محمد رمضان سند اکھ افسانہ ۔۔۔۔ ہالو

11295671_956700244381717_3298185407104550170_n

کتھے چھیہ روزان تہ کتھے روزِ۔ کتھ چھیہ یہ زِ بٹھہِ پیٹھ چہ زنانہِ ترٲو سمندرس کن نظر۔ سمندر کس نیلس رنگس کن نہ بلکہ مردس کن یمۍ سمندر کس آبس منز غوطہ دیت تہ ژھانٹھ وٲے تہ بیاکھ غوطہ دیت۔ پیٹھہ کنہِ گوو اکھ سمندری جاناوار نمودار تہ ہوہس پیٹھ پکھہ وہرٲوتھ ووتھ کھرِ بۅن تہ پتہ کھوت بییہ ہیور۔ سیٹھا ہیور کن گوو آسمانس منز غیب۔

مردس کن وچھنہ برونہہ ؤژھ زنانہ تہ کٔرن ہالو رٹنچ کوشش۔ تمۍ کوڈ پانس اکھ زیوٹھ مس وال، تتھ گونڈن اکہ اندہ اکھ پوش تہ بییہ اندہ بیاکھ۔ اکھ اند گونڈن اکس تھرِ تہ اتھ مس والس بنوون منزس اکھ حلقہ۔ تمۍ کٔر اکہ دۅیہ لٹہِ اتھ حلقس منز ہالو رٹنچ کوشش۔ تس گوو احساس زِ اگر مرد بییہ اندہ تھپھ کرِ، سۅ گژھہِ ہالو رٹنس منز کامیاب۔ سۅ آیہ واپس تہ وچھن بییہ مردس کن تہ دیتُنس آلو۔ "ہیا مردا، تھاوو وۅنۍ۔”

مردن دیت گوش۔ اکس جایہ ژاو آبس منز تہ بییس جایہ دراو نون۔ زنانہِ دیت بیاکھ آلو۔ "مردا، وۅلا یورۍ۔”

مرد دراو آبہ منزہ تہ ووت زنانہِ نش۔ "وچھتھہ میون دم؟ ”

مردن تھوو زنانہِ ہندین لنگن پیٹھ پنن کلہ تہ زنانہِ پھرِ مایہ بٔرتھ پننہ اونگجہ امۍ سندس مستس۔ مردس پییہ نندر۔ زنانہِ دیت آلو۔ "پییہِ نندر! وۅتھ تھود۔”

مرد گوو ہشارہ تہ پانسے سیتۍ کیاہ تام ہڑبڑٲوتھ نین سمندرکس آبس کن کنی دو تہ دیتُن اتھ منز بییہ اکھ غوطہ۔ زنانہِ کٔر بییہ ہالو رٹنچ کوشش تہ آیہ واپس تہ ترٲون مردس کن نظر یُس وۅنۍ نیلس آبس پیٹھ پننۍ تھر ترٲوتھ نرِ تہ زنگہ وایان اوس۔ زنانہِ دیت آلو۔ "مردا، وۅلا یورۍ۔”

مردن کور کینژس کالس ژھل مگر زنانہِ ہندس بار بار آلو دِنس پیٹھ کھوت آبہ منزہ تہ ووت زنانہِ نش۔ "کیا دلیل؟”

"پکھ ہالو رٹو۔”

مردن زن نہ بوزے تہ ترووُن امۍ سنزن رانن پیٹھ بییہ کلہ۔ زنانہِ ہیوت مایہ بٔرژو اونگجو امۍ سندس مستس پھش دیُن۔ مردس پییہ نندر۔ زنانہِ دیت آلو آلو۔ ییتہِ نس سمندری جاناوار آسمانس منز غیب گیوو، بالکل تمی سیدہ دراو اوبرہ منزہ اکھ دیو تہ بۅن ؤستھ لوگ زنانہِ اندۍ اندۍ گتھ دنہِ۔ زنانہِ دیت مردس بانبرِ ہوت آلو۔ "مردا مردا تھود ووتھ، ہشار گژھ۔ میہ چھہ کستام گتھ دوان۔”

