کلچرل فرنٹکۍ تریہ ڈراما

 

wtd2تھیٹر کس عالمی دۅہس پیٹھ

پروفیسر جیا لال کول چھہ پننہِ کتابہِ "سٹڈیز ان کشمیری” منز لیکھان زِ اکتوبر 1947 کس قبالۍ حملہ کس رد عملس منز بنوو کاشریو ادیبو کلچرل فرنٹ تہ لیکھکھ بٲتھ تہ افسانہ تہ کینہہ ڈراما کٔرکھ سرینگر تہ گامن منز پیش۔ کول چھہ "زہ بٹا تریہ” تہ "ڈالر صاحب” ڈراماہن ہند ناو ہیوان۔ اکھ زمیندارن متعلق تہ بیاکھ سامراجی قوتن متعلق۔ ونان چھہ زِ یم زہ ڈراما ٲسۍ سوم ناتھ زتشی، نور محمد بٹ، پشکر بھان تہ پران کشورن رٔلتھ لیکھمتۍ۔ سوال چھہ یم ڈراما چھا کنہِ جایہ تحریری صورتس منز رژھرتھ؟ دویم یہ زِ پشکر بھان تہ پران کشور چھا پزۍ پاٹھۍ یہندس لیکھنس منز شامل ٲسمتۍ کنہ یم چھہ جیال کولن پانے پننہِ طرفہ یمن ڈراماہن حصہ دار بنٲوۍ متۍ؟ امین کاملن چھہ وونمت زِ یم زہ حضرات چھہِ نہ یمن ڈراماہن ہندۍ مصنف ٲسمتۍ۔ اتھ پیٹھ چھہ تحقیق کرنک ضرورت۔ یم ڈراما اگر نہ شایع گمتۍ چھہِ، یم گژھن شایع کرنہ یِنۍ۔ کاشرِ ڈپارٹمنٹکۍ نوۍ پرانۍ طالب علم ہیکن یمن کامین دس تلتھ، بلکہ بطور پننۍ ایم فل وغیرہ پیش کٔرتھ۔ وۅمید چھیہ یمن کامین کن ییہِ توجہ کرنہ۔

جیا لال کول چھہ تریمہ ڈراماہک ذکر کران۔ "شہید شیروانی” یس وۅرملہِ مارنہ آو۔ دپان چھہ یہ ڈراما اوس پریم ناتھ پردیسی ین لیوکھمت تہ امکۍ بٲتھ ٲسۍ مہجورن لیکھۍ متۍ۔ سوال چھہ اگر پزۍ پاٹھۍ یُتھ کانہہ ڈراما لیکھنہ اوس آمت، سہ کوت گوو؟ اسمانس کھوتا؟ اتھ پیٹھ تہِ چھہ تحقیق کرنک ضرورت۔ بییہ یہ تہِ زِ مہجورنۍ تم بٲتھ کوت گیہ؟ اگر کنہِ جایہ موجود چھہِ، تمن ہنز نشاندہی کرنچ چھیہ ضرورت۔ کلیات مہجورک نام نہاد مرتب محمد یوسف ٹینگ ہیکہِ یمن بٲتن ہنز نشاندہی کٔرتھ۔

ناجی منور تہ شفیع شوق چھہِ ادبک تواریخ کتابہِ منز پردیسی سندِ اکہ ڈرامہک ناو ہینہ پتہ ونان "امہ پتہ لیوکھ پردیسی ین تمہِ زمانہ کس سیاسی ماحولس پیٹھ تہِ اکھ ڈراما۔ امکۍ بٲتھ ٲسۍ مہجورن لیکھۍ متۍ۔” یہ چھہ دراصل یمو واریاہ موادکۍ پاٹھۍ جیالال کول سنزِ کتابہِ پیٹھے تلمت۔

