کاشر املا: چلینج تہ امکانات


رسم خطس تہ املاہس درمیان چھہ نہ اکثر  لوکھ بلکہ سانۍ زبان دان تہِ فرق کران۔ رسم خط چھہ زبان لیکھنہ کس نظامس ونان۔ مثلا سون رسم خط چھہ تقریبا سے نظام ورتاوان یُس عربی، فارسی تہ اردو زبانہ ورتاوان چھیہ۔ املا  گوو کُنہِ رسم خطس منز  لفظ لیکھنک دستور، یعنی  اچھرن ہندِ ذریعہ زبانۍ ہندین لفظن ہنز بناوٹ۔  میون یہ مختصر مضمون چھہ نہ رسم خطس[1] بلکہ املاہس متعلق، کاشرس  املاہس متعلق۔

 کاشرس املاہس منز  زمانی سوتھرس پیٹھ ییژہ لگاتار تبدیلیہ تہ انفرادی سطحس پیٹھ بدنظمی ہندس حدس تام یوت تنوع میلان چھہ، سہ چھہ  نہ لیکھہ پرِ لحاظہ معیاری زبانن منز ممکن۔ وجہ چھہ یہ زِ  املاہس چھہ  تعلیمی نظامک مسلسل ورتاو استقامت تہ پایداری بخشان، یُس سانہِ زبانۍ نصیبس اوس نہ۔ ینہ پیٹھہ یہ غلط خیال عام گوٚو زِ لفظ گژھہِ تلفظ مطابق لیکھنہ یُن، دۅن ادیبن ہند املا چھہ نہ پانوانۍ رلان، بحیثیت اکھ ادارہ، اکیڈمی ہنزن اشاعتن منز تہِ چھہ املاہک حدہ کھۅتہ زیادہ انتشار۔ یہ تہِ چھیہ حقیقت زِ سون املا رود تنہ پیٹھہ  واریاہ کینہہ کاتبن ہندس رحم و کرمس پیٹھ۔ مگر  وونۍ چھہ وق زِ اسۍ کرو املاہس پیٹھ نٔوس ماحولس اندر  نوِ سرہ غور۔ امہ نوِ ماحولک ذکر کرہ بہ یتھہ پاٹھۍ۔

Orthography

اکھ وقت اوس خلق ٲسۍ مسودہ لیکھان تہ تمے رژھران تہ بٲگران۔ پرنٹنگ پریسس آو۔ تہ اتھۍ سیتی آو لیتھو پریس تہ کاشرس منز تہِ گیہ زرد مسطرن پیٹھ  کتابت شروع۔ یہ دور رود 1980 تام جاری ییلہ آفسیٹ پریس عام گوو تہ کٲتبو ہیوت کریہنہ میلہِ سیتۍ لیکھن۔ یہ دور تہِ رود داہ پنداہ ؤری، ییلہ زبان لیکھنہ کس سلسلس منز کمپیوٹرک ورتاو عام ہیوتن گژھن۔ ان پیج آو کاشر فانٹ ہیتھ بارسس تہ کٲتبو ہیوت  امیک استعمال کرُن۔ اتھۍ اثناہس منز گوو کمپیوٹر علاوہ انٹرنیٹ عام۔ کتابہ کمپوز کرنس اوس ان پیج بکار یوان مگر انٹرنیٹکۍ  تقاضہ ہیکہ ہن نہ ان پیج سیتۍ پورہ گژھتھ۔[2] ان پیج چھہ بند تلاو۔ انٹرنیٹن کھولۍ کاشرِ زبانۍ ہنزِ خواندگی ہندۍ نوۍ امکانات۔ نہ صرف یہ زِ زیادہ کھوتہ زیادہ لوکن میلہ پننہ فرصتہ تہ استعدادہ موجب  کاشر  پرنک موقع، بلکہ گژھہِ کاشر ادب تہِ عام پاٹھۍ دستیاب۔ امہ علاوہ ہیکن کاشرس منز تہِ ترقی یافتہ زبانن ہندۍ پاٹھۍ مایکروسافٹ ورڈ تہ باقی طرزکۍ  ڈاکیومینٹ بٔنتھ۔ یم اسۍ مختلف پلیٹ فارمن پیٹھ ورتٲوتھ ہیکو۔ یمن امکاناتن کُن گوو مظفر عازم صٲبس ظۅن۔ تمو کرۍ ونیک تام تریہ فانٹ تیار تہ تمن سیتۍ  اکھ مخصوص کیبورڈ تہِ۔ اسۍ ہیکوکھ  یم فانٹ اردو کیبورڈ سیتۍ تہِ ورتٲوتھ۔ یہ مضمون چھس بہ مایکروسافٹ ورڈس منز مظفر عازم صٲبن گلمرگ فانٹ ورتٲوتھ  اردو کیبورڈ کی مدتہ براہ راست ٹایپ کران۔ اتھ نٔوس ماحولس منز کیا چھہِ کاشرِ املاہکۍ  مشکلات تہ امکانات؟