مرد اوس مس نندرِ، اتھۍ سمندرس منز غوطہ دوان۔ اوبرہ دیون تُج زنانہِ نکھس تہ نین ہیور، سیٹھا ہیور اوبرس منز۔ مردس ییلہ نہ رانن ہند وشنیر تہ اونگجن ہند حیس ووت، سہ گوو ہشارہ تہ ژھٲنڈن زنانہ۔ تمۍ سوچ اگر زنانہِ ہند پتاہ کانہہ ؤنتھ ہیکہِ سمندری جاناوارس ورٲے نہ کہنے۔ یہ چھہ آسمانس منز وڈان مگر امس چھیہ پریتھ چیزس پیٹھ نظر آسان۔ مرد ووتھ سمندرکس آبس منز تہ رود امس جاناوارس پراران یوت تام سہ زیچھو پکھو ہوہس پیٹھ رکنہِ ؤستھ نمودار گوو۔ امۍ کورس سوال۔ "ژیہ ما وچھتھن زنانہ؟”

"آ، پیٹھہ کنہِ اوبرس منز۔”

مرد ژاو امس تیز رفتار سمندری جاناوارس منز تہ ووت اوبرہ دیوس تام۔ دیو اوس زنانہِ ہنزن رانن پیٹھ کلہ تھٲوتھ تہ زنانہ ٲس اونگجو سیتۍ تسند مس پھران۔ سمندری جاناوار بیوٹھ اکس اوبرہ لنگس پیٹھ تہ کٔرن زنانہِ اچھ ناٹھ ۔ زنانہِ دیت اوبرہ دیوس آلو۔ "اوبرہ دیوا، تھود وۅتھ۔ میہ وچھ اوبرہ لنگس پیٹھ سمندری جاناوار۔ امۍ کٔر میہ کن وچھتھ اچھ ناٹھ۔”

دیو ووتھ تہ سمندری جاناوارس کن نظر دتھ وونن۔ "دِس بیہنہ۔”

اوبرہ دیو شونگ دوبارہ۔ زنانہِ ٲس سمندری جاناوار سے کن وچھان۔ امۍ سنزہ اچھ آسہ وۅزجہ۔ امۍ آسہ نہ سمندری جاناوار سنزہ اچھ امہ برونہہ زنہے وچھمژہ۔ سمندری جاناوارن کٔر بییہ اچھ ناٹھ۔ زہ اچھ ناٹہ۔ زنانہِ دیت اوبرہ دیوس بییہ آلو۔ "اوبرہ دیوا، ہتا اوبرہ دیوا، یہ نا چھہ نہ جاناوار ۔ وۅتھو تھود۔ امۍ ہا کرِ میہ زہ اچھ ناٹہ۔”

اوبرہ دیون وون نندرِ منزے ۔ "کیا رووے، جاناوار چھا اچھ ناٹھ کران۔”

سمندری جاناوارہ منزہ دراو مرد نیبر تہ زنانہِ ہژس تھپھ کٔرتھ ژاو جاناوارس منز واپس۔ یم واتۍ واپس سمندر بٹھس پیٹھ۔ زنانہِ ژوٹ اکھ زیوٹھ مس وال۔ اکہ اندہ گونڈنس اکھ پوش، بییہ اندہ بیاکھ پوش۔ اکہ طرفہ روٹ مردن تہ بییہ طرفہ زنانہِ۔ منزس بنووکھ اکھ حلقہ۔ یتھے ہالو اتھ حلقس نش ووت، یمو لوم مس والس وارہ وارہ۔ حلقس منز لوگ ہالو۔ یتھہ پاٹھۍ روٹ یمو پنن گۅڈنیک ہالو۔ زنانہِ ژج کریکھ نیرتھ۔ "ہالو ہا لوگ!”

مردن تہِ دژ کریکھ۔ :اسہ روٹ ہالو۔”

پیٹھہ کنہِ گوو سمندری جاناوار وڈان وڈان نیلس آسمانس منز غیب۔

_______

افسانس پیٹھ تبصرہ:

فیاض دلبر: یہ چھہ واقعی پرن وٲلس گنڈتھ تھاون وول افسانہ۔ افسانہ نگار چھہ یقینا کہنہ مشق تہ تجربہ کار باسان۔ اکوے فی چھہ پیدہ گژھان۔ سہ گوو یہ ما چھہ وۅپر زمینہِ پیٹھ ووننہ آمت۔ کاش اتھ افسانس منز کاشرِ ماحولچ گراے آسنۍ۔

