رندِ بال درایس

رندِ بال درایس، اندِ کیا نیایس
ہندِ روس چھون چھم پھوت یے لولو*
انور وار

اتھ شعرس پیٹھ کمینٹ کران چھہ مظفر عازم ونان ز اتھ منز چھہ "اشارہ زِ کل زندگی کٔرتھ (رندِ نیرتھ) یہ حاصل تہِ چھہ نہ پانہ سے ٹارِ کھسان۔”

یہ چھہ امیک استعاراتی یا زیرین معنی یُس شعرس اندر لفظی طور موجود چھہ نہ بلکہ چھہ امہ موکھہ اتھ عطا کرنہ یوان یا یمن لفظن ہندِ ذریعہ ورگہ پاٹھۍ زاننہ یوان تکیاز اسہ چھہ یتھ کتھہِ پیٹھ سماجی طور اتفاق ز شاعر تہ خاص کر تمہ دورکۍ شاعر یمن اسۍ بعضے بلکہ اکثر صوقی شاعر تہ ونان چھہِ، چھہِ نہ وسی پایہ، پامال تہ معمولی کتھن ہند اظہار کران، شعرچ ظاہری صورت ٲسۍ تن زمینی، روح چھس آسمانی۔ انور وار سنز سٲرے شاعری چھیہ امہ دورکین تہ امہ قسمہ کین باقی تمام شاعرن ہندۍ پاٹھۍ زیریں سطحہِ ہنزے شاعری۔ یہ چھیہ امہ رنگہ روحانی شاعری، تکیازِ اتھ منز چھیہ ظاہری صورت بہانہ، مضمر معنی یعنی امیک روح اہم۔ بقول مظفر عازم ” یہ وونمت چھہ تمہ سیتۍ چھہ تتھ کن حیس گژھان یہ وننے تھوومت چھہ۔” یہ وننے تھٲوتھ چھہ، سہ چھہ انور وار سنزِ شاعری ہندس سیاقس منز تیوت نون زِ ونۍ متس کن چھہ نہ ظۅنے گژھان۔

میہ یمہ ساعتہ یہ شعر پور یا ییلہ بہ یتھۍ شعر پران چھس، خبر میہ کیازِ امہ کس معمولی معنیس لطف یوان، تہ یہ باسان اگر نہ امیک روزانہ تہ معمولی معنی قایم سپدِ، زیرین معنی کتھہ پاٹھۍ ییہ وجودس؟

شعر چھہ ظاہری طور ونان زِ ہند اننہ کہ بہانہ درایس گرِ، مگر یہ اوس بہانہ۔ واپسی پیٹھ پھوت خالی آسنہ کنۍ رندِ نیرُن تکیازِ پریتھ طرفہ چھیہ اچھی اچھ۔ نیاے چھہ شاعری منز زیادہ تر لولہ نیایی۔ سانس سماجس منز چھہ لول اکھ نیاے، اتھ کیا بنہ؟ اتھ شعرس منز چھیہ بیرونی سطحس پیٹھ سانۍ سماجی کہانی درج، یۅس میانہ خاطرہ تیژے اہم چھیہ ییژاہ اتھ کہانی منز مضمر بیاکھ کنایاتی کہانی چھیہ۔

اسۍ ہیکون نہ ظاہری پاس یکسر نظر انداز کٔرتھ۔

مگر یہ تہ چھیہ حقیقت زِ اگر نہ شاعری اسہِ معمولی پیٹھ کنہِ غیر معمولی سطحس سیتۍ زان کرناوِ، یہ ہیکہِ نہ بڈ شاعری بٔنتھ۔ یہ غیر معمولی سطح ہیکہ لفظی سطح علاوہ بیاکھ سطح ٲستھ، یہ چھہ نہ ضروری ز یہ کیا آسہِ لازما روحانی، فلسفیانہ یا مابعد الطبیعاتی۔

یہ تہِ چھہ اکھ سماجی مفروضہ زِ یۅس شاعری ظاہری سطح علاوہ اکھ زیریں سطح پیدہ کرِ، سۅ چھیہ بٔڈ شاعری۔

* میہ چھہ باسان عازم صابس چھیہ امہ بٲتہ کس دریفس منز غلطی گمژ، یہ ہیکہ مسودہ یا روای ین ہنز غلطی تہِ ٲستھ۔ وزنہ لحاظہ گژھہِ اکوے "لو” آسن، یتھہ پاٹھۍ تمو امہ کس گۅڈنکس شعرس منز دیمت چھہ۔ تمہ پتہ چھکھ پریتھ شعرس "لولو” پتہ کنہ تھوومت یس میانہ خیالہ صحیح چھہ نہ۔

دویمس شعرس منز گژھہِ "ساتہ نیک” بدلہ "ساعت نیک” آسن۔
پانژمس شعرس منز گژھہِ "پھۅلہ ون باغہ دل” بدلہ "پھۅلہ ون باغ دل” آسن۔
یم چھیہ کتابت چہ غلطی۔

