کاشر ادب – اکھ بہترین رسالہ (قسط 4)


کاشر ادب رسالکۍ اداریہ چھہِ نہ کنہِ خالص ادبی موضوعس پیٹھ ۔ یہ حال چھہ تمام کاشرین ادبی رسالن ہند۔ امیک وجہ چھہ یہ زِ سون ادب چھہ ونہِ زبانۍ ہندین معاملن تامے محدود۔ ادیبن رود ترقی پسند دورہ پیٹھے کاشرِ خواندگی ہنزِ تنگی ہند احساس، حالانکہ ادیبن ہند اکھ لۅکٹ کاروان رود پکان مگر ییلہ ییلہ کانہہ رسالہ دراو امہ احساسک باس تیزیو۔

کاشرِ ادبہ کہ گۅڈنکہ پرچک اداریہ چھہ یتھہ پاٹھۍ شروع گژھان: ” کاشرۍ پاٹھۍ لیکھن والین ادیبن تہ کاشرس سیتۍ دلچسپی تھاون والین دوستن ووت واریاہ کال محسوس کران زِ کاشرۍ پاٹھۍ کانہہ ادبی رسالہ نہ آسن چھہ سیٹھا افسوس ناک کتھ مگر رسالہ کڈن چھہ نہ سہل۔ امہ خاطرہ چھیہ واریاہ قربانی ہنز ضرورت۔ گۅڈنی ہارہ تکیازِ واریاہس کالس چھہ یہ قریب قریب گاٹس پیٹھ چلاون۔ سہ گاٹہ کُس دیہ۔ دویم وقت۔ رسالہ چھپاون سہ خریدارن سوزن۔ امیک حساب کتاب تھاون، تیژ فالتو فرصت کس چھیہ۔ یہ کٲم ہیکہِ سہ کٔرتھ یس فاضل ہارہ تہ فالتو وقت آسہِ۔ یُتھ انسان چھہ نہ اسہِ اندر کانہہ۔ مگر دپان خدا چھہ سبب ساز۔ چنانچہ اسہِ گو٘نڈ ادیبن تہ ادیب نوازن ہند تمنا بامل اننہ خاطرہ کمر تہ کاشر ادب تھوو تۅہہ پیش۔ یہ چھہ نہ کٲنسہِ ہند ذاتی رسالہ یا ملکیت اگرچہ امیک خرچہ یُس واریاہس کالس گاٹے روزِ کو٘ر اکی شخژن برداشت۔ محض کاشرِ زبانۍ ہندِ فروجہ تہ ترقی ہندِ خاطرہ۔ یہ شخژ چھہ غلام رسول سنتوش۔”

یہ چھیہ حقیقت زِ رسالک خرچہ تل سنتوشن مگر میہ چھہ پورہ یقین زِ تس آسہ نہ فالتو ہارہ۔ تقریبا تمام رسالن ہندۍ کڈن والۍ چھہِ "فالتو ہارہ” لٲگتھے رسالہ کڈان رودۍ متۍ۔

دویمہ شمارک اداریہ اوس "کاشر مرکز” انجمنہِ ہندس دۅن دۅہن ہندس کانفرنسس متعلق۔ اداریہس منز چھہ وننہ آمت زِ ” کانفرنسس منز آو اکھ بنیادی قرار دار منظور کرنہ زِ کاشر زبان گژھہِ سکولن اندر لازمی مضمون تہ تعلیمی ذریعہ بناونہ ینۍ۔ باقی سٲری مطالبہ ٲسۍ اتھ بنیادی مطالبس سیتۍ تعلق تھاوان مثلا یونیورسٹی منز کاشرس اندر ڈپلوما کورس رایج کرن۔ تمام سکول ماشٹرن ہند کاشر امتحان پاس کرن۔ کاشرِ زبانۍ ہنزِ ترقی خاطرہ کلچرل اکادمی ہندس طرزس پیٹھ حکومت کہ طرفہ اکھ خۅد مختار اشاعت تہ ترجمہ گھرہ قایم کرن۔”ka

یہ کانفرنس سپد 23 تہ 24 اکتوبر 1966۔ کاشر مرکز کو٘ر امین کاملن 1963 منز شروع، رحمن راہی تہ غلام نبی فراق  رلٲوتھ  تجکھ مشترکہ طور کاشرِ زبانۍ ہنز علم۔ کاشر مرکزک اکھ وفد اوس امہ کانفرنسہ پتہ چیف منسٹر غلام محمد صادقس سمکھیوومت تہ تمو اوس ؤریس اندر اتھ متعلق قدم تلنک وعدہ کو٘رمت۔