 

املا کہ تعلقہ امکانات

امکاناتن منز چھیہ اکھ بٔڈ کتھ یہ زِ  کاشر پرنکۍ تہ لیکھنکۍ زیادہ کھۅتہ زیادہ موقع سپدن زیادہ کھۅتہ زیادہ لوکن انٹرنیٹ کہ بدولتہ حاصل۔کاشر یوت زیادہ لیکھنہ پرنہ ییہ تیوت ہُرِ املاکہ ہشرک امکان۔ تیوت گژھہ املاچہ معیاربندی کُن زبان ورتاون والٮن ہند توجہ۔ کاشر لیکھُن روزِ نہ صرف کٲتبن تام محدود، یمن مضمون نویسن ہندِ املاچہ خامی درست کرنک ٹھیکہ اوس، بلکہ پریتھ شخص لیکھہ کاشر پننہ اتھہ مایکروسافٹ ورڈس منز، انٹرنیٹس پیٹھ یا باقی ایپلکیشنن منز۔ امکاناتن منز چھیہ یہ کتھ تہِ شامل زِ مختلف پلیٹ فارمن پیٹھ  گژھہِ اسہِ کاشر پرنک عادت۔ یوت یوت اسۍ کاشر پرو تیوت ہُرِ پرنچ روٲنی۔ تہ یتھ خیالس لگہِ پانے پھیش زِ زبان چھیہ ہیجہ کٔرتھ پرنہ یوان۔ میہ ووت وۅنۍ واریاہ کال ونان زِ فونِکس (ہیجہ کٔرتھ لفظ پرنۍ) چھیہ لفظ پرنچ ابتدایی مشق۔ شرۍ چھہِ دویمہِ جمٲژ تامے تمہِ مشقہِ نیبر نیرتھ بصری طور لفظ پران۔ لفظن ہنز ہ صوری شکلہ چھیہ سٲنس ذہنس منز منتقل سپدان یمن ہنز اسۍ تحریر پرنہ وزِ پہچان کران چھہِ[3]۔ امی وجہہ کنۍ ییلہ اسہِ برونہہ کن تیتھ کانہہ لفظ یوان چھہ یُس نہ اسہ امہ برونہہ وچھمت آسہِ، اسۍ چھہِ ہیجہ کرنچ کوشش کران۔ مگر ہیجہ چھیہ نہ ہمیشہ مدد کران، تکیازہ کانہہ تہِ تحریر چھہ نہ فونیٹک۔ تہِ چھہ نہ ممکنے۔ مثلا اسہِ سارنے چھہ انگریزی تگان پرُن، مگر اسہِ برونہہ کن ییلہ rendezvous ہیو لفظ ییہ اگر نہ یہ امہ برونہہ وچھمت آسہِ، اسۍ کیا پرو اتھ؟  لہذا چھیہ امکاناتن منز یہ کتھ  تہِ شامل زِ اسۍ ہیکو کاشرِ زبانۍ ہندس تحریر تہ خواندگی ہندس نٔوس ماحولس منز یہ زبان بصری طور پرنچ استعداد  ہُررٲوتھ۔

