پتاہ۔ دراصل چھہ تس برونہہ کنہِ غزلہ کین قافین ہنز اصول بندی۔ حالانکہ قافیہ چھہِ غزلہ علاوہ مثنوی ین منز تہِ ورتاونہ آمتۍ۔ تم گژھن وچھنۍ تہ پتہ گژھہِ کتھ کرنۍ۔

وژنس ہیکن الگ الگ بندن منز الگ الگ قافیہ یِتھ۔ اتھ بٲتس پیٹھ اگر سرسری نظر تہِ تراوو، الگ الگ قافیہ نیرن ننۍ۔ پریتھ بند کس گۅڈنکس تہ تریمس مصرعس چھہ کنے قافیہ۔ الگ الگ بندن چھہ الگ الگ قافیہ۔ مگر راہی چھہ اتھ ہیرہ پیٹھہ بۅن تام اکوے قافیہ زٲنتھ پران۔ حالانکہ

گۅڈنکس بندس چھہ /دٲرتھ/ تہ /لٲرتھ/ قافیہ۔
دویمس بندس چھہ /مژرٲوتھ/ تہ لٲرتھ/ قافیہ۔
تریمس بندس چھہ /وتھرٲوتھ/ تہ پٲرٲوتھ/ قافیہ۔
ژورمس بندس چھہ /نیرتھ/ تہ /پھیرتھ/ قافیہ۔

قافیک تعریف کیا چھہ؟ کتابی اصطلاحن ہندس گھن چکرس منز گژھنہ ورٲے، تکرار تہ تنوع۔ یوہے چھہ قافیک اصول۔ لفظہ چین ہشن آوازن ہند تکرار۔ تکراری آوازِ برونہہ ینہ واجنہِ آوازِ ہند تنوع۔ مثلا گۅڈنکہ بند کین قافین منز چھہ تکراری حصہ /ٲرتھ/ تہ تنوع وول حصہ چھہ /د/ تہ /ل/۔

وچھو وۅنۍ دویمہ بندک قافیہ امی اصولہ مطابق۔ تکراری حصہ چھہ /اِتھ/ (یعنی زیر تہ تھ) تہ متنوع حصہ چھہ /و/ تہ /ر/۔

ژورمہِ بندک قافیہ چھہ تکراری حصہ /یرتھ/ تہ متنوع حصہ /ن/ تہ /پھ/۔

تریمس بندس چھہ نہ قافیہ امہ اصولہ کنۍ مکمل پاٹھۍ کارگر، مگر اگر گۅڈنیک لفظ زیٹھراوون تہ /وتھرٲوتھ/ بدلہ /وتھٲرٲوتھ/ پرون (یہ چھہ بقول راہی گیون بٲتھ)، یہ قافیہ تہِ چھہ صحیح۔ /ٲرٲوتھ/ چھہ تکراری حصہ تہ /تھ/ تہ /پ/ متنوع حصہ۔ راہی ییلہ یمن بٲتن منز اکثر لفظ زیٹھراوان چھہ (مثلا پوش لاگس بدلہ پوش لاگٲس، بٔرتھ بدلہ بٲرتھ)، یہ لفظ کیازِ ہیکون نہ زیٹھرٲوتھ /وتھرٲوتھ/ بدلہ /وتھٲرٲوتھ/ پٔرتھ؟ بیاکھ کتھ چھیہ یہ زِ یم بٲتھ چھہ سینہ بہ سینہ پکان تہ یمن ہندۍ لفظ تہ بند تام چھہ تبدیل سپدۍ متۍ۔ امہ بٲتک یہ بند تہِ چھہ باسان اتھ جوڑنہ آمت۔ ثبوت ییہ برونہہ کن۔

کاشرِ لکہ شاعری منز کمہِ کشادگی سان چھہ قافیہ ورتاونہ آمت، تمیک اندازہ گژھہ "شعر شناسی” ہندس مصنفس میانہِ کھوتہ زیادہ آسن۔ مثالہ خاطرہ وچھون حبہ خاتونہِ ہند یہ وژن:

پھۅلہ ونہِ زیٹھے چھے میون سالو
لالو از وۅلو مالین میون

اتھ وژنس منزچھہِ یم لفظ ہم قافیہ گنڈنہ آمتۍ:

سالو، شولو، ڈانبلو، ڈلو، بلبلو، للو، لالو، ازلو، پِلو، حالو، مثالو

یتھے پاٹھۍ حبہ خوتونہِ ہندے بیاکھ وژن:

وار چھم نہ میلنس وٲروِ چھس گرے
وۅں پراریو پوشہِ تھرے تل

اتھ منز چھہ پھرے تہ کرے لفظن سیتۍ دارے گنڈنہ آمت۔ بییس پاٹھس منز پھرے تہ کرے لفظن سیتۍ بلے گنڈنہ آمت۔

بییس وژنس منز:
کاوۍ وہیونم ارۍ ننہِ نہے
از ییہ یار بہ ناوسے

نہے لفظس سیتۍ عنبرے تہ روستِس لفظس سیتۍ لٔجِس گنڈنہ آمت۔

بیاکھ مشہور وژن چھہ:
ژہ کمیو سۅنہِ میانہِ برم دتھ نیونکھو
ژیہ کہیو گٔیی میانۍ دے

اتھ منز چھہ تریمس تریمس مصرعس منز اندس پیٹھ قافیہ یوان۔ یم لفظ چھہ ہم قافیہ ماننہ آمتۍ:
یوان، پاوان، ہاران، چھاوان، شہلاوان، مازان، یوان

گویا کاشرِ لکہ شاعری ہنز قافیہ بندی چھیہ نہ اردو تہ فارسی غزلہ چہ "کلاسیکل قافیہ بندی” مطابق۔

زیر بحث بٲتک فنی زاوۍ جار چھہ یہ زِ بندن منز الگ الگ قافیہ ورتٲوتھ تہِ چھہ سارنے قافین ہند آہنگ ہیوے تھٲونہ آمت۔ وچھو امہ بٲتک بیاکھ فنی پہلو یس راہی بالکل نظر انداز چھہ کران بلکہ یتھ کن تسنز نظر چھیہ نہ گمژے۔

گۅڈنکہ تہ تریمہ مصرعہ کہ قافیہ علاوہ چھہ دویمس دویمس مصرعس منز تہِ قافیہ اننہ آمت۔ مثلا سۅندٲرے سۅندرے، گۅندٲرے گۅندرے، بیترِ۔ اتھ قافیس پیٹھ تہِ ہیکہِ دھوکہ گژھتھ زِ یہ چھہ وژنس منز ہیرہ بۅن کنے، حالانکہ حقیقت چھیہ یہ زِ یہ قافیہ چھہ دویمہ دویمہ مصرعہ کین اکھ اکس سیتۍ ینہ والین لفظن منز پانوانۍ قایم۔ یہ چھیہ امہ بٲتچ فنی خوبصورتی۔ یہ قافیہ چھہ متنوع لفظہ تکرارس پیٹھ مشتمل۔ سۅندٲرے/سۅندرے، ہرٲیو/ہریو، گۅندٲرے/گۅندرے۔ یمن لفظن پیٹھ نظر ترٲوتھ چھہ پیٹرن (ترتیب) نون نیران۔ گۅڈنکس لفظس منز چھہ دویمہ لفظک مصوتہ /زبر/ زیٹھرٲوتھ /ٲ/ بناونہ آمت۔ یہ پیٹرن وچھتھ ہیکو اسۍ ونتھ زِ راہی چھہ یہ مصرعہ غلط نقل کران:

گٲمہ جگرس پنجرے پٲنجرے

نہ صرف چھہ راہی لفظ اکھ اکۍ سنزِ جایہ لیکھان بلکہ چھہ سہ زیوٹھ مصوتہ غلط جایہ تھاوان۔ پنجٲرے بدلہ چھہ پٲنجرے دوان۔ وجہ یہ زِ بٲتہ کین لفظن تہ قافین ہنز کمپلیکس تنظیم چھیہ نہ تس درینٹھی آمژ۔ صحیح مصرعہ گژھہِ آسن:

گٲمہ جگرس پنجٲرے پنجرے

دویمس دویمس مصرعس منز چھہ لفظن ہند یہ التزام قایم سواے تریمس بندس منز یتھ منز یتھہ پاٹھۍ پیٹھہ وننہ آو گۅڈنکس تہ تریمس مصرعس منز قافیہ تہِ کارگر چھہ نہ۔ صاف چھہ زِ یا تہ چھیہ زبانۍ روایژ منز اتھ بندس تبدیلی سپزمژ نتہ چھہ یہ بند جوڑنہ آمت۔ یمۍ شاعرن بٲتس منز ییژاہ پیچیدہ تنظیم ورتٲومژ آسہِ تس آسہِ ہے نا قافیچ فنی خامی دور کرنس کن کانہہ ظۅن گومت؟

ٲخرس پیٹھ فن چھہ فارمہ ہندس ورتاوس منز، لفظن ہندس ورتاوس منز، خیالاتن ہندس ورتاوس منز (خیالن منز نہ بلکہ تہندس ورتاوس منز)، گۅڈنچین دۅن صورتن منز چھہ امہ بٲتک فن ظاہر۔ راہی چھہ صرف معنی بیان کران یُس پریتھ کٲنسہِ ہندِ خاطرہ ٹاکارہ چھہ تہ اکھ موضوعی یا شخصی کارگزاری چھیہ۔ لہذا چھہ نہ تہنزِ معنی بیانی پیٹھ میہ کانہہ اعتراض۔ میون یہ پوسٹ سمجھنہ خاطرہ پٔریو "شعر شناسی” منز امہِ بٲتک تبصرہ صفحہ 182 پیٹھہ186 تام۔

امہ وژنہ کس فنی پہلوس پیٹھ راہی سند اعتراض چھہ بے معنی بلکہ چھہ نہ امیک فنے تس درینٹھۍ آمت۔

بٲتہ کس ترتیبس متعلق چھہ راہی ونان زِٲخری بند چھہ "ٲخرس پیٹھ گیونہ بجایہ منزے پیش کرنہ یوان۔” امہ پتہ چھہ ونان زِ "منطقی حسابہ اگر وچھو تیلہِ گژھہِ ٲخرک یوہے بند زنجورِ ہند گۅڈنیک کور آسن مگر شاعری منز چھیہ منطقی ترتیبہِ کھوتہ زیادہ جذباتی ترتیبے کارفرما آسان۔” یہ چھہ نہ ونان زِ یہ جذباتی ترتیب کتہِ آیہ۔ اگر بٲتھ اکہِ ترتیبہ گیونہ یوان چھہ، راہی کیازِ اتھ پننۍ ترتیب دِتھ "حذباتی ترتیب” ناو دوان؟

یہ بٲتھ چھہ امین کاملن تہِ "لولہ نغمہ” ناوۍ پننہِ کتابہِ منز دیتمت۔ تمۍ چھہ تمی ترتیبہِ یہ بٲتھ دیتمت یمہ ترتیبہِ یہ گیونہ یوان چھہ۔ راہی سند دیتمت ٲخری بند چھہ کامل سنزِ ترتیبہِ منز بٲتک گۅڈنیک بند۔ کامل چھہ نہ راہی سند دیتمت گۅڈنیک بند دوانے۔ تمۍ چھہِ ترییے بند دتۍ متۍ۔ ممکن چھہ کاملس آسہِ یہ بند پیومت نتہ ما آسین نہ یہ علاوہ بند گیونس منز بوزمت۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s