کاشر ادبک تواریخ چھہ نہ "ڈالر صاحب” ڈراماہک کانہہ ذکر کران۔

شاعری : عشقچ بازیافت

dawlat
اسہِ اوس اکھ شریف نفس دوستا اکھ۔ امۍ سے سنیوو اکس خوبصورت زنانہِ ہند عشق۔ میہ لج امچ خبر۔ کینہہ کال گوو، یہ آو میہ نش تہ دوپن بوز نظم۔ بہ رووس۔ میہ دوپ امس تہ نظمہِ کیا کٲم؟ اچھا امس مسمات ہند ناو مانۍ تو تہۍ کینژھا مثلا تبسم یا بدل کینہہ۔ فی الحال مانو اسۍ تبسمے۔ امۍ دوستن ہیوت کلام بوزناون، دوپن: "کہیں وہ تبسم تو نہیں، وہ تبسم تو نہیں”۔ اکہِ دۅیہ لٹہِ وونس نہ میہ کہنی۔ امۍ دوپ چلو منیبس تور نہ فکرِ ، امس نش آسو کلام بوزنٲوتھ پنن بوس لوژراوان۔ مگر میہ روٹ یہ اکہِ لٹہِ۔ دوپمس "یہ تبسم کۅسا چھیہ؟” یہ ہیوتن وۅشلن۔ اسہِ باسان اگر کٲنسہِ ہند عشق گوو، سۅ گیہ بدمعاشی تہ یہ اوس شریف انسان! بہرحال، امس گیہ گٹھہ کوجہ تہ اتھۍ منز ووتھ "سہ چھنا میون دوس، قریبی دوس۔۔۔” مانۍ تو امۍ سندس دوستس چھہ ناو نذیر تبسم یا یتھے ہیو کانہہ ناو۔ فی الحال مانۍ تون نذیر تبسمے۔ دوپن "یہ چھنا یہ نذیر تبسم، امۍ سنزے یاد چھیم آمژ۔” میہ دوپمس اچھا تورم فکرِ۔ امس آو بتھس پنن رنگ واپس۔

امہ کہانی ہند مطلب چھہ یہ زِ شاعر بننک اکھ بہانہ چھہ پتھ وتھ عشق رودمت۔ عشقک اظہار یا عشقہ چہ ناکامی ہند دۅکھ۔ یہ ہیکہِ کانہہ ٹوٹھ شخص راونک دۅکھ تہِ ٲستھ۔ کینہہ چھہِ خدایہ سندس عشقس منز گرفتار گژھان، یا عشق رسولس منز یا دین کس عشقس منز۔ مثلا سانۍ نوۍ شاعر مشروع نصیب آبادی تہ منظور خالد۔ عشقس چھہِ مختلف پہلو۔ کینژن چھہ بدل عشقک بہانہ گژھان۔ مثلا سون ارشاد ملک یا الطاف اندرابی۔ یہنزِ شاعری ہند بہانہ چھہ کشیرِ ہنزِ آزادی ہند عشق یا تمہ چہ ناکامی ہند دۅکھ، کشیرِ نش دورِ رک دۅکھ۔ یہ تہِ چھہ اکھ عشق۔ اکثرن چھہ عشقک یہ بخار جلدے وسان تہ تہنزِ شاعری ہنز رفتار تہ شوق تہِ چھہ ژھۅکان۔ مگر یم برونہہ پکان چھہِ تم چھہِ امہ ابتدایی جنونہ منزہ نیران۔ تتۍ نے چھہِ نہ بند گژھان۔ برونہہ پکن والۍ چھہِ یہ گۅڈنیک عشق منسٲوتھ شاعری ہندس فنس تہ زبانۍ ہندس تخلیقی ورتاوس منز غم دفایی کران تہ بحیثیت اکھ باضابطہ شاعر برونہہ کن یوان۔ یمن ہنزِ دلچسپی ہند کینواس چھہ ہران۔ یہندِ عشقک کینواس چھہ ہران۔ یم چھہ لٲلہِ ہندس جنونس منز ادبچ دشت نوردی شروع کران۔

یہ دشت نوردی چھیہ عشقک اکھ ضروری حصہ۔ یہ دشت نوردی چھیہ عشقس اکھ وسیع معنہ مطلب دوان تہ اتھ تیزی بخشان۔ یمن ژۅشونی شاعرن تہ باقی واریاہن شاعرن یمن منز بہ زبردست شعری قوت وچھان چھس، چھہ میون مشورہ یی زِ اکۍ سے جایہ چھہ نہ بند گژھن۔ خدایہ، رسول، قوم ہیکوکھ اسۍ مختلف انسانی تجربن منز تہِ لٔبتھ۔ اسۍ ہیکو گلابس پیٹھ شعر ؤنتھ، تارکس پیٹھ نظم ؤنتھ، بسہِ ہنزِ سوارِ پیٹھ شعر ؤنتھ، ٹرینہ ہنزن سوارین پیٹھ نظم ؤنتھ تہ "کہیں وہ تبسم تو نہیں” وننہ ورٲے،تمن ہندِ مشاہدہ چہ باریکی منز پننہ پننہ شوقچ تہ عشقچ بازیافت کٔرتھ۔