 

املا کہ تعلقہ چلینج

موجودہ املاہچ اکھ بارہ کمزوری چھیہ یہ زِ اتھ منز چھیہ نہ لفظس کانہہ معیاری شکل۔ اکے لفظ چھہ نہ صرف دۅیو بلکہ دۅیہ کھۅتہ زیادہ طریقو لیکھنہ یوان۔ پریتھ شخص، تہ پریتھ علاقہ چھہ پننہِ پھورہ مطابق لفظ لیکھان تہ تمچ شکل مقرر کران۔ حالانکہ تحریرک مقصد چھہ نہ یتے یوت زِ اکھ باشہِ زبان ییہِ اچھرن ہندِ ذریعہ ظاہر کرنہ، ہو بہو نمایندگی چھیہ نہ ممکنے، بلکہ چھہ تحریرک  مقصد یہ تہِ زِ زبانۍ اندر تہ زبانۍ ہندین لفظن اندر ییہ اکھ معیار مقرر کرنہ ، یمہِ کنۍ لیکھُن پرُن آسان تہ یکسان اوت نہ بلکہ ممکن تہِ سپدِ۔مگر کاشراملا تجویز کرن والیو بزرگو چھہ نہ امہِ کتھہ ہند خیال تھوومت۔ نہ چھہ تنہ پیٹھہ از تام کٲنسہِ زبان دانن، ادیبن یا ادارن امہِ خاطرہ کانہہ قدم تلمت۔ بلکہ سپز لفظ پننہِ پننہِ طریقہ لیکھنچ نہج عام، یمہِ کنۍ تحریرس منز ونکین معیارہ رنگۍ سیٹھا کھُر نظرِ گژھان چھہ۔

املاہس منز چھہِ نہ مصمتن ہند زیادہ مسلہ۔ یمن ہند مسلہ چھہ زیادہ کھۅتہ زیادہ عربی ، فارسی تہ اردو پیٹھہ آمتٮن لفظن سیتۍ تعلق تھاوان۔ حالانکہ یہ گوٚژھ نہ کانہہ مسلے آسن تکیازِ رسم خط مشترک آسنہ کنۍ ہیکہ املا تہِ مشترک ٲستھ۔ ث، ح، خ، ص، ض، ط، ظ، ع، غ، ف، ق  مصمتہ لفظن منز رژھرٲوتھ تمن ہنز صرفی شکل قٲیم تھاونہ سیتۍ چھہ نہ کانہہ مسلہ درپیش۔ تعلیم، تعبیر، تعویذہ، تعمیر ہوۍ لفظ تٲلیم، تٲبیر، تٲویذہ، تٲمیر لیکھنچ چھیہ نہ کانہہ مجبوری۔خر ہیکون نہ اسۍ کھر، حل ہیکون نہ اسۍ ہل، فٲتر ہیکون نہ اسۍ پھٲتر، کاغذ ہیکون نہ اسۍ کاکذ لیکھتھ۔یمن لفظن ہنزہ  صرفی شکلہ ڈٲلتھ چھہِ اسۍ تتھ خواندگی پھیش دوان یۅس اسہِ اردو زبانۍ کنۍ  گۅڈے حاصل چھیہ۔ عربی، فارسی لفظن ہندۍ مصمتہ ڈٲلتھ (یہ عمل چھیہ پتمین دہن پنداہن ؤرین سیٹھا کم گمژ ) یا یمن ہندۍ مصوتہ بدلٲوتھ نتہ ہُررٲوتھ (یہ عمل چھیہ ونہِ جاری) چھہِ اسۍ یمن لفظن ہنز پہچان مشکل بناوان یمہ کنۍ یمن ہنز پرنچ روٲنی ولٹہ پاٹھۍ متاثر گژھان چھیہ۔ یہ اسہِ اردو کنۍ ویود چھہ تتھ پھیش دیُن چھیہ نہ کانہہ دانٲیی۔امہ علاوہ یوتاہ تحریر اعرابو کنۍ مصروف آسہِ، تیوتاہ ییہ پرنس منز دقت۔

