آزادی ہند مطلب کیا؟

One World Flag Shawna

میہ تہِ آو اندرمہِ دیگہ پِستھ
وۅندہ ژھٹنس سپدس پابند

میہ چھہ نہ سیاستس سیتۍ کانہہ تعلق تہ نہ چھیم اتھ منز کانہہ دلچسپی، مگر کشیرِ سیتۍ تعلق آسنہ کنۍ تہ وری پتہ وری اتہِ کس خون خرابس پیش نظر چھس کُنہِ ساعتہ کانہہ کمینٹ کران۔ کمینٹ کٔرتھ اکثر پچھتاوان۔ کشیرِ ہندۍ حالات چھہِ سیٹھا پیچیدہ، بلکہ چھہِ سیاسی معاملات ہمیشہ پیچیدہ آسان تہ میہ ہِوس سادہ منوش سندِ خاطرہ چھہ زگ تہ پرون الگ الگ کڈن ناممکن۔

بہ چھس نہ ذاتی طور آزادی ہنزن تحریکن ہند دلدادہ، وجہ چھہ یتھ جمہوریت کس دورس منز چھہ نہ آزادی ہند سہ مطلب یس حملہ آور بادشاہن تہ ڈکٹیٹرن ہندس دورس منز آسان اوس۔ آزادی ہنزہ تحریکہ چھیہ غیر جمہوری دورن تہ غیر جمہوری حکومتن سیتۍ تعلق تھاوان۔ انسان کُنہِ تہِ ملکس منز ٲسۍ تن، سہ چھہ نہ توت تام آزاد یوت تام نہ تتھ ملکس تہ سماجس منز پایدار جمہوری روایت قایم آسہِ۔ کُنہِ ملکہ نش الگ نیرُن چھیہ نہ آزادی ہنز کانہہ گارنٹی، چاہے سہ الگ نیرُن مقامی تمدنی شناختس پیٹھ دٔرتھ آسہِ یا مذہبی شناختس پیٹھ۔ اسہِ نش چھہ ونکین دستیاب نظام حکومتن منز صرف جمہوریتے سہ نظام یتھ مقابلتا بہتر نظام ؤنتھ ہیکو۔ ازۍ کس دنیاہس منز گژھہِ سانۍ کوشش یہ روزنۍ زِ یتھ جایہ تہ یتھ ملکس منز اسۍ بسان آسو یا بسن پسند کرو، تتہِ جمہوری نظام قایم گژھنچ تھاوو یژھ تہ ییتہ یہ گۅڈے قایم آسہِ تتہ یہ نظام مزید مستحکم گژھنچ پژھ۔

یس ملک تہ سماج صحیح معنی یس منز جمہوری آسہِ تتھ منز چھہ پریتھ شخص آزاد۔ دنیاہس منز ٲس ساسہ بدین ؤرین بادشاہت چلان۔ سہ اوس اکھ نظام۔ جمہوریتس گوو نہ واریاہن ملکن منز ونہِ ہتھ ؤری تہِ۔ اکثر چھہ ونہِ کھۅکھشہ پکان۔ لہذا چھیہ صبرچ ضرورت۔ بادشاہتہ یِن نہ واپس، ڈکٹیٹرشپ ین نہ واپس۔ دنیا چھہ دۅہہ کھۅتہ دۅہہ اتھ معاملس منز ترقی کران۔ انسان چھہ نہ تبدیلی ویسے تہِ آسانی سان قبول کران، مفاد تھاوۍ توکھ الگے۔

انسان گژھہِ جذباتۍ ردعملو نش آزاد گژھن، جہالت نش آزاد گژھن۔ یہ دور چھیی نہ سہ دور یتھ منز سیاستس منز یا اعتقادس منز "رہنما” آسان ٲسۍ۔ یتھ دورس منز چھہ پریتھ شخص پننہِ خاطرہ پانہ ذمہ دار۔ امس چھہ کٲنسہِ پتہ پتہ پکنہ بجایہ پانہ سوچن۔ یہوے گوو جمہوری طرز عمل۔ سہ کیا چھہ سوچان تمیک اظہار گژھہِ صرف دۅن طریقن منز سپدُن۔ پنن موقف مدلل پاٹھۍ بیین برونہہ کنہِ تھاوُن تہ دویم پنن ووٹ ترٲوتھ۔ جمہوریتس منز چھہ پریتھ شخصس پنن موقف پیش کرنک حق تہ آزادی؛ تہ پنن ووٹ ترٲوتھ حکومتی نظامس منز شامل گژھنچ آزادی۔ جمہوری دور چھہ رہنماہن ہندِ بدلہ سیاست دانن تہ منتخب نمایندن ہند دور۔ عوامچ کٲم چھیہ یم منتخب کرنۍ تہ کٲم یمن حوالہ کرنۍ۔ اگر نہ مطلوب کٲم یہندِ دسۍ انجام ییہ، یم یِن نہ دوبارہ منتخب کرنہ۔ عوام اگر سیاستس منز پننۍ نمایندہ منتخب کٔرتھ تہِ سرگرم روزِ زانن گژھہِ، تمہ وقتہ تہ تمہ جایہ ہندۍ حالات چھہِ نہ صحیح۔

بہ ووتس یتھ نتیجس پیٹھ زِ کشیرِ ہند مسلہ گژھہِ جمہوری طریقے حل۔ یعنی راے شماری۔ وجہ یہ زِ یہ مسلہ اگر نہ جمہوری طور حل کرنہ آو، یہ روزِ نوسور بٔنتھ بار بار یتھے پاٹھۍ کلہ کڈان تہ خون خرابہ تہ روزِ چالو۔

بہ چھس اکس ملکس منز روزتھ اتیک فرمابردار شہری تسلیم کٔرتھ پنن پان تمہِ انسانیتک اکھ اٹوٹ حصہ زانان یُس یتھ سارۍ سے زمینس پیٹھ مختلف جاین، شکلن، رنگن تہ سوچن منز چھکرتھ چھہ، اکہ گلشنکۍ پاٹھۍ، پتہ زن چھس بہ کاشرے!