khone jigar

شاعر چھہ قطرس منز سمندر بند کران تکیازِ امۍ سنز نظر چھیہ قطرس منز سمندر وچھان۔ یہ چھہ نہ قطرن منز بند گژھان۔ شاعرے چھہ سانہِ سماجک سہ نادرشخص یمس عالم انسانی یس اکی نظرِ وچھنک مۅکجار حاصل چھہ۔ شاعر ہیکہِ نہ خانن منز بند گژھتھ۔ شاعر چھہ اکس مخصوص زبانۍ تام اتفاقی طور محدود ضرور آسان مگر امۍ سند تخیل، امۍ سند سوچ چھہ توت تام واتان ییتہِ زبان صرف اکھ وسیلہ بنان چھیہ۔ یہ چھہ اتھ وسیلس تہِ پٲراو کران تکیازِ یہ چھیہ امۍ سندین تجربن ہندِ محل خانچ ڈیڈۍ آسان۔ امہ ڈیڈِ ہند پٲراو چھہ ضروری مگر اتھ پیٹھ گژھن نہ دلہِ ہنزِ جامع مشیدِ ہنزن ڈیڈین ہندۍ پاٹھۍ بورڈ کھسنۍ۔ مثلا "چھٹن میاں کی چوڑیاں!”

میہ چھیہ سیٹھا خوشی زِ یمن ژۅن شاعرن ہند ناو پیٹھہ کنہِ خالص مثال دنہ کہ غرضہ آو ، تم چھہِ پننہِ پننہِ شاعری پریتھ رنگہ وسعت دنہ چہ کوششہ منز اکھ اکھ قدم برونہہ پکان۔ میہ اوس شاعر بننک شوق مگر حالاتو دیت نہ ساتھ، میانۍ نظر چھیہ کاشرِ زبانۍ لول برن والین یمن شاعرن پیٹھ۔ یمن چھہ زبانۍ پیٹھ تہِ جان دسترس تہ تخیل تہِ وفور۔

میون یہ دوست، یمۍ سنزِ کہانی سیتۍ یہ پوسٹ شروع گوو، چھہ بہترین شاعری کران، یتھ منز تبسمے تبسم چھہ مگر یہ تبسم چھہ وۅنۍ اندۍ پکھۍ کس تمۍ سندس وسیع مشاہدس منز نون نیران۔

[خون جگر وول شعر چھہ ارشاد ملک سند]

کاغذ ودان آسن

sh

شوکت صوفی چھہ اکھ تازہ وارد یمۍ خاص طور نظم پننہِ اظہارک وسیلہ بناونک یرادہ کورمت چھہ تہ امیک ظاہر تہ بٲطن سرہ کھرہ کرنہ چہ کوششہِ منز لگتھ چھہ۔ عجیب کتھ چھیہ یہ زِ ییژ حوصلہ افزایی وۅتھہ ونس فن کارس درکار آسان چھیہ، تیژے چھیہ تمس تنقیدچ تہِ ضرورت۔ یم دۅشوے کامہِ اکی ساعتہ انجام دنہِ چھیہ دشوار تکیازِ پیٹھمس سوتھرس پیٹھ چھیہ یم کامہِ اکھ اکس مخالف۔ حالانکہ، اگر استعارہ چہ صورژ منز وچھو، نوو فنکار چھہ ادبچ نہالۍ یتھ حوصلہ افزایی تاپھ تہ تنقید سگ مہیا کران چھہ۔

شوکت صوفی یس چھیہ یمن دۅشونی چیزن ہنز ضرورت۔ مگر یپارۍ چھہ تنقید تہ تعریف دۅشوے سروگیمتۍ تہ فن کار دروگیومت۔ لہذا چھیہ امس پانے پننۍ وتھ بدِ کڈنۍ۔ یم کتھہ اوک طرف، فی الحال چھہ پیش امۍ سند اکھ تازہ غزل۔