یُس رسم خط اسۍ ورتاوان چھہِ اتھ منز چھہِ نہ ژھوٹۍ مصوتہ لیکھنک رواج۔ یمو زبانو پیٹھہ اسہِ یہ اون تمن منز چھہِ صرف تریہ ژھوٹۍ مصوتہ ۔۔ زبر، زیر تہ پیش۔ مگر کاشرِ زبانۍ ہندین ژھوٚٹین مصوتن ہند تعداد چھہ زیادہ۔ لفظن درمیان امتیازی فرق کرنہ خاطرہ بناوۍ اسہِ یمن ژھوٚٹین مصوتن ہندۍ اعراب مستقل تہ لازمی۔  مزید سپد یہ زِ اتھ رسم خطس منز ٲسۍ زیٹھین مصوتن ہندِ خاطرہ اعرابو بدل اچھر ورتاونہ یوان، مگر اسہ کرۍ زیٹھین مصوتن ہندِ خاطرہ تہِ اعرابے تجویز، یمہ کنۍ اعرابن ہند فہرست سانہ خاطرہ زیٹھیوو۔ تاہم ییلہ اسۍ تحریرن پیٹھ اکھ تنقیدی نظر تراوو، اعرابن ہند 80 فی صد ورتاو چھہ غیر ضروری باسان۔ یمے غیرضروری اعراب چھہِ عام لوکن منز کاشر پرنچ ہمت پھٹراوان،  لفظن ہنز پہچان  تہ پرنچ روٲنی متاثر کران۔ کمپیوٹر کہ استعمالہ کنۍ چھہ یمن اعرابن ہندِ خاطرہ” کی سٹروکن” ہند تعداد یوتاہ ہُران زِ کاشر ٹایپ کرنک سون تجربہ چھہ گراں بار سپدان۔ غیر ضروری اعرابن ہنزہ مثالہ چھیہ پیش۔

اکھ  اقتباس چھہ محمد یوسف ٹینگ صٲبن تحریر،  بیاکھ رحمن راہی صٲبن  تہ بیاکھ کامل صٲبن ۔ اکھ چھہ کنوہشتھ ستتھس دوران لیکھنہ آمت، بیاکھ چھہ کنوہشتھ نمنم تھس دوران، تہ بیاکھ پتمین دۅن ؤرین منز۔ یعنی کاشرِ املاہک یس حال تیلہِ اوس سہ چھہ از تہِ۔

p1

اتھ عبارژ منز چھہِ78 لفظن تلہ تہ پیٹھہ 106 اعراب تراونہ آمتۍ۔ پانے کٔرو اندازہ ، ارستتھ لفظ پرنہ خاطرہ چھیہ اسہِ تمن اعرابن ہنزہ تقریبا ڈۅڈ گنہ رزہ گنڈنہِ پیوان۔ امہ پتہ پنژہہِ وہرۍ لیکھنہ آمتس بنمس اقتباسس منز چھہِ 59 لفظ مگر 79 اعراب چِھکھ پیٹھہ تہ تلہ تراونہ آمتۍ۔

p2

حال حالے لیکھمتس بنمس اقتباسس منز 55 ہن لفظن منز 58 اعراب ورتاونہ آمتۍ۔

p3

 یم ترشوے اقتباس چھہِ اعرابن ہندِ فضول ورتاوچہ مثالہ پیش کران۔گۅڈنکۍ زہ زیادہ تہ ٲخری کم۔ وۅنۍ پریوکھ یم اقتباس کم کھۅتہ کم اعرابو سان۔ 

یمہ برونہہ یم تریہ جلد چھاپ کرنہ آمتۍ چھہِ تمن منز چھہِ الہ پلہ 19200 لفظ تہ تہندۍ معنی بیترِ درج۔ یتھ ژورمس جلدس منز چھہِ "ڑ” اچھرہ پیٹھہ "غ” اچھرس تام 2975 لفظ تہ محاورہ بیترِ سۅمبراونہ آمتۍ تہ یتھہ پاٹھۍ چھہِ ونس تام ڈکشنری ہندین ژۅن جلدن منز تقریبا 26175 لفظ بیترِ تہ تہندۍ معنی درج کرنہ آمتۍ۔ میہ چھیہ وۅمید زِ باقی اچھر یِن وۅنۍ اکس جلدس منزجمع کرنہ تہ شاید ما آسہِ سے کاشرِڈکشنری ہند ٲخری حصہ۔