پھیکس پیٹھ اتھہ – تریہ واقعہ

مستند تلفظ

آل احمد سرور اوس کشیمر یونیورسٹی ہندِ اقبال انسٹی چیوٹک سربراہ۔ شاید اوس میہ یمن دۅہن یونیورسٹی اندر ایم اے انگلشس منز داخلہ۔ آل احمد سرورن کور اکھ سیمنار منعقد یتھ منز نیبرمین اندرمین سکالرن سیتۍ رشید نازکی صٲبن تہِ مقالہ پور۔ سیمنارس منز ٲسۍ مسعود حسین خان تہ مدعو، یم ٲسۍ میہ علی گڈھہ استاد رودۍ متۍ۔

نازکی صٲبنس مقالس دوران اوسس بہ بۅنہ کنہِ یمنے نش بہت۔ یم ٲسۍ میہ سیتۍ اورچ یورچ کتھا کتھا کران۔ نازکی صٲبن اوس مقالہ پران پران یہ منظر وچھمت۔ سیمنارس ییلہ چایہِ ہندِ خاطرہ بریک میج، نازکی صٲب آیہ میہ نش تہ تھووکھ میٲنس پھیکس پیٹھ اتھہ تہ پرژھکھ ، "ییلہ بہ مقالہ پران اوسس یہ مسعود حسین خان صٲب کیا اوسے ژیہ پرژھان؟”

یمن ٲس نہ خبر زِ خان صٲب اوس میہ استاد۔

بہ اوسس یمن دۅہن رژھ کھنڈ شیطانی منز۔ میہ دوپ یۅہے چھہ موقعہ۔ میہ وونس، "کہنی نہ حض، یم ٲسۍ ونان یہ مقالہ پرن وول کس چھہ تہ میہ وونمکھ یم چھہِ کشیرِ ہندۍ نامور ادیب۔ تورہ حض دوپکھ نہ صرف چھہ یہند مقالہ عالمانہ بلکہ چھہ یہند تلفظ تہِ سیٹھا معیاری تہ مستند۔ میہ چھہ نہ کشیرِ منز یُتھ تلفظ کٲنسہِ وچھمت۔”

میون اوس یہ وننے یوت زِ نازکی صٲبن اون کنے وۅٹہِ میہ ٹیبلہ پیٹھہ چایہ پیالہ تہ دوپکھ، "رٹھ چیہ چاے”۔

اسۍ چھہِ دۅشوے کھڑا کھڑا چاے چیوان زِ نازکی صٲبس پییہ کس تام پیٹھ نظر۔ امۍ تھوو میہ پھیکس پیٹھ بییہ اتھہ تہ نیونس امس شخصس نزدیک تہ پرژھن، "اچھا کیا اوسے ژیہ یہ مسعود حسین خان ونان؟” میہ نی لفظ بہ لفظ پننۍ شیطانی دہرٲوتھ۔

نازکی صٲبن تروو یہ شخص اتی تہ نیونس بییس نفرس کن تہ پرژھن بییہ یۅہے سوال۔ میہ دوپ ہے ہے بہ کیا سا پھسیوس ولٹہ پاٹھۍ۔

امہ پتہ کینژس کالس ییلہ تہِ میہ نازکی صٲب کٲنسہِ شخصس تھی یونیورسٹی منز سمکھہ ہن، تم ٲسۍ میہ یوہے سوال پرژھان!

نازکی صٲبس چھہ پزۍ پاٹھۍ قابل رشک تلفظ!

"وچھ کیا جان!”

بیاکھ شخص یُس یونیورسٹی منز میٲنس پھیکس پیٹھ اتھہ تھاوان اوس، چھہ قاضی غلام محمد۔ فرق ٲس یہ زِ رشید نازکی صٲب ٲسۍ میون سویچ آن کرنہ خاطرہ پھیکس پیٹھ اتھہ تھاوان ییلہ زن قاضی صٲب شاید پنن سویچ آن کرنہ مۅکھہ میٲنس پھیکس پیٹھ اتھہ تھاوان ٲسۍ ۔

ملاقاتس دوران ٲسۍ یم غالب بوزناوان، اکثر فارسی یُس نہ میہ تمن دۅہن زیادہ سمجھ یوان اوس۔ یمن سیتۍ ٲسۍ پننۍ شعر تہِ بوزناوان۔ کتھ یۅس دہراونۍ لایق چھیہ سۅ چھیہ یہ زِ کنہِ تہِ شعرس پیٹھ میانہِ ردعمل برونہے ٲسۍ یم پانے ونان۔ "وچھ کیا جان! وچھ کیا جان! وچھ کیا جان!”

ملاقاتس دوران ٲسۍ یونیورسٹی گراونڈکۍ اکھ زہ چکر لگان یتھ دوران بہ شعرو کھوتہ زیادہ "وچھ کیا جان! وچھ کیا جان!” بوزان اوسس۔ ییژِ لٹہِ سمکھہو نوین شعرن سیتۍ ٲسۍ پرانۍ شعر تہِ بوزنۍ پیوان۔ شاید اوس نہ تمن یادے آسان زِ میہ چھہِ امہ برونہہ تہِ تمن سیتۍ یونیورسٹی گراونڈکۍ چکر لگٲوۍ متۍ۔

قاضی صٲبس ٲسۍ سیٹھا کھسۍ پایہ شعر یاد۔ وچھ کیا جان! وچھ کیا جان!

اور اس کے بعد میں

اکہِ رٲژ سیٹھا ژیرۍ ٲسۍ اسۍ کینہہ نفر زبیر رضوی سندِ گرِ راج باغہ نیرتھ لال منڈی کن پکان۔ میہ چھہ نہ یاد سانہِ اتھ چھۅکہِ منز کُس کُس اوس، البتہ شجاع سلطان اوس تہ تس سیتۍ فاروق آفاق تہِ۔ اسۍ چھہِ کمے پہن کتھہ کران، زیادہ کتھہ اوس شجاع کران۔ پیٹھہ اوس سہ مست۔ تھوون میہ پھیکس پیٹھ اتھہ تہ پرژھن، "پینٹنگہِ منز کس چھہ کشیرِ منز نمبر اول؟” میہ اوس نہ زانہہ امتحان خۅش کران۔ میہ دوپمس پتاہ چھم سا۔ دوپن، کیا سا چھکھ ونان۔ پینٹنگ میں نمبر اول شنتوش ہے۔ جی آر سنتوش۔ میہ تہِ اوس یۅہے ناو ذہنس منز آمت مگر وونمس نہ۔ ونہِ اوس میہ "آ "وننے زِ اتھۍ شہس منز وون امۍ "اور اس کے بعد میں۔”

کینہہ قدم پکٔتھ تہ خلقن پیٹھ تبصرہ کٔرتھ ووتھ یہ بییہ پھیکس پیٹھ اتھہ تھٲوتھ، ” کشیرِ منز کُس چھہ بوڈ شاعر؟” یہ سوال اوس ویسے تہِ مشکل۔ میہ کٔر ژھۅپہ۔ میہ دوپ فاروق آفاق ونیس۔ تمۍ تہِ وونس نہ کینہہ، کنہِ ووننس واریاہ چھہِ، یاد چھم نہ۔ شجاع ووتھ پانے۔ "کامل۔ امین کامل۔” فاروق آفاقن وونس شاید میانہِ مۅکھہ "تتھ کیا شک چھہ۔”

ونہِ اوس تس یہ جملہ ٲسہ منزہ درامتے زِ یہ ووتھ بییہ، "اور اس کے بعد میں۔”

یوتام اسۍ بیون بیون درایہ، امۍ ٲسۍ بییہ تہِ واریاہ "اور اس کے بعد میں” ونۍ متۍ یم وۅنۍ میہ یاد چھہِ نہ، فاروق آفاقس ما آسن یاد!

