آلیک پوشنول


Masmalar
اشاعت 1955

ییتہ سانیو اکثر شاعرو پننۍ ابتدایی شاعری مشرٲوتھ کھٹتھ چھیہ تھٲومژ، امین کاملن چھہ پننہِ اولین شعرہ سۅمبرنہِ "مس ملر” منزہ واریاہ کلام پننس کلیاتس (زیر ترتیب) منز شامل کورمت۔ یہندِ ابتدایی کلام منزہ چھیہ یہ اکھ نظم تہِ:

آلیک پوشنول
امین کامل

ہا نندرِ متیو نیر یہ منزُل تہ گگس تراو
مژراو اچھ کڈ واش پکھن ہاو کینہہ چکہ چاو
وۅتھ تازہ سفر پراو
نٔو زندگیا چھاو

رنگہ رنگہ ولاں جامہ گلن رنگہ روس افتاب
وچھ ٲنہ جۅین منز چھہ نژاں آب زن سیماب
ژہ تہِ لاگ کینہہ بیتاب
زیو چانۍ چھیہ مضراب

گیہ بٲے تہ بند چانۍ ہیتھ کرتام پنن ساز
انجام تہند پوشہ چمن لولہ ہژ آواز
چھیہ نہ زندگی کانہہ راز
آغاز چھہ پرواز

پتھ زندگی زانہہ ہیوت نہ وچھتھ شراکھ تہ اہریز
چھہ نہ رودمت ازتام عشق کانسہِ ہند آویز
پھٹراو یہ پرہیز
کر نار دلک تیز

ونۍ چھی ژیہ دوان پوشہ چمن تھارِ٭ وچھان پوش
تنہا ژہ بہت دورِ نہ غیرت تہ نہ کانہہ جوش
چھکھ یوت کیا مدہوش
سونتس ژہ ہنا توش

وۅتھ تراو یہ غم غصہ منزُل واے سۅکھک ساز
مضراب دِ سازس تہ کنی لولہ ہژ آواز
رٹھ یاونک انداز
پرواز کر پرواز

یہ بٲتھ چھہ دعوت زندگی۔ وۅمید یودوے تمہ زمانہ ترقی پسندی ہنز علامت ٲس، یہ بٲتھ ہیکون از تہِ امہ کہ مرکزی جذبہ کنۍ پٔرتھ۔ مایوسی، غم، غصہ، تنہا پسندی چھہ نہ انسانہ سند ِ روحک جوہر۔ کامل چھہ "مس ملر” کس دیباچس منز ونان زِ اتھ منز شامل کینژن چیزن منز چھہِ کینہہ عروضی تجربہ کرنہ آمتۍ۔ اگر یہ پزۍ پاٹھۍ عروضی تجربے چھہ، یتھ نظمہِ منز چھہ کینژن جاین فارسی تقطیعی وزنہ مطابق کھوند لگان، پرنہ کنۍ نہ کینہہ۔ کامل سنزِ ابتدایی شاعری ہنز خاصیت چھیہ امیک روایتی عشقیہ شاعری نہ آسن، یۅس نہ اسۍ خاص کر راہی، فراق یا عازم سنزِ شاعری منز وچھان چھہِ۔ اتھ منز چھہ ترقی پسندی ہند واریاہ دخل۔ اتھ منز یمہ عشقچ دعوت چھیہ سہ چھہ زندگی ہند عشق تہ امیک لول۔ "مس ملر” شعرہ سۅمبرنہِ منز چھہ نہ خلاف معمول اکھ تہِ عشقیہ غزل یا نظم موجود ییلہ زن اتھۍ زمانس منز باقی ترقی پسند روایتی عشقیہ غزلو سیتۍ تہِ پننۍ تخلیقی ٹیٹھ موران ٲسۍ۔ کاملس کشمیر یونیورسٹی ہندِ کاشرِ شعبہ کس پروپیگنڈاہس تحت اکھ خالص رومانی شاعر گنزرن والین ہندِ خاطرہ اکھ لمحہ فکریہ۔

ممکن چھہ کانہہ ما ونہِ نہ اتھ شاعری یا میانۍ پاٹھۍ ونیس صرف بٲتھ۔ مگر اکس نظمہِ تہ بییس نظمہِ یا اکس بٲتس تہ اکس نظمہِ منز چھہ نہ قسمک یا چیزک فرق، بلکہ ہیکہِ یہنز حیثیت، یہند درجہ الگ الگ ٲستھ۔ شاعری ہندۍ ظاہری جز وزن، قافیہ، ردیف، فارم، پیکر، استعارہ تہ مخصوص شعری زبانۍ ہند ورتاو چھہ یتھ بٲتس منز تہِ تہ کنہِ اعلی نظمہِ منز تہِ۔ لہذا ہیکو نہ اسۍ یتھین چیزن غیر شعر یا غیر شاعری ؤنتھ۔ یہ چھہ ممکن یم بٲتھ ہیکن ادبہ کس اعلی تہ درسی تددیسی سوتھرس پیٹھ شاعری ہندۍ صرف بنیادی درجکۍ چیز تہ تمہ کنۍ معمولی حیثیکتۍ ٲستھ۔

٭ خبر یہ لفظ پورا میہ صحیح پاٹھۍ

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s