 اسہِ کرۍ 106 بجایہ صرف کاہ(11) اعراب استعمال تم تہِ امہ مۅکھہ زِ اسہِ چھہ وۅنۍ اعراب لگٲوتھ عبارت پرنک تیوت عادت گومت زِ ساری اعراب یکدم تھود تلنۍ باسہِ عجیبے ہیو۔ نتہ زن چھیہ نہ یمن ہنزتہِ ضرورتھے۔ وچھون وۅنۍ بیاکھ عبارت کم اعرابو سان۔

سۅمبرنہِ منز چھیہ غزلو تہ متفرقہ ژمصراے کیو مفرد شعرو علاوہ ژورِ قسمہ نظمہ شامل: پابند، بے قافیہ، نیم آزاد۔ وزن چھہ مقداری تہِ ورتاونہ آمت تہ غیر مقداری تہِ۔ بیانہ کیوکلہم تہ ضمنی تقاضو مطابق تہ لہجہ چہ کھسہ وسہ کیو رفتارہ موافق چھہ ریوایتی عروضہ نشہ انحراف تہِ سپدمت، تاہم چھیہ نہ کانہہ تہِ نظم خالص نثری۔

یتھ اقتباسس منز آے وۅنۍ 79 بجایہ صرف شیہ (6) اعراب ورتاونہ۔وچھو وۅنۍ تریم اقتباس کم اعرابو سان:

” میہ اوس کالجس منز گۅڈنچہ لٹہِ کلاس روٹمت۔ کتاب ٲسم اتھس کیتھ زِ اتھۍ منز باسیوم کُس تام لڑکہ ژول ژھپھ کٔرتھ کلاسہ منزہ۔ میہ  پرژھ لڑکن یہ کُس ژول۔ اتہِ دیت نہ کٲنسہِ تہِ جواب۔ دویمہ دۅہہ ژول یہ بییہِ رٲسہ پاٹھۍ۔ ژھاے گراے وچھمس تہ زونُم یہ چھہ شیخ صٲبن لڑکہ فاروق عبداللہ۔” 

یتھ اقتباسس منز ورتٲو اسہِ 58 ہو بجایہ صرف (18) اعراب۔ ترشونی اقتباسن منز وچھوہ تۅہہ زِاعرابن ہند استعمال کوتاہ فضول چھہ، خاص کر یمن ہوین لفظن منز: لفظ (لَفٕظ)، منز (مَنٛز)،درج (دَرٕج)، ڈکشنری (ڈِکشَنٔری) ، جمع (جَمع)، غزلو (غَزلَو)، متفرقہ (مُتفِرقہٕ)، وزن (وَزَن)، انحراف (اِنحراف)، سپدمت (سَپُدمُت)، لڑکن (لٔڑکن)،  بیترِ۔لفظ اعرابو روٚس لیکھنچ حکمت چھیہ ننۍ۔ اکھ یہ زِاعرابن ہندۍ کنڈۍ چھہِ نہ اچھن سنان تہ نظر چھیہ نہ اعرابن ہندس گاسلاتس منز راوان۔سطرن درمیان یس جاے پرنچہ آسانی خاطرہ تراونہ یوان چھٮہ، سۅ چھیہ نہ پیٹھمہ لٲنہِ ہندیو بنمیو تہ بنمہ لٲنہِ ہندیو پیٹھمیو اعرابو ستۍ برنہ یوان۔ ترٮن پیراگرافن منز انۍ میہ 208 اعراب بچت۔ یم گیہ 208 "کی سٹروکن” ہنز بچت۔ وقت تہِ  لگہِ کم، جہد تہِ لگہِ کم۔