شجاع سلطان اوس سیٹھا ذہین تہ ہنرمند شخص یمۍ یمن دۅشونی خصوضیژن زیادہ کٲم ہیژ نہ۔

کینہہ دلچسپ واقعہ

مژکری

جوانی ہندین ایامن منز ییلہ کانہہ دوست کنہِ محفلہِ منزسگریٹ ڈبۍ کھولان اوس، سۅ ٲس اکۍ سے منٹس منز خالی گژھان۔ واریاہن اوس محفلن منز سگریٹ ڈبۍ کھولنس کانپھ مگر ٹیٹھ چھیہ ٹیٹھ، یہ کیتس کالس کرِ ژیڈ۔

ہردے کول بھارتی صابن چھہ میہ اکھ واقعہ بوزنوومت۔ دوپن راہی صابن کوڈ ڈبہِ منزہ اکھ سگریٹ تہ ڈبۍ دژن دروازس کن دٲرتھ تہ وونن۔ "اکوے سگریٹ اوس بچوومت۔”

کامل صاب اوس تیلنگہ۔ یہ ووتھ تہ اننۍ یہ سگریٹ ڈبۍ تہ بٲگراونۍ امکۍ سگریٹ سارنے دوستن منز اکہ اکہ۔ راہی رود کیتھ تام ہیو وچھان۔

یمن ہنزِ مژکری ہنز شروعات ما چھیہ سگریٹ ڈبہِ پیٹھے شروع گمژ؟

نٲودس چھٹی

جمہِ پیٹھہ کس مشہور گایک کندن لال سہگلس متعلق چھہ میہ بوزمت زِ تمۍ اوس پورہ زندگی اکوے بوٹھ لوگمت۔ خبر یہ چھا پوز؟

مگر کامل صٲبس متعلق چھیہ یہ کتھ پوز زِ میہ چھہ نہ کامل صٲب زانہے ناید وانس کھسان وچھمت۔ کامل صٲب اوس مستس پتھ کن کنگو کران۔ میہ چھہ سہ واریاہ لٹہِ لۅکچہ قینچی سیتۍ پتۍ کنۍ پانے پنن مس کرپان وچھمت۔

چھو مبارک یہ انجمن سازی
حض کامل چھہ انجمن پانے

کامل سند مطالعہ

کامل صابس چھہِ واریاہ ادیب عالم ونان۔ مگر میہ آو نہ از تام سمجھ زِ یہ علم کتہ اوس امس یوان؟

میہ چھہ نہ کامل صٲب گھرس اندر کنہِ کتابہِ ہند مطالہ کران وچھمت۔ سٲنس گھرس منز ٲس نہ خاص کر انگریزی ادبس متعلق کانہہ کتاب۔ صرف چھیہ میہ زہ تریہ کتابہ نظرِ گمژہ۔ ایسفس فیبلز تہ براون سند فارسی گرامر تہ عروضس پیٹھ داہن وہن ورقن ہنز اخلاق دہلوی سنز کتاب۔ یاتہ چھہ کاملن پنن مطالعہ نوجوانی ہندین دۅہن منز کورمت، نتہ چھہ سہ اکاڈمی منزے یہ کار کران اوسمت۔ کامل صٲبن چھہ افسانہ لیکھن انگریزی ادیب اوہنری یس نش ہیوچھمت، مگر سانہِ گھرِ ٲس نہ کانہہ خاص کر انگریزی یا اردو ادبچ کتاب ماسواے غالب تہ اقبال۔

کامل صابن چھہ نہ پننین تحریرن منز کٲنسہِ انگریزی ادیب سند حوالہ دیتمت۔

کتابہ کیمۍ

کامل صٲبس نش آسہ کاشرین ادیبن ہنزہ واریاہ کتابہ۔ ساری آسہنس پننۍ پننۍ کتاب دوان۔ یم کتابہ آسہ سٲنس دیوان خانس منز اکس بجہ المارِ اندر اکس اکھ پیٹھ۔ بہ اوسس اکثر بہ المارۍ کھولان تہ کانہہ کانہہ کتاب ورق گردانی خاطرہ کڈان۔

یمن کتابن وتھۍ کیمۍ۔ میانہِ ماجہ دوپ امہ ادبہ سیتۍ چھہ گھرس گۅڈے شکس آمت، وۅنۍ ٲسیا یم کاغذ کیمۍ باقی۔ تمو کور فیصلہ زِ یم کتابہ ژھنووکھ ترٲوتھ۔ کامل صابس چلیوو نہ کینہہ۔ شاید ووننکھ ساریۍ نہ، کانہہ کانہہ تھٲوو، مگر تم کتابہ دژہ شکیل الرحمانن محلہ کس اکس وٲنس مفتے کنہ پونسن، پتاہ چھم نہ۔

تیلہ کالہِ اوس تموکھ کتابہ ورقن منز کننہ یوان۔ از تہِ آسہِ۔ تمٲکس بلایہ، مگر یم ورق ٲسۍ مۅللۍ آسان، لوکن ہندس علمس منز اوس (میٲنس تہِ) یمو سیتۍ تہِ سیٹھا اضافہ سپدان۔

خبر میہ کیا اوس ونُن

ادیب تہِ چھہ عوامی شخصیت آسان۔ لوکن چھیہ نہ صرف امۍ سندین تحریرن منز دلچسپی آسان بلکہ امۍ سنزِ زندگی منز تہِ۔ جدید تنقید ونۍ تن اسہِ خبر کوتاہ تہِ زِ ادب پرنہ، سمجھنہ خاطرہ چھیہ نہ ادیب سنز ذاتی زندگی زاننۍ ضروری، یہ زاننہ ورٲے چھہ نہ چارہ تہِ۔ الیٹ اوس نہ ادیب سنزِ ذاتی زندگی ادبس منز جاے دنہ خاطرہ تیار، حالانکہ یمہ قسمچ شاعری تمۍ پانہ کرمژ چھیہ تتھ چھہ سیدِ سیود تسنزِ ذٲتی زندگی سیتۍ واٹھ۔ ہپارۍ  چھہِ اسۍ شاعر سنز زندگی ادب سمجھنہ خاطرہ غیر ضروری زانان تہ یپارۍ چھہِ افسوس تہِ کران زِ شمس فقیر سنزِ زندگی متعلق چھہ نہ اسہِ کینہہ پتاہ۔ اکہ طرفہ چھہِ ونان زِ ادیب سنز شخصیت کرِ نہ شاعری سمجھنس منز کانہہ مدد تہ بییہ طرفہ چھہ کلیات مہجورس منز حالات زندگی تہ مزازہ، خۅے بیترِ شخصیتی معاملن پیٹھ صفحہ ہا سیاہ کران۔