غزل
شوکت صوفی

ژھاین نقاب ترٲوتھ گاشلۍ پکان آسن
واوس عجیب نیت صحرا وڈان آسن

باون اگرچہ گۅڈنیتھ خوابن بیہ دون تعبیر
تھاون حریر لٲگتھ پردن ژٹان آسن

شاید گژھاں چھہِ حاوی انہِ گٹۍ وۅں آفتابس
ژانگین ژہ رٲچھ کرۍ زے موکل یوان آسن

شہرس عجیب ژھۅپہ ہش دہہ چھس وۅتھان لیکن
چانین خراب حالن دل ونہِ دزان آسن

شامچ سہ زون تھاوی شاندس قریب ٲخر
ٲوج کتاب یتھ منز کاغذ ودان آسن

یہ غزل پٔرتھ چھہ احساس گژھان زِ شاعرس چھیہ امہ صنفہ ہندین لوازماتن پیٹھ نظر تہ سہ چھہ امہ چہ زبانۍ منز صوتی آہنگ قایم کٔرتھ ہیوکمت یُس غزلہ کہ خاطرہ اہم چھہ۔ وزن چھہ خوبصورتی سان ورتاونہ آمت، آوازن ہند دروبست تہِ چھہ متاثر کن۔ امہ وزنک آہنگ چھہ تفکراتی یُس غزلہ کس موڈس سیتۍ ہم آہنگ چھہ۔ غزلس منز چھہ نہ براہ راست معنوی نویر ۔ یعنی مضمون چھہِ تمے یم اکثر غزلن منز آسان چھہِ۔ مگر مضمون ادا کرنک یُس عام تعقلی طریقہ چھہ، تتھ برعکس چھہ شک گژھان زِ یمہ غزلک شاعر چھہ شعرن تہ مصرعن منز وۅپدن واجنین صرژن ہندس تاثراتی ماحولس زیادہ اہمیت دوان۔

بہ کورس "ٲوج کتاب” ترکیبہِ خاص طور متاثر۔ امہ تازہ ترکیبہِ سیتۍ چھہ شعر سیٹھا خیال آفرین بنیوومت، حالانکہ زونہِ سیتۍ "شامچ سۅ” فقرہ چھہ شعرس کنہِ حدس تام کمزور بناوان۔ غزلس منز چھیہ ژھاین نقاب تراونۍ، حریر لٲگتھ پردہ ژٹنۍ ہشہِ متاثر کن صرژہ اکھ نیک شگون۔

یمن پانژن شعرن منز چھہ صرف ڈۅڈ شعر تیتھ یتھ عام فہم پاٹھۍ فکرِ تروُن ونو۔ یہ ڈۅڈ شعر پچھانن چھہ نہ مشکل۔ شعر نمبر ژور پورہ پاٹھۍ تہ شعر نمبر تریہ اوڈ۔ باقی سٲری شعر چھہ معنیس یہ دپۍ زِ تہِ چلینج کران تہ پرن والس تفہیم بدلہ تخیل کس دنیاہس کن نوان۔ ذاتی طور چھس بہ یمہ کتھہِ ہند قایل زِ تخیلس تام واتناوتھ گژھہِ نہ شعر پوت کھوری ژلن بلکہ گژھہِ برونہہ کن پکنک آے رٹتھ تخیلس کامیاب پاٹھۍ کنہِ انسانی صورت حالس سیتۍ واٹھ دین۔ اگر یتھی ہوۍ تجربہ بارسس یِن، بے شک بنن تم غزلہ کہ موزونیت تہ مناسبتک جواز۔