کم کھۅتہ کم تہ خالص ضروری اعراب ورتٲوتھ تحریر لیکھنک تجربہ کور میہ کاشر اخبار انٹرنیٹ سایٹہِ تہ نیب رسالس منز۔ یم دۅشوے تجربہ رودۍ کامیاب۔ کاشر اخبارکۍ پرن والۍ ٲسۍ نہ ادیب بلکہ عام لوکھ یمن نہ کاشر پرنک کانہہ تجربہ اوس۔ سایٹہِ پیٹھ موجود سروے مطابق ٲس نہ یمن عام لوکن اعراب ورٲے تحریر پرنس منز کانہہ دقت یوان۔ یہند ردعمل اوس زیادہ اہم تکیازِ یمن اوس نہ سانین ادیبن ہندۍ پاٹھۍ اعرابی تحریرس عادت گومت۔ میانیو یمو تجربو تلہ چھیہ یہ کتھ صاف زِ کم اعراب وول تحریر پرنس چھیہ نہ عملی طور کانہہ دقت پیش یوان، بس چھہِ نام نہاد علمی اعتراض کرنہ یوان۔

پیٹھمہ بحثہ تل چھیہ کتھ صاف زِ سانہِ املاہک اکھ زبردست چلینج چھہ امہ منزہ غیرضروری اعراب کم کرنۍ تاکہ کمپیوٹر تہ انٹرنیٹ کین امکاناتن ہندِ خاطرہ بنہِ نہ یہ حوصلہ شکن ٹھور۔ بہ چھس اعراب کم کرنہ کس سلسلس منز تمن سفارشاتن پیٹھ غور کرنچ دعوت دوان یمو سیتۍ نیبک پریتھ شمارہ عبارت چھہ تہ یمہ مضمونک املا تہ اکھ مثال پیش کران چھہ


[1] کاشرس منز چھہ نہ رسم خطک کانہہ مسلہ۔ علاوہ رسم خطن ہند مسلہ چھہ دراصل کشیرِ نیبرِمٮن کاشرٮن ہند ۔ مگر اتھ چھیہ ہنگہ تہ منگہ کشیرِ سیتۍ واٹھ دنچ کوشش کرنہ یوان۔ ہندی رسم خطچ سفارش چھہِ خاص کرسانۍ پنڈت بٲے کران یم کشیرِ نٮبر ہندوستانس منز چھہِ۔ رومن رسم خطچ سفارش چھہِ اکثرتم حضرات کران یم ہندوستانہ نٮبر انگلستان، امریکہ بیترِ جاین چھہِ۔کشیرِ نٮبر روزِتھ چھیہ کاشرٮن ہنز دوٚیم پے اردو فارسی رسم خط نش اتھہ چھلان یمیک بوٚڈ وجہ یمن جاین ہند تعلیمی نظام چھہ۔ ہندوستانس منز چھہ سکولن منز ہندی تہ امیک رسم خط پرناونہ یوان تہ یتھے پاٹھۍ انگلستان تہ امریکہس منز رومن رسم خط۔ لہذا چھیہ کاشرٮن ہنز دوٚیم پے تمہِ نش تہِ اتھ چھلان یہ تنہدس مٲلس ماجہ اردو لیکھن پرُن زاننہ کنۍکاشرس نسبت تگان اوس۔ کاشرِ زبانۍ ہند بول چال چھہ البتہ پننہ پننہ رنگہ قایم روزان، مگرسہ تہِ اکس حدس تامے یعنی بنیادی طورپننس مٲلس ماجہ علاوہ پیترن، پۅپھن، ماسن، مامن ستۍ کتھ باتھہِ ہندس حدس تام۔ مگر حقیقت چھیہ یہ زِ تریمہِ پیہ تام چھیہ زبان تہِ ختم آسان گمژ یس زن تمن حالاتن منز قدرتی تہ لازمی چھہ۔ علاوہ رسم خطن ہنز سفارش چھیہ دراصل نٮبرمٮن کاشرٮن ہنز کاشرس نکھہ روزنچ تہ زبانۍ ہند سلسلہ پننٮن بچن منز جاری تھاونچ کوشش۔مگر حقیقت چھیہ یہ زِیم ساریۍ کوششہ چھیہ بٮہ کار۔ یم چھیہ نہ آبہ نٮبر درامژِ گاڈِ ہنزِ ڑھرٹہِ علاوہ بییہ کینہہ۔ یہ مسلہ کشیرِ تام واتناون تہ اتھ کشیرِ اندرمٮن ادارن ہنز سرپرستی ہند مطالبہ کرن چھہ مضحکہ خیز۔کشیرِمنز چھہ نہ رسم خطک کانہہ مسلہ، تکیازِیُس رسم خط اسۍ کشیرِ منز ورتاوان چھہِ ،سہ چھہ تتہِ سارنے ویوٚد۔ البتہ چھہ تتہِ املاہک مسلہ یُس توٚت تام جاری روزِ یوٚت تام نہ زبان عام لیکھہ پرِ منز ییہ۔