 ادیب سند عوامی شخصیت  آسُنے چھہ تسنز زندگی زاننک دعوت دوان۔ الیٹس اوس کراس ورڈ پزل (معمہ) حل کرنچ بیمارۍ، تسۍ اوت نہ بلکہ وسٹن آڈن صٲبس تہِ۔ آڈن سنزِ شاعری منز مشکل تہ غیر مانوس لفظ آسنک  جواز (یمن ہندِ خاطرہ ڈکشنری وچھنۍ پیوان چھیہ) ہیکہِ یہ تہِ اکھ وجہ ٲستھ۔ راہی تہِ چھہ پننہِ شاعری منز غیر مانوس تہ متروک لفظ ورتٲوتھ مشکل پیدہ کرنچ ارادی کوشش کران۔ یہ ٲس جدید شاعرن ہنز اکھ بیمارۍ۔ غالب اوس نہ اتھ معنیس منز مشکل۔ از چھیہ تمۍ سنز زبان فارسی آمیز آسنہ کنۍ مشکل باسان مگر تمۍ سندِ وقتہ ٲس نہ سۅ غیر مانوس۔ غالب سنز مشکل پسندی چھیہ تسندین خیالن منز۔ اکس مضمونس منز مختلف فکری پہلو ژھارنۍ۔ سۅ شاعری ٲس تمی قسمچ شاعری۔ عمدا مشکل بناونہ ینہ واجنہِ شاعری منز چھہ نہ خیالک کانہہ سرینیر آسان۔ تہِ اوس نہ آڈن سنزِ شاعری منز تہِ۔ تہِ چھہ نہ راہی سنزِ شاعری منز تہِ۔

کامل ییلہ ریٹایر گوو تس روز نہ ادبی کارگزاری سیتۍ زیادہ دلچسپی، بییہ ٲسۍ تمہ وقتہ ریڈیو تہ ٹی وی والۍ راہی یسے زیادہ بلاوان۔ شاید اوسس یہ خدشہ تہِ شاعری منز گوژھ نہ نویر نہ آسنہ کنۍ پنن پان دہراون پیون، لہذا ہیوتن کینژن ورین نثرس کن کرُن، پتہ ژھنن سہ تہِ ترٲوتھ۔ کینژو تھٲو بیہ زو شاعری ہنز مشق جاری۔ اتھ وٲنسہِ منز چھیہ یہ عمل کینژھا امہ کنۍ تہِ ضروری آسان زِ ذہن گژھہِ فعال روزن تہ کینژھا امہ مۅکھہ عوامس منز پننۍ مقبولیت برقرار تھاونہ خاطرہ چھہ کینہہ نتہ کینہہ کرُن ضروری۔ عروضی شاعری تہِ بوزۍ تو معمہ حل کرنکۍ پاٹھۍ اکھ ذہنی ورزش مگر یمۍ شاعرن عروضی شاعری ہنز ورزش شروع پیٹھے کرمژ آسہِ، تسندِ خاطرہ چھہ نہ اتھ منز تہِ کانہہ چلینج۔ سٹیجن پیٹھ کھستھ صدارت کرنۍ، کتابہ رلیز کرنہِ تہِ چھیہ ذہن تہ شخصیت دۅشوے فعال تھاونچ اکھ کوشش یۅس نہ پریتھ جایہ تہ پریتھ کٲنسہِ مہیا چھیہ۔

مظفر عازم چھہ کمپیوٹرس پیٹھ شکلہ بناونس کن لوگمت، حالانکہ خالص قافیہ آرایی تہِ روزِ یمو شکلو کھوتہ بہتر۔ مگر یہ ذہنی آوریار چھہ تسندِ خاطرہ اہم کینژھا امہ کنۍ تہِ زِ کمپوٹر کین امکاناتن منز چھیہ تمس دلچسپی یمہ کنۍ تمۍ اسہِ کینژن نفرن کاشر کیبورڈ تہ فانٹ تہِ دیت۔یتھہ پاٹھۍ میہ امۍ سنزِ  کمپیوٹر گرافی ہنزن شکلن منز کانہہ دلچسپی چھیہ نہ، کاشریو ادیبو تہ ادارو تہِ ہٲو نہ امۍ سندس کیبورڈ تہ فانٹس منز کانہہ عملی دلچسپی۔ خبر میہ کیا اوس ونُن، بتہ کھینک وقت سپد، لہذا تراوون کتھ ییتہ نے۔

ژھوپ، نیتہ مۅمن، چور، سیدہ بوٹہ

دپان بہ اوسس پننس لوکچارس منز ژھوپ۔ بڈین تہ وۅپرن تھی اوسس نہ کتھ کران، شاید اوسس نہ تمن کن اچھ تلتھ تہِ وچھان۔ کُنہِ چیزس متعلق اوسس نہ بہ پننۍ راے ظاہر کران۔ فرمانبردار اوسس، یہ ونہنم تی اوسس کران بلکہ اوسس نہ ونہِ مژِ کُنہِ کتھہِ منز پننہِ طرفہ اکھ لفظ تہ رلاوان۔ کوشش اوسس کران زِ کانہہ کتھ گٔژھ نہ میہ کُن منسوب گژھنۍ۔ سانیو ہمسایو، مہراج الدین سنزِ وٲلدن اوس میہ ناوے بلکہ ریژھ "دپان چھی” تھاومژ۔ نذیر آزاد نس "نہج” رسالس منز دپان چھی عنوان وچھتھ پییہ میہ لۅکچارچ یہ کتھ یاد، نتہ چھہ میہ یاداشت نہ آسنس برابر۔ دپان چھی ٲسم ریژھ شاید امہ مۅکھہ زِ اگر میہ گرِ ہمساین نش کینہہ ہینہ دنہ یا کینہہ شیچھ خبر ہیتھ سوزان ٲسۍ، بہ اوسس پنن کلام "دپان چھی” پیٹھے شروع کران۔

428266_360783147285774_1073612678_n
بہ اوسس نہ صرف ژھوپ بلکہ اوسس نیتہ مۅمن تہِ۔ اتھہ منزہ ٲسم چیز ؤسۍ پیوان۔ اکہ جایہ پیٹھہ بییس جایہ تام چیز سارُن اوس میانہ خاطرہ ناممکن۔ میہ باسان میہ اوس چیز اتھس منز رٹنس تہ گرِ کین دنس کانپھ۔ میہ ٲس نہ سہل سہل کانہہ کٲم دنہ یوان۔

میہ چھہ یاد تمن دۅہن اوس یمن سانین ہمساین فون، ڈایل فون۔ اکہ لٹہِ اوس سانہِ خاطرہ کس تام سند فون آمت، گرِ سوزہس بہ فون بوزنہ خاطرہ۔ یہ ٲس میہ گۅڈنچ لٹھ فون اتھس کیتھ تلنک۔یہند فون اوس یہنزِ بیٹھکہِ منز ییتہِ یمن ہندۍ ٲشناو تہ دوس، سٲری بڈۍ موہنوۍ، کارہ بارۍ تہ جج تہ خبر کیا کیا محفل جمٲوتھ تاس گندان ٲسۍ۔ میہ روٹ رسیور اتھس کیتھ، ٲسک اند تھووم کنس پیٹھ تہ کنک اند ٲسس نش۔ کہنی اوسم نہ بوزن تگان، صرف رودس کینژس کالس ہیلو ہیلو کران یوت تام یمن میہ پیٹھ نظر پییہ تہ ٹھاہ ٹھاہ ترووکھ اسُن۔ ادہ متہ پرژھتو بہ کوتاہ وۅزلیوس۔ تہِ اوسس بہ چور تہِ۔