کُنیر

kuner

نظم کُنیر
منیب الرحمن

کُنیر چھہ زن کُلین پیٹھ
آنگنن، چھتن پیٹھ
تازہ بتازہ پیومت شین

دارِ ہندس شیشہ پٹس پیٹھ
شینہ وتھر — کُنرکۍ پوش

کُنیر چھہ زن شیشہ پٹیو منزۍ
وۅلسنہ آمتۍ ڈلگنۍ

أدرین پلون استرۍ پھش
گرم گرم بہہ
ترُن ترُن شہہ

ژہ اوسکھ کیہہ تام ونان

dance

نظم ژہ اوسکھ کیہہ تام ونان
منیب الرحمن

ژہ کتھہ پٲٹھۍ چھکھ دۅہ گزاران —کتھہ پٲٹھۍ؟
بہ چھس پانس برونہہ کنہِ چہ ژھۅپہِ —یڈ بٔرتھ —مدعے گنڈتھ — وچھان
کیاہ ونے کم نژن گتھ چھیہ یہ دوان!
دپان چھس بہ وچھا امس کنہِ امۍ سنزِ ژھایہ؟
بہ چھُسس نہ کہنی ونان —میہ چھیہ پننۍ ژاس تام مشان۔
ژہ کتھہ پاٹھۍ چھکھ پننہِ ژاسہِ قابو کران؟
نیٹھس تہ اونگجہ رلٲوتھ — باقی اونگجن واش کڈتھ —
(خبر ژیہ آسیا وۅنۍ یہ تگان؟)
کم ور چھیہ یہ تانس تانس دوان!
وٹھن پیٹھ چھِس کمن کمن زمانن ہندۍ بٲتھ—
یم ییتۍ دوریمتۍ چھہِ— زِ —زِ کنن تام چھہِ نہ وٲتتھ ہیکان۔
ژہ کتھہ پٲٹھۍ چھکھ کنو بوزان ؟
میہ چھہ کنن منز ژھۅپہِ ہندیو جاناوارو اول کورمت۔
پنن پچ تہِ چھس نہ ٲسہ کڈان ۔
دپان چھُس یُتھ نہ تھۅتھ گژھیکھ —
دپان اوسکھ نا — جاناوارن ہندس ٲلس گژھہِ نہ اتھہ لاگن
تم چھہِ نہ دوبارہ تتھ ٲلس کن یوان —
ژیہ کتھہ پاٹھۍ چھے اتھن قرار؟
میانین اتھن ہنز حرکت چھیہ زن — زن —طبلہ وایان—
تہ میہ برونہہ کنچ ژھۅپہ چھیہ پانس ور دی دی — ننگے نژان۔
یہ لفظ چھا ننگے کنہ نہنگے؟
ژہ اوسکھ کیہہ تام ونان —
ڈکشنری؟ آ — ڈکشنری چھم مگر —
مگر— میہ چھہ نہ تتھ منز تہِ —ژھۅپہ ورٲے —کینہہ اچھ تلۍ یوان!

کتہ کتہ

bub

نظم کتہ کتہ
منیب الرحمن

بہ چھس نہ ونہِ آبہ منزہ کھوتمت
نریو زنگو روس پشل پشل لہن لہن جسم
ڈاکر کڈۍ کڈۍ آبس پھۅکت کھالنہ ورٲے چھم نہ کہنی تگان
یم پھۅکت کھالنہ خاطرہ چھس بہ آبہ کس
پیٹھمس سوتھرس کن شی کٔرتھ ٹکھ نوان
پگاہ آسہ بہ زمینس پیٹھ پکان میہ آسن نرِ تہ زنگہ تہِ
مگر ونہِ چھس بہ آبہ سے منز صرف پھۅکت کھالان
میانیو پھۅکتو سیتۍ چھہ نہ پیٹھہ کنہِ آسمانس کتہ کتہ تہِ گژھان
پگاہ ییلہ میہ نرِ آسن زنگہ آسن
پگاہ ییلہ بہ زمینس پیٹھ پکان آسہ
خبر آسمانس گژھیا مگر
کم سے کم گوژھ بۅنہ کنہِ زمینس کتہ کتہ گژھن

نہ فاعلاتن نہ فاعلات

blank

نظم نہ فاعلاتن نہ فاعلات
منیب الرحمن

بہ چھس دۅہے یہ صفحہ کھولان یتھ پیٹھ نہ کہنی چھہ
نہ کانہہ غزل نہ شعر نہ ردیف نہ قافیہ
نہ فاعلاتن نہ فاعلات
اکھ خاموشی تہ اکھ کینہہ نہ یتھ سیتۍ بہ ہمکلام چھس
ہمکلام چھس نہ — یتھ کن دٲرتھ چھیہ — خاموش خاموشی
صفحس اندر — تہ یۅس صفحہ نیبر یوت پھہلتھ چھیہ
زِ صفحہ کتہِ نس چھہ شروع گژھان کتہِ نس اند—
بہ چھس دۅہے یہ کتاب کھولان — خاموش کتاب
یۅس خاموشی منز بند — خاموشی منز کھلان چھیہ
بہ چھس اتھ منز یوت مگن زِ یہ صفحہ چھہ میہ اندر
پھہلان تہ بہ چھس اکھ خاموش کینہہ نہ ہکۍ پاٹھۍ
ژمان تہ پھہلان — دۅہے اتھ صفحس پیٹھ یتھ پیٹھ
کہنی چھہ نہ بس اکھ خاموشی — بوزان تہ وچھان
یہ صفحہ کیازِ چھہ خاموش یہ صفحہ کیازِ چھہ خالی
بہ چھس دۅہے یہ صفحہ کھولان— بییہ اتھۍ خاموشی منز
یتھ منز نہ کہنی چھہ
نہ کانہہ غزل نہ شعر نہ قافیہ
نہ فاعلاتن نہ فاعلات