آلیک پوشنول

Masmalar
اشاعت 1955

ییتہ سانیو اکثر شاعرو پننۍ ابتدایی شاعری مشرٲوتھ کھٹتھ چھیہ تھٲومژ، امین کاملن چھہ پننہِ اولین شعرہ سۅمبرنہِ "مس ملر” منزہ واریاہ کلام پننس کلیاتس (زیر ترتیب) منز شامل کورمت۔ یہندِ ابتدایی کلام منزہ چھیہ یہ اکھ نظم تہِ:

آلیک پوشنول
امین کامل

ہا نندرِ متیو نیر یہ منزُل تہ گگس تراو
مژراو اچھ کڈ واش پکھن ہاو کینہہ چکہ چاو
وۅتھ تازہ سفر پراو
نٔو زندگیا چھاو

رنگہ رنگہ ولاں جامہ گلن رنگہ روس افتاب
وچھ ٲنہ جۅین منز چھہ نژاں آب زن سیماب
ژہ تہِ لاگ کینہہ بیتاب
زیو چانۍ چھیہ مضراب

گیہ بٲے تہ بند چانۍ ہیتھ کرتام پنن ساز
انجام تہند پوشہ چمن لولہ ہژ آواز
چھیہ نہ زندگی کانہہ راز
آغاز چھہ پرواز

پتھ زندگی زانہہ ہیوت نہ وچھتھ شراکھ تہ اہریز
چھہ نہ رودمت ازتام عشق کانسہِ ہند آویز
پھٹراو یہ پرہیز
کر نار دلک تیز

ونۍ چھی ژیہ دوان پوشہ چمن تھارِ٭ وچھان پوش
تنہا ژہ بہت دورِ نہ غیرت تہ نہ کانہہ جوش
چھکھ یوت کیا مدہوش
سونتس ژہ ہنا توش

وۅتھ تراو یہ غم غصہ منزُل واے سۅکھک ساز
مضراب دِ سازس تہ کنی لولہ ہژ آواز
رٹھ یاونک انداز
پرواز کر پرواز

یہ بٲتھ چھہ دعوت زندگی۔ وۅمید یودوے تمہ زمانہ ترقی پسندی ہنز علامت ٲس، یہ بٲتھ ہیکون از تہِ امہ کہ مرکزی جذبہ کنۍ پٔرتھ۔ مایوسی، غم، غصہ، تنہا پسندی چھہ نہ انسانہ سند ِ روحک جوہر۔ کامل چھہ "مس ملر” کس دیباچس منز ونان زِ اتھ منز شامل کینژن چیزن منز چھہِ کینہہ عروضی تجربہ کرنہ آمتۍ۔ اگر یہ پزۍ پاٹھۍ عروضی تجربے چھہ، یتھ نظمہِ منز چھہ کینژن جاین فارسی تقطیعی وزنہ مطابق کھوند لگان، پرنہ کنۍ نہ کینہہ۔ کامل سنزِ ابتدایی شاعری ہنز خاصیت چھیہ امیک روایتی عشقیہ شاعری نہ آسن، یۅس نہ اسۍ خاص کر راہی، فراق یا عازم سنزِ شاعری منز وچھان چھہِ۔ اتھ منز چھہ ترقی پسندی ہند واریاہ دخل۔ اتھ منز یمہ عشقچ دعوت چھیہ سہ چھہ زندگی ہند عشق تہ امیک لول۔ "مس ملر” شعرہ سۅمبرنہِ منز چھہ نہ خلاف معمول اکھ تہِ عشقیہ غزل یا نظم موجود ییلہ زن اتھۍ زمانس منز باقی ترقی پسند روایتی عشقیہ غزلو سیتۍ تہِ پننۍ تخلیقی ٹیٹھ موران ٲسۍ۔ کاملس کشمیر یونیورسٹی ہندِ کاشرِ شعبہ کس پروپیگنڈاہس تحت اکھ خالص رومانی شاعر گنزرن والین ہندِ خاطرہ اکھ لمحہ فکریہ۔

ممکن چھہ کانہہ ما ونہِ نہ اتھ شاعری یا میانۍ پاٹھۍ ونیس صرف بٲتھ۔ مگر اکس نظمہِ تہ بییس نظمہِ یا اکس بٲتس تہ اکس نظمہِ منز چھہ نہ قسمک یا چیزک فرق، بلکہ ہیکہِ یہنز حیثیت، یہند درجہ الگ الگ ٲستھ۔ شاعری ہندۍ ظاہری جز وزن، قافیہ، ردیف، فارم، پیکر، استعارہ تہ مخصوص شعری زبانۍ ہند ورتاو چھہ یتھ بٲتس منز تہِ تہ کنہِ اعلی نظمہِ منز تہِ۔ لہذا ہیکو نہ اسۍ یتھین چیزن غیر شعر یا غیر شاعری ؤنتھ۔ یہ چھہ ممکن یم بٲتھ ہیکن ادبہ کس اعلی تہ درسی تددیسی سوتھرس پیٹھ شاعری ہندۍ صرف بنیادی درجکۍ چیز تہ تمہ کنۍ معمولی حیثیکتۍ ٲستھ۔

٭ خبر یہ لفظ پورا میہ صحیح پاٹھۍ