اسہ اوس گرِ کامہِ کارس منز مدد کرنہ خاطرہ اکھ مۅہنیو۔ امس ٲس میانۍ موج دۅہلہِ میہ اکھ ٹھول دنہ خاطرہ ونان، شاید اوسس بے یوت گرِ آسان باقی ٲسۍ سکولن گژھان یاد چھم نہ۔ یمن دۅہن ٲس اسہِ اکھ گاو تہ کۅکر تہِ۔ اکہ دۅہہ ییلہ امس مۅہنوس چندہ منزہ زہ ٹھول درایہ، میانہِ ماجہ پرژھس یم زہ ٹھول کتھۍ چھی ژیہ چندس منز؟ تمس زن رٹکھ ژور۔ سہ ووتھ کۅکرِ تراوۍ زہ ٹھول۔شاید اوس میانۍ ٹھول چندن منز جمع کران۔ امس ٲسۍ اسۍ شرۍ امہ پتہ پانوانۍ ریژھہ کڈتھ جبار جندہ کۅکر چندہ ونان۔ یہ مۅہینو گوو امہ پتہ گام واپس۔ میہ خیال تھاونچ ذمہ داری آیہ میانہِ زچھہِ ہمشیرس دنہ۔ تس چھہ از باسان سۅ ٲس میہ خیال تھاونہ کس معاوضس منز میانہِ حصک دۅد تہ چیتھ نوان۔ ۔

بہ اوسس سیدہ بوٹہِ تہِ۔ محلہ چہ کینہہ بجہ کورِ آسہ میہ آلو کٔرتھ اکھ پرچی اتھس منز دوان تہ تنبیہ کران یتھنا پانہ وچھکھ یا کٲنسہِ ہاوکھ۔ سیودے ٲسم فتح کدل بیینہِ پیٹھ کس بساطس نش سوزان۔ بہ اوسس اتھ پرچی تہ تورہ لفافس منز انۍ متس مالس زو کھوتہ زیادہ رٲچھ کران۔ یہ آو میہ سیٹھا ژیرۍ سمجھ یم آسہ میہ اتھہ کچھہ تہ زیر جامہ تہ برا بیترِ منگناوان۔

بہ اوسس پننین باین بینین گندنس منز بکار یوان۔ بڈس کمرس منز اوس اسہِ بسترن ہند چٹہ آسان۔ میانۍ بٲے بینہِ ٲسۍ اتھ پیٹھ کھسان تہ بہ اوسس بۅنہ کنہِ اتھ تل گژھان۔ یم ٲسۍ خۅش گژھتھ یمن پیٹھ وۅٹہ تلان۔ تلہ کنہِ اوس میہ دم گژھان۔ مگر امہ پتہ تہِ اوسس بہ یمن سیتۍ گندنس تیار گژھان۔

بہ اوسس کنہِ ساعتہ کنفیوز تہِ گژھان۔ ییلہ موج سکول ٲس آسان، بڈۍ بٲے بینہِ ٲسم بتہ شیران۔مگر کیہہ تام اوسم اتھ منز کم باسان، فکرِ اوسم نہ تران ماجہِ ہندس بتہ دنس تہ یہندس دنس کیا فرق ٲس پیوان۔ سوچان اوسس دال ما چھیہ کم۔ بہ اوسس رڈکہ لاگان زِ میہ چھو دال کم۔ میہ دییو بییہ دال۔ مول اوس کنہِ ساعتہ موقعس پیٹھ واتان تہ پرژھان کیا دلیل۔ بہ اوسس دال کم آسنچ شکایت کران۔ بتس پیٹھ دالہِ تگارہ وچھتھ اوس سہ دال تہ بتہ اتھہ سیتۍ رالاوان رلاوان ونان یہ کیا یہ چھیہ نا دال، یہ کیا یہ چھیہ نا دال تہ سیتی امی اتھہ چپاتھ تراوان۔ امہ پتہ اوس میہ دالہِ چپاتھ تہِ ناو پیوان۔

موج ٲس میٲنس زٹھس بٲیس کامہ کارس منز زیادہ پژھ کران۔ دیوارس پیٹھ اوس کانہہ فوٹو لگاون آسان، امۍ سے برادرس اوس وننہ یوان۔ یہ برادر اوس میہ آلو کٔرتھ ونان گژھ سٹول ان۔ بہ اوسس سٹول انان، پتہ اوسم ونان گژھ مارتور ان، ینہ وتی وسۍ پیی، بہ اوسس احتیاط سان مارتور انان۔ پتہ اوس ونان گژھ اکھ کیل تہِ ان، بہ اوسس کیل تہِ انان۔ امہ پتہ اوس ونان ہہ چھے ہتہ نس فوٹو گژھ ان دِ میہ اتھس کیتھ۔ بہ اوسس فوٹو اتھس کیتھ دوان۔ یہ اوس میہ سٹول بۅنہ کنہِ تھپھ کرنہ خاطرہ ونان تہ پانہ اتھ پیٹھ کھستھ دیوارس کیل ٹھاسان تہ فوٹو اویزان تراوان۔ بہ اوسس بٲے سنزِ اتھ کارکردگی پیٹھ خوش گژھتھ ماجہ وننہ گژھان زِ شوقن لگوو دیوارس پیٹھ فوٹو۔

یہ سورے روو یتھے بہ کالج ووتس!

ای ای کمنگس سند بوت

راتھ سمکھیوو ای ای کمنگس سند بوت۔

قصہ سپد یہ: از کل چھس بہ دفتر سلی واتنہ خاطرہ پننہِ گرِ پیٹھہ 35 میل دور باسٹن وۅستس دۅہ ٹھُکنہِ ٹرینہِ گژھان۔ اتھ چھہ یہ تہِ فایدہ زِ بہ چھس یوان گژھان ٹرینہِ منز کامل صٲبنہِ کتابہِ تہِ ترسا ترسا دوان۔ راتھ مۅکلیہ گژھان گژھان لیپ ٹایس بیٹری۔ بۅموارِ دۅہہ چھس بہ پننۍ نوکری مۅکلاوتھ دۅن پرایویٹ سٹوڈنٹن اکس پتہ اکھ ہندی پرناوان۔ دۅشوے چھہ ایڈوانسڈ، میانہِ کھۅتہ جان ہندی پران تہِ تہ بولان تہِ۔ راتھ آو گۅڈنیک پانژِ پیٹھہ دونن ستن تام۔ بیۍ ٲس چھٹی کرمژ۔ میانہِ آفسہ پیٹھہ چھیہ ٹرینہِ تام سب وے گژھان، یتھ ٹرین سٹیشنس تام 20 تہ کنہِ ساعتہ زیادہ منٹ لگان چھہِ۔ ٹرین ٲس ساڑہ ستھ بجے۔ آفسہ نیران نیران بجییہ ستھ۔ سوچم لیپ ٹاپس چھیہ بیٹری مۅکلیمژ، ٹرینہِ منز کیا کرہ۔ خیال آم باسٹن پبلک لایبریری تراوہ دو تہ تتہِ انہ کانہہ کتاب پرنہ خاطرہ۔