ژورمہ شمارک اداریہ چھہ ساہتیہ اکاڈمی ہندین انعامن متعلق۔ لیکھان چھہِ "کاشرِ زبانۍ رود گۅڈہ پیٹھے ساہتیہ اکاڈمی ہند طریق کار مشکوک تہ جانبدار۔ گۅڈنی آو یہ انعامہ سۅرگباشی ماشٹر زندہ کول سنزِ "سمرن” ناوہ کتابہِ دنہ۔ امہ خاطرہ نہ زِ تتھ اوس ججو امچ سفارش کٔرمژ بلکہ تمہ وقتکۍ کشیرِ ہندۍ وزیر اعظمن ٲس امچ سفارش کرمژ۔ گویا ادبی کہوچہ بدل لج ماشٹر زندہ کولس سیاسی کہوٹ۔ یہ افسوس ناک رحجان پو٘ک برونہہ کن تہ اختر محی الدین تہ رحمن راہی (یہنزن کتابن امہ پتہ یہ انعامہ میول) تہِ آیہ امی سیاسی کہوچہ تہ سارٹفکیٹہِ ہندۍ شکار بناونہ۔ یہ چھہ ہاوان زِ یو٘ت تام کشیرِ ہند تعلق چھہ ساہتیہ اکاڈمی چھیہ افسوس ناک وۅتل بجہ کران روزمژ۔ چنانچہ اتھ وۅتل بجہ خلاف آو تمن وزِ وزِ احتجاج تہِ کرنہ۔ یہس تہِ کٔر (یو٘ت تام اسہِ معلوم سپد) اکاڈمی ہندیو اکثر ججو تہ تمن پتہ ریفریو اکس کاشرِ کتابہِ قومی ایوارڈ دنچ شد و مد سان سفارش۔ خیال اوس زِ وۅنۍ آسہِ ساہتیہ اکاڈمی ہوشہ آمژ۔ مگر کتھ وٲژ بییہ تو٘تے۔ کتابہِ آو نہ ایوارڈ دنہ تہ کاشریو ادیبو کٔر اتھ خلاف پننہ پننہ شایہ سخت ناراضگی ظاہر۔ ”

میہ چھہ باسان یہ چھیہ کامل سنزِ "لوہ تہ پروہ” کتابہِ ہنز کتھ۔ سۅے ٲس 1965 منز چھپتھ آمژ تہ 1966 ؤری خاطرہ آسہِ ہے تجویز کرنہ آمژ۔ اتھ میول پتہ 1967 منز یہ ایوارڈ۔

شمارہ 5 چھہ قانون ساز کونسلس منز تمدنی سیٹہِ خاطرہ تتھس شخژہ سندس نامزد گژھنس پیٹھ "یس شخژس نہ زبانۍ، ادبس تمدنس تہ تہذیبس سیتۍ رژھ تہِ واسطہ اوس۔” ونان چھہِ "پرانہِ حکومژ نشہِ ہیکہِ ہے تہِ نہ امہ ورٲے بییہ کنچ توقع سپدتھ، تکیازِ سۅ ٲسے ہمت شاہ سنزِ جایہ بلہ نٲودس تھاونچ قایل۔ مگر وۅنۍ گژھہِ ییتہ یور یہ مسخرانہ روایت ختم سپدنۍ۔”

شییمس شمارس منز چھیہ اداریہس منز یہ خۅشخبری زِ "کاشر مرکزن تج اکھ تاریخی آواز تہ تحریک زِ کاشر زبان گژھہِ تعلیمی ذریعہ بناونہ ینۍ۔ آوازِ ہند زور تہ اہمیت وچھتھ کو٘ر حکومتن اوترہ اوترے اعلان زِ پانژمہِ جمٲژ تام ییہ کاشر زبان کینژن سکولن اندر تجربہ پاٹھۍ لازمی مضمون کس صورتس منز پرناونہ۔”

یم چھہِ کینہہ نمونہ یمہ سیتۍ پرن وول یہ اندازہ ہیکہِ کٔرتھ زِ یہ رسالہ کتھین معاملن پیٹھ تہ کمہ اندازہ اوس سوچان۔

 

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s