کاشر رسالہ واد (قسط 7) : م ح ظفر

zaffar

وادس منز چھپییہ م ح ظفر سندۍ کل شیہ غزل۔ زہ شمارہ 4، تریہ شمارہ 6 تہ اکھ شمارہ 12 کس گۅڈنکس حصس منز۔ ظفر سند غزل ہیوک نہ کانہہ مقبولیت حاصل کٔرتھ۔ اتھ متعلق چھہ اکس خطس منز شفیع شوق لیکھان "فکرِ ہند غلبہ تہ ہیژ ہند نویر (چھہِ) میہ ہوین پرن والین مکمل حض حاصل کرنس منز رکاوٹ بنان۔”

ظفر سنزِ شاعری منز چھیہ سوچک گۅبیر پیدہ کرنہ چہ کوششہ منز لفاظی پیدہ گژھان، یمہ کنۍ امۍ سندِ ادراکچ (دربافتچ) شدت اکثر راوان چھیہ۔ دویمین لفظن منز ونو زِ امۍ سندِ غزلچ کمزوری چھیہ یہ زِ یہ چھہ زیادہ کتھہ کران۔ وجارہ گی تہ وجودی دۅکھ چھہِ ظفر سنزِ شاعری ہنز غالب دلچسپی یمن ہندِ عرفان کس نتیجس منز یہ شاعری غم ناک بنان چھیہ۔

ظفرس نش اوس اکس آیڈیل شاعر سند سامانہ ۔۔ فکر تہ فن تشکیل پذیر سپدان۔ کُنہِ ساعتہ چھہ کانہہ جداگانہ شاعر ہمعصرن ہنز مقبولیت وچھتھ تہ تتھ غلط پاٹھۍ شاعری ہنز اظہاری کامیابی تصور کٔرتھ پسپا تہ عدم دلچسپی ہند شکار گژھان۔ شاید سپز ظفر سنز شاعری امی وہمچ شکار تہ امۍ لوب نہ سفرس پیٹھ جاری روزنک تہ پننۍ وتھ شیرنک موقعہ۔ کینہہ شعر:

وشنہِ سوچکۍ ترنۍ رنگ مہ وچھ
کانہہ تہِ منطق غلط ون مہ گژھ

پرژھ ژیہ کیا چھے پرژھن ژیتھ مہ رچھ
میانہِ ژھۅپہِ ہند صدا بن مہ گژھ

کال برمرتھ چھہ آمت ظفر
ازلہ ابدک نقش کھن مہ گژھ

ظفر ژہ تھاو سامہ وِتھ یہ سریہ لوسنک سمے
میہ ٲسۍ کلۍ تہ کٹۍ پرژھاں گٹین شبن سنبالہِ کُس

دوپکھ وجارہ چھی لیکھتھ ڈیکس ژہ پکھ پکان گژھ
میہ پرژھ نہ زانہہ تہِ نیجرن اما چمن سنبالہِ کُس

بہ چھس وجارہ وتن ہند تھکن اچھن منز ہیتھ
بیہ سۅکھ وبالۍ ژہین دول رٔٹتھ کراں ارزتھ

اگر ظفرن "مہ گژھ” ہوۍ داہ وہ غزل تہِ ونۍ متۍ آسہ ہن تس آسہِ ہے نٔوس کاشرس غزلس منز پنن اکھ مقام۔ میہ چھہ نہ معلوم ظفرن کرییا پننۍ شاعری سۅمبرنہِ ہندس صورتس منز شایع کنہ نہ۔۔