Public Library06

لایبریری چھیہ سب وے کس تریمس سٹاپس پیٹھ۔ میہ دوپ کنی دو تراوہ تہ پتہ رٹن بییہ سب وے ٹرین سٹیشنس تام۔ رسک اوس زِ ساڑِ ستہِ ہنز ٹرین ہیکہِ ہے مس گژھتھ۔ تمہ پتہ اوس دویمہ ٹرینہِ سٹیشنس پیٹھ اکس گٲنٹس پرارن۔ خبر کیا آو منس منز زِ بہ گوس یہ رسک تلنہ خاطرہ تیار۔ کاپلی سکوایرس پیٹھ ووتھس سب وے منزہ تہ ترٲوم لایبریری کن دو ۔ صرف ٲسۍ پانژھ منٹ اتھس منز۔ تمہ زیادہ ٹایم لگہِ ہے، ٹرین گژھہِ ہے مس۔ دوان دوان سوچم، پرنہ خاطرہ کتابہِ ہند انتخاب کرنس لگہِ وقت، لہذا ادبی سیکشنس منز یتھ تہِ کتابہِ پیٹھ گۅڈنی نظر پییہ سۅے تلن۔ یتھہ پاٹھۍ چھس نہ بہ زانہہ کتابہِ ہند انتخاب کران۔ بہ چھس سیٹھا کم پران مگر ییلہ تہِ پران چھس، میہ چھیہ آسان پتاہ زِ میہ کیا چھہ پرُن۔ گۅڈنچی کتاب یتھ پیٹھ میہ نظر پییہ ٲس جدید انگریزی شاعر ای ای کمنگس سنز۔ میہ دوپ، ادہ کیا یہے سہی۔ ای ای کمنگس چھہ میہ امہ برونہہ تہِ پورمت۔

پانژن منٹن منز سب وے واپس رٹتھ ووتس بہ ٹرین سٹیشن ییتہِ پیٹھہ میہ گرہ کن ساڑِ ستہِ ہنز ٹرین نی۔ 45 منٹن ہندس اتھ سفرس منز پورم کنہِ تھکہ ورٲے ای ای کمنگس۔

ای ای کمنگس اوس ولیم کرولوس ولیم سندۍ پاٹھۍ ایذرا پاونڈس نش متاثر، پیکر سازی کنۍ تہ عام زبان ورتاونہ کنۍ۔ ولیم سپد عوامس منز سیٹھا مقبول بلکہ امریکی شاعرن منز تہِ۔ یوت اثر نوین شاعرن پیٹھ ولیم کرولوس ولیمن عملی طور تروو تیوت ہیوک نہ ٹی ایس ایلیٹ ترٲوتھ، بلکہ کور ٹی ایس ایلیٹ امریکی شاعرو تمۍ سنزِ "علمی” شاعری کنۍ رد۔ بییہ اوس ایلیٹ علامہ اقبال سندۍ پاٹھۍ مذہبی یُس تمۍ سنزِ شاعری منز نون اوس تہ یہ چیز تہِ گوو نہ ایلیٹس پتہ ینہ والین شاعرن ہضم۔ ای ای کمنگس گوو نہ ولیم کرولوس سندۍ پاٹھۍ مقبول تکیازِ جدید شاعرن منز اوس سہ فارم کہ حوالہ نہایت تجربہ پسند، بلکہ بنییہ تمۍ سنزہ نظمہ اکھ تیتھ عجیب اظہار یس نہ نقاد شاعری ہنزِ کنہِ کٹیگری منز تھٲوتھ ہیکۍ۔ سہ اوس لفظن پھٹراون، پننہ جایہ نش ڈالان، لفظن اندر لفظ بناوان، نوۍ نوۍ لفظ بناوان، پنکچویشنک حدہ کھوتہ زیادہ تہ شعری استعمال کران۔ زبانۍ ہنز یہ شکست وریخت ٲس زبانۍ ہندۍ حد دریافت کرنٚچ کوشش۔ مگر تہِ کٔرتھ تہِ اوس سہ عوامس ایلیٹ سندِ کھوتہ زیادہ قبول۔ اکھ زبردست ہتھیار یُس امس حاصل اوس، سہ گوو طنز یُس کُنہ ساعتہ مزاح تہِ بنان اوس۔ بہ کوت ووتس، میہ چھیہ دراصل کتھ بدل وننۍ۔

45 منٹن ہند سفر مۅکلیوو ، ٹرین وٲژ میانہِ شہرہ کس سٹیشنس پیٹھ یُس امیک ٲخری سٹاپ چھہ۔ بہ چھس گرِ پیٹھہ گاڑِ منز اتھ سٹیشنس تام یوان تہ اتہِ دۅہس گاڑۍ پارک کران۔ پارکنک گراجس منز گاڑۍ سٹارٹ کٔرتھ سوچ میہ از پور ٹرینہِ منز ہیتھے، لہذا بوزو گرہ تام 10 ہن منٹن ہنزِ وتہِ ریڈیو۔ بہ چھس اکثر این پی آر پبلک ریڈیو بوزان یتھ منز باسٹن یونیورسٹی ہند ٹام ایش بروک سند آن پواینٹ پروگرام یوان چھہ۔ بہترین ریڈیو۔ یتھے میہ ریڈیو کھول، گوڈنکۍ لفظ یم میہ بوزۍ، تم ٲسۍ۔۔۔۔۔؟

تیار چھوا بوزنہ خاطرہ؟

تم ٲسۍ: ای ای کمنگس۔

ٹام ایش بروک اوس کمنگسس پیٹھ اکس مصنف سنز کتابہِ متعلق تس سیتۍ کتھ باتھ کران۔ یتھے میہ یم لفظ ٹا م ایش برواک سنزِ آوازِ منز بوزۍ تہ تمہ پتہ یہ جملہ "لسنرس وی آر ٹاکنگ اباوٹ ای ای کمنگس دس اوور ود۔۔۔” میہ ہیژ پانس ژپنۍ یہ وچھنہ خاطرہ زِ یہ ما چھہ خواب۔

completepoems

میہ پیوو یاد علی گڑھک اکھ واقعہ۔ اتہِ اوس وۅرملیک اکھ تھود تہ جسم دار لڑکہ پران یُس بوزنہ کنۍ چرس بیترِ اوس چیوان۔ کنہِ ساعتہ سمکھہِ ہے تہ اکھ زہ قدم پکتھ گژھہِ ہے وتہِ پیٹھ کھڑا۔ پرژھہوس کیا سا دلیل؟ تورہ ونہِ ہے، "بہ ہا گوس بند.”

