کمۍ ژیہ ووننے عروض پر خالد


manzoor

چھکھ ژہ پھیران دربدر خالد
کمۍ ژیہ ووننے عروض پر خالد
چھُے نہ روزاں ژیہ یاد کالک سیُن
یاد تھاوکھ ژہ کیا بحر خالد
بحرِ منز بحرہ کیا یواں پھٹۍ پھٹۍ
زیٹھ کانہہ، کانہہ چھیہ مختصر خالد
فاعلاتن ـ مفاعلن ـ فعلن
بوزۍتھے چھُم یواں چکر خالد
رکن کیا گوو ہیجلۍ بناں کِتھہ کنۍ
پیش چھا زیر چھا زبر خالد
کم سخنور چھِہ اتہِ گمتۍ ہٲرتھ
اتِہ چھیہ ہیچھۍ ہیچھۍ تہِ بییہ کسر خالد
رومی ین تام وون عروضس پیٹھ
من نہ دانم ـ (میہ چھنہ خبر) خالد
بوز مشورہ ژہ گینگراوُن ہیچھ
وچھتہ شعرن گژھی سیزر خالد
یتھنہ باقی ژیہ کھوژھناوی کانہہ
شاعری چھے کرنۍ  تہ کر خالد

منظور خالد سند یہ غزل چھہ تمۍ سند تازہ غزل۔ یہ شاعر چھہ زیادہ تر عقیدتی شاعری کران تہ شاید شاعری کن بنیادی طور امی جذبہ کنۍ لوگمت۔ حالانکہ امہ کارہ خاطرہ چھیہ شاعری زیادہ موزون تہ نہ مناسب۔ منظور خالد اگر امی جذبہ کنۍ شاعری کن آو مگر وۅنۍ کیتس کالس روزِ پھرِ پھرِ اکاے کتھ ونان۔ امۍ سنزِ کتھہِ تہِ ہُرِ معنی تہ مطلب اگر یہ اتھ دۅہدشک معاملہ بناوِ نہ بلکہ ییہ وقفہ پتہ وقفہ یتھین شعرن منز تیتھ نویر ہیتھ زِ پرون گژھہِ مشتھ۔ عقیدتی شاعری منز تہِ اگر نہ نویر پیدہ کرنہ ییہ، یہ چھیہ تکراری تہ بورنگ شاعری بنان۔  اتھ شاعری منز چھہ خدشہ روزان زِ  شاعری بدلہ چھہ شاعری ہند مواد اہم بنان۔

پیٹھم غزل چھہ امۍ سنز اکھ کوشش تمہ موضوع منزہ نیبر نیرنچ۔ یہ غزل چھہ خود شاعری تہ امہ کس فنس متعلق شاعر سند ردعمل پیش کران۔ مخصوص موضوع کہ تکرارہ منزہ نیبر نیرنچ یہ کوشش گیہ میہ امۍ سندین یمن شعرن منز تہِ نظرِ، یم موضوعس تتھہ پاٹھۍ پیش کران چھہ زِ یمن منز چھہ جہات پیدہ گژھان۔

میلی نہ کہنی وچھ مہ تھدین پھریستہ کلین کن
گردن تہِ تھکی خطرہ چھے دستار پییی وسۍ

چھے قدرتن دیتمت ژیہ ہنر روز حدس منز
پننیو اتھو ینہ پانہ کانہہ شہکار پپی وسۍ

نِواں چُھم دل دہن شیرین تمۍ سُند
دُعاهن گوژھ میہ اکھ آمین تمۍ سُند

نظر ٹورے یہِ تس میانس کلس پیٹھ
خطا چھم یی پنن دستار دیتمس

میہ وچھمس اوش اچھن یس ووج ژیہ زونتھ
یہ کمۍ سند دود از للنوو شینن

شاعرس گژھہِ کامن سینس بدلہ سینس آف ہیومر آسن۔ سہ چیز چھہ خالد سندس کلامس منز کلہ کڈن ہیوان۔ لفظن تہ خیالن سیتۍ چھہ شاعر تمہِ ساعتہ گندان ییلہ تس منز خود اعتمادی پیدہ گمژ چھیہ آسان۔

مختلف موضوعن پیٹھ شعر وننہ سیتۍ چھہ نہ ایمان ڈلان۔ ضروری چھہ نہ زمینی تہ آسمانی عشقچی کتھ ییہ کرنہ۔ شاعری ہیکہِ کنہِ تہ چیزس پیٹھ سپدتھ۔ ہاکہ نلس پیٹھ تہِ تہ ہچوین چونچن پیٹھ تہِ، بشرطیکہ تتھ منز آسہِ پرن والۍ سندِ خاطرہ ذہنی تسکینک سامانہ۔ شفیع شوق سنز اکھ نظم چھیہ "ماگن”۔ تسنز بہترین نظم۔ نہ چھہ تتھ منز آسمانی عشق تہ نہ زمینی عشق۔ کانہہ تہِ نماز گزار شاعر اگر تژھ ہش نظم ونہِ، تس روزِ نہ ایمان راونک کانہہ خدشہ۔

منظور خالد چھہ عقیدتی شاعری علاوہ سماجی بدمعاشی ین شعرک موضوع بناوان۔ یہ ہن چھیہ جان مگر کوشش گژھہِ روزنۍ یہ گژھہِ نہ صرف موزون کلامی تام محدود روزن بلکہ گژھہِ امیک اظہار تخلیقی سطحس پیٹھ سپدُن، کم از کم زبانۍ ہندِ چالاک ورتاوہ تہ ذہانت سان۔  تخلیقی سطح نش چھہ میون مراد پیکر، تشبیہہ، استعارہ، اشاریت، تلمیح، بیترِ۔ رحمن راہی سند یہ قول چھہ ییتہ نس پھرُن لایق زِ ” فلسفیانہ بیان چھہ کنہِ ذہنی سرگرمی ہند انت تہ انجام آسان تہ توہ کنۍ حد بند سپدمت آسان۔ اتھ برعکس چھہِ ورتاونہ آمتۍ استعارہ تہ تشبیہہ یہ دپۍ زِ تہِ پانہ اکھ عمل، اکھ حرکت یتھ رنگہ رنگہ معنوی امکان نرِ آلوان باسان چھہِ۔”

منظور خالد چھہ مزاحیہ شعر تہِ لیکھان یمن ہند محرک تس اندۍ پکھۍ درینٹھۍ ینہ وول سماجی بدمعاشی ین ہند ماحول چھہ۔

منظور خالد چھہ فنی طور مستحکم شعر ونان، بس چھیہ موضوعن ہندِ تنوعچ ضرورت یۅس میہ چھیہ وۅمید سہ کرِ وارہ وارہ پورہ۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s