راجہ یوسف: میہ گوژھ گۅڈہ ہالوس (افسانک ناو ۔ ہالو) مطلق کانہہ ونن۔ یہ چھا سُے ہالو یُس کشیرِ منز دانیس بیہان چھہ تہ وۅٹہ تلان تلان اکہِ دانہِ کلہِ پیٹھ بییس دانہِِ کلِس تران چھہ۔ کشیرِ منز چھنہ مس والہ سیتۍ ہالو رٹنک رواج البتہ ٲسۍ پتھ کالہِ وال واش لگان، یہ ٲس گُرۍ دُمِچ یوان بناونہ، تہ امہ سیتۍ ٲسۍ کوتر، ککلہ تہ ژرِ بیترِہ رٹنہ یوان۔ عربس منز چھہ یہ سٹھاہ بوڈ آسان تہ امس چھہ اتہِ ٹِڈی ونان،یم چھہِ جُنڈس منز اسمانس منز وُڈان تہ امہِ وزِ چھہ اپارۍ اپارۍ زمینس انہِ گوٹ گژھان۔ یہ چھہ حلال۔ مگر وال واش چھنہ رٹنہ یوان۔ خبر یہ کتُیک ہالو چھہ یس مس والہ سیتۍ رٹنہ چھہ یوان ۔۔ گۅڈہ گوژھم یی فکرِ ترن زِ یہ کُس ہالو چھہ ۔۔کِنہ یہ چھہ بدل کینہ ؟

شکیل الرحمن: افسانہ آو واریاہ پسند، کم سے کم شاعری چھس نہٕ برتھ ۔۔۔۔ ہرگاہ افسانہ نگار کشیرِ منز روزان چھہ تہ ییتہ کس زمینس منز اسہِ ہن لیوکھمت جان گیوم۔ یتھ پاٹھۍ فیاض دلبرن اظہار کور۔ افسانہ لٮیکھن وول چھہ شاید سمندرن متاثر کورمت یا یہ ما چھہ نیبرے روزان۔

شاہد دلنوی: مہ تہِ آو افسانہ ہالو سیٹھاہ پسند تکیازِ افسانہ نگارن چھہ پزنہ پٲٹھۍ گۅڈہ اکھ ماحول پیدہ کورمت تہ پتہ اکھ تژھ کہانی ترتیب دژمژ یتھ الگ رنگ چھہ۔ لیکھنک منفرد انداز، کردارن ہنز منآسب ژٲر، ڈائیلاگن ہنز برجستگی ۔۔۔۔ سمندر، اوبر، مرد، زنانہ، دیو بیترِ علامژن ہند بر محل تہ استادانہ ورتاو۔ سورےکینہہ چھہ اکہِ کامیاب افسانچ دلیل۔ بڈِ پایہ چھیہ زبٲنۍ ہند افسانوی استعمال نظرِ تل تھاونہ آمت تہ بقول منیب صٲب وعظ خٲنی نشہِ لوب ہینہ آمت۔ واراہ کٲلۍ سپد کٲشرِ زبٲنۍ اندر اکھ بہترین افسانہ پرنک اتفاق ییمہ خٲطرہ فکشن رائٹرس گلڈ مبارک بادی ہند مستحق چھہ۔ یہ افسانہ پٔرتھ پیوو میہ سربرآوردہ افسانہ نگار سید یعقوب دلکش یاد یمو یتھی واریاہ علامتی افسانہ لیکھمتی چھہِ۔

منیب الرحمن: میہ پیوو نہ ہالوس مطلب ژھارن تکیازِ میہ پور افسانہ اکھ کہانی زٲنتھ، یتھ منز ہالوس ہالوے مطلب چھہ۔ اچھا سوال چھہ یہ کتیک ہالو چھہ؟ افسانہ چھہ بذات خۅد اکھ جاے بلکہ پنن اکھ دنیا قایم کران۔ یہ ہالو چھہ تمی دنیاہک۔ یہ ہالو سانس دنیاہس یا اندی پکھس منز ژھارن چھہ نہ ضروری۔ چونکہ افسانہ چھہ کٲشرۍ پٲٹھۍ لیکھنہ آمت، تمیک مطلب ما گوو یہ گژھہِ کشیرِ ہندس ماحولس ریفلیکٹ کرن۔

مظفر عازم: (انگریزی پیٹھہ ترجمہ) میہ پٔر کہانی تہ وۅمید چھیہ بییہ پرن کژِ لٹہِ۔ یہ چھہ بیان آمت کرنہ یتھہ پاٹھۍ کہانی پزِ سپدنۍ۔ یم پرن والۍ اتھ نیبرم، وۅپر بیترِ ونان چھہِ گژھن اکس لۅکچہ منز بند آسنہ کنۍ یلے تراونۍ۔ میہ پیوو اکھ دوست شاید سو مناتھ زتشی یاد یمۍ کلچرل کانفرنس کنہ کانگریس چہ میٹنگہ منز اکد افسانہ پور۔ بیانیہس منز اکس جیپہِ پیٹھ سپد سورے تنقید تہ وونکھ زِ جیپہِ ہند رنگ (یہ اوسا سفید) زانن چھہ ضروری زِ یہ جیپ چھہ یو این پیس والین ہنز۔ اسہ سارنے چھیہ پتاہ زِ دنیا آو نزدیک مگر یہ زاننس زِ یہ قطعہ زمین چھیہ سون مشترک قیام گاہ لگہِ کینہہ وقت۔