"بند؟ کیا بند؟ وارہ کارے پکان چھکھ۔”

"نا بہ ہا گوس بند۔ بہ ہیکہ نہ وۅنۍ پکتھ۔”

” کینہہ نا گوکھ بند۔ پکو تلو قدم۔” مشکلا ٲسن سہ کُنہِ چایہ دکانس تام واتنان۔

یتھۍ سے اکس موقعس پیٹھ وون امۍ میہ اکھ قصہ۔ قصہ اوس یہ: دوپن "میہ اوس اکھ پیر۔ اسۍ ٲسۍ اکہ رٲژ اکس مرگزارس پیٹھ بہت ریڈیو بی بی سی بوزان۔ اتھۍ منز ہیوت امۍ پیرن اللہ ہو اللہ ہو کرُن۔ امۍ سند اللہ ہو گوو تیزان تہ کینہہ کال گوو زِ ریڈیو بی بی سی تہِ ہیوتن اللہ ہو اللہ ہو گژھن”۔

میہ پرژھس، "تہِ کِتھا پاٹھۍ بنہِ۔ دوپن یتھہ پاٹھۍ زِ امۍ پیرن ٲس بی بی سی یچ ویوو رٔٹتھ پانس کن انۍ مژ۔ ”

میہ دوپمس، "ژیہ آسی کانہہ مغالتہ گومت”۔ دوپن، "نسا تتھ ہے صبحسے تصدیق گوو۔”

میہ پرژھمس، "کتھہ پاٹھۍ؟” دوپن، "صبحس کور بی بی سی ین اعلانہ زِ راتھ ہسا گوو نامعلوم وجہو کنۍ رٲژ ہنزِ ساڑِ کہہ بجہ سانۍ پروگرام بند گژھتھ پانژن منٹن سانہِ سٹیشنہ پیٹھہ اللہ ہو اللہ ہو۔”

میہ ترووس اسناہ۔ دوپن، "ونہِ کتہِ ونۍ مے پورہ کتھ۔” میہ پرژھس، "پورہ کتھ کیا چھیہ؟” دوپن، "راتھ کور میہ تہِ رٲژ ہنزِ ساڑِ کہہ بجہ بی بی سی بوزان بوزان اللہ ہو تہ ریڈیوچ ویوو رٹم۔ رژھہِ کھنجہ پتہ اوس بی بی سی تہِ اللہ ہو کران۔”

کاش از سہ یار میہ برونہہ کنہِ آسن۔ بہ ونہ ہس، "میہ تہِ ہا کور یہ کمال، پانے، رٲژ ہنز ساڑِ کہہ برونہے، سلی، تہ بییہ چرس چینے!”

سند اننچ روایت

یہ ٲس اکھ روایت تمہ زمانچ ییلہ عام انسان پننہِ تقدیرک پانہ مٲلک اوس نہ۔ کیا دینی، کیا علمی، کیا مالی، تمام معاملن منز اوس سماجہ کین کینژن فردن پتہ پتہ پکان۔ یہ اوس محتاج انسان۔ دینی معاملن منز اوس عام انسانہ سند گۅناہ ثواب مذہبی رہنماہن (یمن اسۍ از ملہ ونان چھہِ) مٹہِ تکیازِ عام انسانس نہ ٲس تعلیم تہ نہ سۅد بۅد ۔ ماخذن تام تہ ٲسکھ نہ دسترس۔ کانہہ تہ معاملہ آسہِ ہے کیا چھ ٹھیک کیا غلط تہِ پتاہ کرنہِ ٲسۍ کنی ٹکھ مذہبی رہنماہن نش نوان۔ تمے ٲسکھ وتہ ہاوک بنان۔ یۅہے حال اوس علمک۔ علم تہِ ما اوس عام۔ خواندگی ٲس نہ عام تہ علم کپارۍ آسہِ ہے عام، بییہ ٲس نہ تم ذریعہ تہ یم ازکۍ کس انسانس دستیاب چھہِ۔ صرف ٲسۍ کینہہ شخص آسان یمن عٲلم ناو پیوٚو۔ یمنے نش اوس عام انسان ژاٹہ کوٚٹ کٔرتھ بیہان۔ سیاسی معاملن منز اوس بادشاہ صٲب  یا تسند نایب عام انسانس پیٹھ راجا تاجا کرنہِ بیہان۔ پانے۔ پننی مرضی۔ بادشا اوس خدایہ سند نایب ماننہ یوان۔ مالی حالت ٲس یہ ز کینزنے شخژن نس اوس مال، ملیکت تہ دولت۔ یمے ٲسۍ عام انسانن بیگارِ لاگان۔ یہ اوس اکھ دنیا یس یتھے پاٹھۍ چلان اوس۔ انسانی تمدنک اکھ  مرحلہ۔ اتھ دنیاہس منز ٲس لازما شخص پرستی۔ واریاہن کلچرن منز چھیہ نہ یہ شخص پرستی ونہِ تھپھ تلان۔

ازکۍ کس زمانس منز چھہ پریتھ فرد پننہِ تقدیرک پانہ مٲلک۔ تکیازِ ازچھیہ تعلیم عام، خواندگی تہ ماخذن تام چھیہ عام انسانہ سنز دسترس۔ پرانین ہنز سند اننچ روایت ٲس پرانۍ سے دنیا ہس منز شوبان تہ معنی تھاوان۔ ییلہ تعلیم عام گژھان چھیہ سندِ ہنز جاے چھیہ دلیل رٹان۔ سند اننۍ ٲس پرانہِ دنیاہچ مجبوری، ازچ حقیقت چھیہ دلیل، یتھ استدلال تہِ ونان چھہِ۔ مچھہِ پیٹھ مچھ مارنۍ اوس پرانہِ دنیاہک وطیرہ۔ اتھۍ دنیا ہس منز ٲسۍ لوکھ زبانۍ ہندین معاملن منز، لفظہ کس استعمالس تہ باقی معاملن منز پرانین شاعرن ہنز سند پیش کران تکیازِ تہندۍ شعر ٲسکھ جٹ پٹ یاد آسان۔ کتابہ ما آسہ لوکن نشہِ، ڈکشنری ما آسہ۔ ساروے کھوتہ بٔڈ ریفرنس ٲس لوکن ہندس یاداشتس منز پرانین ہندۍ شعر۔ ہتن نفرن ہنز دلیل ٲس اکس شاعر سنزِ سندِبرونہہ کنہِ لٲر ہش پتھر پیوان۔

اگر پرانۍ تہِ سندے یاژہ ژھانڈان آسہن نویر کپارۍ ییہِ ہے، نوۍ استعمال کپارۍ گژھہن عام۔ تمن ٲس گاہے گاہے پننہ مجبوری منزہ نیرتھ بغاوت کرنۍ پیوان۔

