گزر ژورِ ہند استعارہ


GUZAR

شہل تہ شوژ چھہ کاشر غزل وناں عازم
ویو تہِ نے تہ گُذر ژورِ ما انتھ ہیکہِ مال

(نیب شمارہ اول اکتوبر 1968)

 

یہ چھہ مظفر عازم سند اکھ مشہور شعر، یمیک چرچہ میٲنس لۅکچارس منز واریاہس کالس رود۔ اتھ منز یۅس کتھ وننہ ٲس آمژ سۅ  ٲس یتھہ کنۍ تہِ دلچسپ خاص کر تتھ وقتس منز ییلہ کاشرِ شاعری منز نویرہ رنگۍ واریاہ کینہہ لیکھنہ اوس یوان تہ نوۍ نوۍ تجربہ کرنہ رنگۍ مختلف ماخذن فایدہ تلنہ اوس یوان۔ مگر امچ دلچسپی ٲس امہِ کس انداز بیانس منز تہِ ۔ یہ استعارہ اوس شاعری ہندِ خاطرہ نو٘و تہ اتھ دورس منز ٲسۍ شاعر پننہ پننہ مقدورہ تہ مزاجہ مطابق  نوۍ نوۍ استعارہ ورتاونچ کوشش کران۔

وچھو ہے تہ اتھ منز چھہِ زہ بیان۔ اکھ  یہ دعوی زِ عازم چھہ شہل تہ شوژ کاشر غزل ونان۔ یہ دعوی چھہ یہندِ غزلہ چہ زبانۍ تہ استعارن ہندس حدس تام واریاہ صحیح۔ یہ اوس تمہ وقتہ تہِ صحیح ییلہ یہ شعر وننہ اوس آمت تہ از تہِ چھہ۔ حرف ڈاے چھیہ امچ گواہی دوان۔ زبانۍ ہندِ رنگہ شوژ کاشر غزل ونن والین شاعرن منز ہیکون اسۍ عازم سرس تھٲوتھ۔ یہ چھہ ساروے کھوتہ شوژ کاشِر زبان ورتاوان۔ میہ باسان یس غزل زبانۍ ہندِ رنگہ شوژ آسہِ، سہ آسہ شہل تہِ۔

دو٘یم بیان چھہ گزر ژورِ ہند۔ مال انن چھہ نہ گناہ مگر یہ مال گژھہِ جایز طریقہ اننہ یُن۔ اگر الیٹ سند قول نظرِ تل تھاوون (حالانکہ الیٹن تہِ چھہ یہ قول بیۍ سے ژورِ نِتھ ورتومت) جایز طریقہ چھہ نقل کرنہ بجایہ ژورِ انن۔ مگر گزر ژورِ ہند استعارہ چھہ اسہِ ونان زِ مال تارنہ خاطرہ چھہ اتھ ٹیکسہ ہن دنۍ ضروری۔ یہ ٹیکس چھہ شاعر نقل کرنہ بجایہ اتھ پننہ زبانۍ تہ روایتس ہم آہنگ بناوان۔ یہ چھہ اتھ کاشراوان۔

مظفر عازم چھہ پننہ شاعری منز اتھ اصولس سختی سان پابند باسان۔ امہ علاوہ چھہِ یم شعرن منز کتھ اشارن منز وننک قایل۔ یمہ ساتہ یم شعرہ نیبر کانہہ کتھ نثرس منز تہِ ونن اشارنے منز ونن یمہ کنی یہ سمجن کنہ ساعتہ مشکل گژھان چھہ زِ تم چھا الف ونان کنہ بے۔

دو٘یمہ بیانک بیاکھ دلچسپ نکتہ چھہ شود تہ شوژ مال نہ ویُن۔ اتھ منز چھہ طنزتہِ تہ پیراڈاکس تہِ ۔ امہ کین معنوی پہلوون چھہِ اسۍ سٲری بخوبی واقف۔

 

 

مظفر عازم صابنی یم لفظ تھاووکھ ییتہ نس بطور یاداشت محفوظ:

گۅڈہ گۅڈہ یم میٲنۍ اردو شعر اذان رسالس منز یا اورہ یور چھپے، تم تۯاوتکھ الگٕے۔ گۆڈنیک کٲشر غزل چھپیو کۅنگہ پوش رسالس منز۔ دلیل بنییہ، جرنلسٹ مقبول حسین اوس مے یار۔ (شاید آسہ ہے 1954\1955) ۔ مقبول حسینن وۆن یہ دمو کۅنگہ پوش کس اڈیٹر، فراق صٲبس۔ بہ اوسس ازۍکی پٲٹھۍ تیلہ تہ مندچھہ بتھ ۔ مقبولن نیونس پانس ستۍ فراق صٲبن گرہ، غزل پۆرم تمس نشہ، تمۍ کۆر پسند تہ چھپیوو۔ یہ وۆنمے امہ کنۍ زہ سہ غزل چھم نہ کنہ اتھہ یوان، مگر اکھ شعر تمہ منزہ یتھ فراقن داد دژوو سہ اوس اتھۍ ژٲنگس زُتنۍ ہاوان: لٹِس اکھ گاشہ لٕے آسٕم پننۍ وتھ پانہ پۯزلٲوم یتُے وۆن زُتۍنہ وولن تارکن ہند بوش اسمانن (مے اوس لیوکھمت تارکن ہند تاو، فراق صٲبن دۆپ بوش لیکھوس، یُتے چھم یاد)۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s