[2] بہ اوسس 2005 دوران انٹرنیٹس پیٹھ  کاشر اخبار ناوہ اکھ اخبار تقریبا روزانہ شوقیہ کڈان۔  یمیک کینہہ آرکاییو انٹرنیٹس پیٹھ ونہِ موجود چھہ۔ کاشراخبار ڈاٹ کام۔ اخبارن منز چھیہ زیادہ سیاست آسان یۅس میہ سخ کھران چھیہ، مگر مقصداوس کاشِر خواندگی عام کرنۍ۔ اتھ اخبارس ٲسۍ  فی ہفتہ  زہ تریہ ہتھ لوکھ ہِٹ کران تہ شاید پران تہِ۔ مگر مسلہ اوس یہ زِ گۅڈہ آسہ خبرہ ان پیجس منز کمپوز کرنہِ پیوان، تمہ پتہ تم ای پی ایس امیجن منز تبدیل کرنہِ پیوان تہ تمہ پتہ سایٹہِ پیٹھ اپلوڈ کرنہِ پیوان۔ اکھ زیٹھ ہۅدہ ہر۔ امیک حل کوڈ مظفر عازم صٲبن ییلہ میہ تمن سیتۍ رابطہ سپد تہ یہ معلوم سپد زِ تم چھہِ کاشرس فانٹس پیٹھ کٲم کران یُس اسۍ  مایکروسافٹ ورڈ علاوہ انٹر نیٹس پیٹھ تہِ ورتٲوتھ ہیکون۔ نیب رسالچ ویب سایٹ چھیہ عازم صٲبنس فانٹس منز دستیاب۔ اتھ ویب سایٹہ پیٹھ یم تہ نکارشات چھہِ تمن ہند پریتھ لفظ چھہ سرچیبل تہ کانہہ تہ حصہ ہیکہِ کاپی کٔرتھ کنہِ تہِ پلیٹ فارمس پیٹھ ورتاونہ یِتھ۔

 [3]  It’s improtant thet we uderstand how we read. اگر توہہِ یہ جملہ ترین لفظن منز غلط ہیجہ آسنہ باوجود پرُن توٚگ، کتھ چھیہ صاف زِ اسۍ چھہ لفظن ہنزہ کلہم شکلہ عادتا پران، تمن ہند پھور نہ۔ اگر اسہ انگریزی زبان یتھہ پاٹھۍ پرنۍ تگہِ ، کاشر کیازِ تگہ نہ۔ کاشر چھیہ اسہِ پننۍ زبان۔ یمن حضراتن یہ خدشہ چھہ زِ اگر لفظ پھورہ مطابق لیکھنہ ییہ نہ، سہ پرُن چھہ مشکل، تمن پزِ اتھ متعلق دوبارہ سوچُن۔ حقیقت چھیہ یہ زِ لفظ اگرچہ اچھرن ہندۍ مرکب چھہِ مگر یوت تام پرنک تعلق چھہ،  لفظ چھہِ بصری صرژن ہندس صورتس منز پرنہ یوان۔

 

 

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s