امین کامل سنز اکھ فارسی نظم ۔ اولین شعرہ نمونہ

muna with shaukat

 یتھ تصویرس منز چھہ میہ سیتۍ میانۍ زہ  پۅپھترۍ بٲے۔ منزس چھہ شوکت احمد یس کامل صٲبنہ اکس ہمشیرہ سند نیچو چھہ۔ یم چھہ کاپرنس نزدیک گوپال پور روزان۔ دچھنہ طرفہ چھہ ڈاکٹر امتیاز منصور یس کامل صٲبنہِ بییس ہمشیرہ سند نیچو چھہ۔ یم چھہ چھانہ پورِ روزان۔ شوکت احمدنۍ موج تہ مول چھہ کینہہ ؤری برونہہ گذریمتۍ۔ امتیاز منصورن مول تہِ گذریوو کینہہ ؤری برونہہ۔ کامل صٲبس چھہ یمو دۅیو بینیو علاوہ (یمو منزہ اکھ حیات چھیہ) زہ بٲے۔ یمو منزہ اکھ بڈشاہ نگرے روزان چھہ۔ بیاکھ برادر چھکھ کاپرنے روزان۔ ‌ژۅن ریتن اندر گذریہ یمن تریشونی بارنین ہنزہ زنانہ۔ کامل صٲب چھہ یمن سارنے زیٹھ۔ ماجہ ہندس مرنس پیٹھ پیوو میہ یمن تمام جاین تعزیتس گژھن۔ گوپال پور تہِ ووتس، زندگی منز گۅڈنچہ لٹہِ۔ شاید اتھۍ کن وچھتھ دیت میہ شوکت صٲبن نیرن وزِ اکھ سیٹھا مۅلل چیز یتھ تسند بڈۍ بب احمد اللہ حکیم (عرف بوڈ حکیم) تہ تسند بب حکیم ٭٭ رٲچھ ٲسۍ کرمژ۔ ٲخرس ووت یہ شوکت احمدس نش۔ یہ مۅلل چیز چھہ بۅنہ کنہِ پیش۔ یہ چھہ کامل صٲبنۍ اکھ فارسی نظم یوس تمو امۍ سے بڈس حکیمس (عمہ حکیم) سوزمژ ٲس۔ میانہِ خیالہ چھہ یہ کامل صٲبنہِ شاعری ہند اولین دستیاب نمونہ — مگر فارسی پاٹھۍ۔

kamil farsi poem

اے مسیح این زمان و اے حکیم ارجمند
از دم تو ہر کسی بسیار گشت از بہرمند
بر در تو بہر درماں آمدیم از کاپرن
این چہ بوالعجبی است کردی دل ما را دردمند
یک گناہ بے پناہ بر خود روا کردندہاں
آنکہ تشہیر دم عیسی بہ عالم کردہ اند
آتشی در زیر پا دارند عاشق بہر دوست
این ندانند مگر آنہا کہ خود ہم سوختند
تو چہ دانی لذت زہر کہ نوشد این غریق
می خوری در بستی گوپال پورہ شہدو قند

غریق کاشیمری

شوکت احمدن ونن چھہ ز‏ خط اوس کامل صٲبن کالجس دوران لیوکھمت۔ کامل صٲب چھہ اکس جایہ لیکھان زِ تسند مول اوس علاج خاطرہ تس امس حکیمس نش کالج گژھنہ برونہہ نوان۔ اگر تتھ کن گژھو تیلہ چھہ یہ کامل صٲبنہِ کالج اژنہ برونہم چیز۔ کامل صٲبن بابہ صٲب گذرییہ 1939 منز ییلہ تم کالج کس گۅڈنکس ؤریس منز ٲسۍ۔ ممکن چھہ یہ ما آسہِ تمی ؤریک۔ بہرحال تحقیق چھہ جاری۔ حکیم ٭٭ سندس گرس منز کور یمو پتہ رشتہ۔ کامل صٲبن گرہ کوتاہ چھہ امس حکیمس نش متاثر اوسمت، سہ چھہ یتھ نظمہِ منز ظاہر۔ امۍ حکیمن چھیہ کینہہ مسودہ طبس متعلق فارسی پاٹھۍ پتھ کن تراوۍ متۍ۔

میہ ہوو یہ نظم کامل صٲبس۔ واریاہس کالس رود سہ اتھ وچھان، تمہ پتہ زن نہ پہچوننے تہ دیتن واپس۔ پرژھمس یہ کر سا چھتھ ژیہ لیوکھمت۔ دوپن تہِ کس چھہ وۅنۍ یاد۔ دوپمس شوکت اوس ونان یہ چھہ یمو کالجس دروان لیوکھمت۔ تورہ دوپن خبر آسیم۔ 1939 منز اوس کامل صٲب 15 وہُر۔ کامل صٲب اوس یمن دوہن غریق تخلص کران۔

ما بہ دولت نابکار در صحبت سخن وراں

Image

بہ چھس شہناز رشید، نذیر آزاد تہ نگہت صاحبہ سند شکر گزار زِ تم آیہ  میانہ ماجہ ہندس مرنس پیٹھ سیٹھا محبتہ سان میہ نش ییلہ بہ کشیرِ مختصر پاٹھۍ توٚرمت اوسس۔ یہ چھیہ کاشرِ زبانۍ ہنز خوش قسمتی زِ اتھ  منز چھہ ونکیس شہنازس ہیو باکمال شاعر  موجود۔ بہ چھس امۍ سنزِ دویمہِ شعرہ سومبرنِ پراران۔  نذیر آزاد چھہ شاعر تہِ جان تہ ادبہ کس افہام وتفہیمس منز اکھ مثبت رول ادا کران۔ اتھ سلسلس منز چھہ تسنز رسول میرس پیٹھ کتاب سیٹھا اہم۔ رسول میر سنزِ شاعری ہنز قدر شناسی چھیہ نہ امہ رنگہ کانسہِ ہندِ دسۍ سپزمژ۔ نگہت چھیہ تازہ وارد تہ امس سیتۍ چھیہ واریاہ وۅمید وابستہ۔ میہ نابکارس سیتۍ  یہند یہ تصویر چھہ میانہِ خاطرہ تبرک۔ 

موج پننی

 Image

موج، یمو پوشو سیتۍ چھہ چانہ محبتہ میون سورے گرہ خوشبو زار بنیومت۔ اوت تام ٲس ٹیلیفونس پیٹھ چانۍ آواز یتھ بہ رٲچھ کٔرتھ اوسس تہ وونۍ  چھیہ چانۍ یاد۔

 موج، یتھہ پاٹھۍ ژیہ میون روح وزِ وزِ پننہ محبتہ آباد کورتھ،  چون روح تہِ ٲسن بارگاہ الہی منز شاد تہ آباد۔

موج چانین نیک عملن ٲسن خدایہ سنز رضا تہ قبولیت حاصل!

موج چون روح رٔٹن بارگاہ الہی منز تھٔز جاے تہ عزتہ وول مقام!

موج، چانہ خاطرہ ٲسن قربت الہی ہند برگزیدہ انعام!