آزادی ہند مطلب کیا؟

One World Flag Shawna

میہ تہِ آو اندرمہِ دیگہ پِستھ
وۅندہ ژھٹنس سپدس پابند

میہ چھہ نہ سیاستس سیتۍ کانہہ تعلق تہ نہ چھیم اتھ منز کانہہ دلچسپی، مگر کشیرِ سیتۍ تعلق آسنہ کنۍ تہ وری پتہ وری اتہِ کس خون خرابس پیش نظر چھس کُنہِ ساعتہ کانہہ کمینٹ کران۔ کمینٹ کٔرتھ اکثر پچھتاوان۔ کشیرِ ہندۍ حالات چھہِ سیٹھا پیچیدہ، بلکہ چھہِ سیاسی معاملات ہمیشہ پیچیدہ آسان تہ میہ ہِوس سادہ منوش سندِ خاطرہ چھہ زگ تہ پرون الگ الگ کڈن ناممکن۔

بہ چھس نہ ذاتی طور آزادی ہنزن تحریکن ہند دلدادہ، وجہ چھہ یتھ جمہوریت کس دورس منز چھہ نہ آزادی ہند سہ مطلب یس حملہ آور بادشاہن تہ ڈکٹیٹرن ہندس دورس منز آسان اوس۔ آزادی ہنزہ تحریکہ چھیہ غیر جمہوری دورن تہ غیر جمہوری حکومتن سیتۍ تعلق تھاوان۔ انسان کُنہِ تہِ ملکس منز ٲسۍ تن، سہ چھہ نہ توت تام آزاد یوت تام نہ تتھ ملکس تہ سماجس منز پایدار جمہوری روایت قایم آسہِ۔ کُنہِ ملکہ نش الگ نیرُن چھیہ نہ آزادی ہنز کانہہ گارنٹی، چاہے سہ الگ نیرُن مقامی تمدنی شناختس پیٹھ دٔرتھ آسہِ یا مذہبی شناختس پیٹھ۔ اسہِ نش چھہ ونکین دستیاب نظام حکومتن منز صرف جمہوریتے سہ نظام یتھ مقابلتا بہتر نظام ؤنتھ ہیکو۔ ازۍ کس دنیاہس منز گژھہِ سانۍ کوشش یہ روزنۍ زِ یتھ جایہ تہ یتھ ملکس منز اسۍ بسان آسو یا بسن پسند کرو، تتہِ جمہوری نظام قایم گژھنچ تھاوو یژھ تہ ییتہ یہ گۅڈے قایم آسہِ تتہ یہ نظام مزید مستحکم گژھنچ پژھ۔

یس ملک تہ سماج صحیح معنی یس منز جمہوری آسہِ تتھ منز چھہ پریتھ شخص آزاد۔ دنیاہس منز ٲس ساسہ بدین ؤرین بادشاہت چلان۔ سہ اوس اکھ نظام۔ جمہوریتس گوو نہ واریاہن ملکن منز ونہِ ہتھ ؤری تہِ۔ اکثر چھہ ونہِ کھۅکھشہ پکان۔ لہذا چھیہ صبرچ ضرورت۔ بادشاہتہ یِن نہ واپس، ڈکٹیٹرشپ ین نہ واپس۔ دنیا چھہ دۅہہ کھۅتہ دۅہہ اتھ معاملس منز ترقی کران۔ انسان چھہ نہ تبدیلی ویسے تہِ آسانی سان قبول کران، مفاد تھاوۍ توکھ الگے۔

انسان گژھہِ جذباتۍ ردعملو نش آزاد گژھن، جہالت نش آزاد گژھن۔ یہ دور چھیی نہ سہ دور یتھ منز سیاستس منز یا اعتقادس منز "رہنما” آسان ٲسۍ۔ یتھ دورس منز چھہ پریتھ شخص پننہِ خاطرہ پانہ ذمہ دار۔ امس چھہ کٲنسہِ پتہ پتہ پکنہ بجایہ پانہ سوچن۔ یہوے گوو جمہوری طرز عمل۔ سہ کیا چھہ سوچان تمیک اظہار گژھہِ صرف دۅن طریقن منز سپدُن۔ پنن موقف مدلل پاٹھۍ بیین برونہہ کنہِ تھاوُن تہ دویم پنن ووٹ ترٲوتھ۔ جمہوریتس منز چھہ پریتھ شخصس پنن موقف پیش کرنک حق تہ آزادی؛ تہ پنن ووٹ ترٲوتھ حکومتی نظامس منز شامل گژھنچ آزادی۔ جمہوری دور چھہ رہنماہن ہندِ بدلہ سیاست دانن تہ منتخب نمایندن ہند دور۔ عوامچ کٲم چھیہ یم منتخب کرنۍ تہ کٲم یمن حوالہ کرنۍ۔ اگر نہ مطلوب کٲم یہندِ دسۍ انجام ییہ، یم یِن نہ دوبارہ منتخب کرنہ۔ عوام اگر سیاستس منز پننۍ نمایندہ منتخب کٔرتھ تہِ سرگرم روزِ زانن گژھہِ، تمہ وقتہ تہ تمہ جایہ ہندۍ حالات چھہِ نہ صحیح۔

بہ ووتس یتھ نتیجس پیٹھ زِ کشیرِ ہند مسلہ گژھہِ جمہوری طریقے حل۔ یعنی راے شماری۔ وجہ یہ زِ یہ مسلہ اگر نہ جمہوری طور حل کرنہ آو، یہ روزِ نوسور بٔنتھ بار بار یتھے پاٹھۍ کلہ کڈان تہ خون خرابہ تہ روزِ چالو۔

بہ چھس اکس ملکس منز روزتھ اتیک فرمابردار شہری تسلیم کٔرتھ پنن پان تمہِ انسانیتک اکھ اٹوٹ حصہ زانان یُس یتھ سارۍ سے زمینس پیٹھ مختلف جاین، شکلن، رنگن تہ سوچن منز چھکرتھ چھہ، اکہ گلشنکۍ پاٹھۍ، پتہ زن چھس بہ کاشرے!