شکیل الرحمن: مگر یوت کٔرتھ تہِ چھہ خیالات پننس اوندپکس منز زنم لبان تکیازِ وسیع دٲیرس منز چھہ سون وجود راوان۔۔۔۔۔۔۔ تہٕ عام طور خواب پننہِ پرانہِ پہرِ منز نوِ زمانہ کٮ۪و کردارو سیتۍ سجاوان۔ سون ونن اوس ڈل تہ وۅلر تہِ ییہ ہا "ہالو” افسانہ سیتۍ بارسس۔ خیر سمندری گاڑ چھا مزہ دار کِنہ نہ یہ چھہ بحث طلب۔۔۔

منیب الرحمن: حقیقت چھیہ یہ زِ کٲشر ادب چھہ سیٹھا لوکلایزڈ ادب، امیک وجہ چھہ یہ زِ زبان تہ ادب چھہ صرف کشیر منز زندہ، مگر پتمین کینژن دہلین منز ہیوت امہ رنگہ امۍ واش کڈن۔ کینہہ زبان چھیہ کشیرِ نیبر تہِ بولنہ یوان تہ کینہہ ادب چھہ کشیرِ نیبر تہِ لیکھنہ یوان گو کہ زیادہ پہن چھہ تورہ کینے معاملن سیتۍ ونہِ آور۔ اگر بہ ادب تخلیق کرہ، سہ آسہ محمد رمضان سندۍ پٲٹھۍ یورہ کے تکیاز اسہ گوو واریاہ وقت کشیرِ نیبر۔ سون تخیل چھنہ کشیرِ کن وپھ تلان۔ اگر یہ افسانہ کاشرس یا اردوس منز آسہِ اتھ ونہِ نہ کانہہ ووپر تکیازِ تم ادب چھہِ نہ لوکلایزڈ ادب۔ کاشرین تہِ پزِ ادبس حض تلن یہ سونچتھ ز یہ زبان تہ امیک ادب چھہ وونۍ کشیرِ نیبر تہِ موجود۔ تہ کشیرِ ہندین سیاسی سماجی معاملن الگ تہِ ہیکن ادبکۍ معاملہ آستھ۔

شکیل الرحمن: یۅہے حال چھہ پریتھ زبٲنۍ ہند عالمی زبٲنۍ وغیرہ۔ تخیلس چھا واٹھ تخلیق کار سندس تتھ ماحولس سیتۍ یتھ منز سہ پریتھیومت آسہِ۔ اوند پۅک چھا سطحی طور اثر تراوان۔ کیسینو یا کلب ماحول ہیکہ ممبے ہندس تمس اثر انداز کٔرتھ تہ سے آسہِ تتہ کٮین مسلن انزۍ منزۍ گومت یُس تتھ ماحولس سیتی جڑتھ سہِ۔ آ، زینہٕ گرِ پٮ۪ٹھہ کنُہِ ماحولس منز پلنہ سیتۍ چھہ علاقایی ماحولک اثر ٹاکار پٲٹھۍ وۅتلان۔ ہالو افسانہ چھہ امہ کتھہِ ہند عکاس۔ ٹاکارہ پٲٹھۍ چھہ یہ کمس تام ایشٮین سند سوچ تہ تخیل۔ آ، سمندرن آسہِ متاثر کورمت۔

ہردے کول بھارتی: "ہالو” افسانس متعلق کینہہ وننہ برونہہ چھہ یہ ونن ضروری زِ بہ چھس نہ کانہہ ناقدانہ خیال یا رائے بلکہ خالصتا میانۍ ذاتی پسند تہ امہِ میزانہ کور میہ ہالو افسانہ خوش۔ یہ افسانہ چھہ گۅڈنچہ زہ تریہ لٲنہ پرۍ تھے دماغ آوراوان تہ ٲخری لٲن ختم گژھنہ پتہ تہِ آورِتھ تھوان تہ یتھہ پاٹھۍ چھہ سوچن تہ خیالن ہندِ عالمک اکھ (maze) ہیو کھلان۔ میانۍ کنۍ چھیہ یہے افسانچ کامیابی تہِ تہ خوبصورتی تہِ۔  زبان ورتاونس منز چھیہ افسانہ نگارن واریاہ لاپرواہی ورتٲومژ.