وزنن ہنز پارۍ زان (5): سادہ ماترا وزن


کینژن زبانن منز چھیہ وزنچ بنیاد نہ ہیجل تہ نہ تاکید بلکہ ماترا (mora)۔ یعنی یمن زبانن منز چھہ یکسان ماترا تعداد ورتٲوتھ شاعری منز آہنگ پیدہ کرنہ یوان۔ ماترا کہ تصورچ زانکاری کرون اسۍ تعریف کرنہ بجایہ یتھہ پاٹھۍ حاصل۔

(1)ہیجلٮن ہنزہ گۅڈہ آوازہ چھیہ نہ ماتراہن منز گنزرنہ یوان۔ یعنی مثالہِ پاٹھۍ ‘جر’ تہ ‘جار’ لفظن ہند جیم /ج/چھہ نہ ماترا ماننہ یوان۔

(2) ہیجلیک تھوٚنگ اگر ژھوٚٹس مصوتس پیٹھ مشتمل آسہِ، سہ چھہ اکس ماترا برابر تہ اگر زیٹھس مصوتس پیٹھ مشتمل آسہِ تیلہ چھہ دۅن ماتراہن برابر۔ یعنی ‘جر’ لفظک ژھوٚٹ مصوتہ زبر/اَ/ چھہ اکس ماتراہس برابر تہ ‘جار’ لفظک زیوٹھ مصوتہ یعنی الف مد/آ/ چھہ دۅن ماتراہن برابر۔

(3) ہیجلچ پوٚت آواز تہِ چھیہ اکس ماتراہس برابر۔ یعنی ‘جر’ تہ ‘جار’ لفظن ہند پتم /ر/ چھہ اکس ماترا برابر۔ یمن دۅن لفظن ہند ماترا تعداد چھہ یتھہ پاٹھۍ:

لفظ گۅڈہ آواز تھوٚنگ پوٚت آواز کل ماترا
جر ج زبر ر
ماترا X 1 1 2
جار ج آ (ا +ا) ر
ماترا x 2 1 3

یہ گژھہِ یاد تھاون زِ اکھ زیوٹھ مصوتہ چھہ دۅن ژھۅٹین مصوتن برابر تصور کرنہ یوان۔ مثلا ‘جار’ لفظک زیوٹھ مصوتہ /آ/ چھہ دۅن الفن یعنی دۅن زبرن برابر ماننہ یوان۔

(4)اگر ہیجلس منز اکہِ کھۅتہ زیادہ پوٚت آوازہ آسن (عموما مصمتن ہنز جورۍ)، تم چھیہ زہ ماترا گنزرنہ یوان۔ مثلا ‘مست’ لفظس منز چھہِ پتہ کنہِ زہ مصمتہ /س/ تہ /ت/ یکوٹہ ، یم دۅن ماتراہن برابر چھہِ۔ امہِ لفظک ماترا تعداد:

لفظ گۅڈہ آواز تھوٚنگ پوٚت آواز پوٚت آواز کل ماترا
مست م زبر س ت
ماترا x 1 1 1 3

ماترا وزن ہیکہِ سادہ تہِ ٲستھ تہ پیچیدہ تہِ۔ سادہ ماترا وزنن منز چھہ ہیجلۍ وزنکۍ پاٹھۍ خالص تعدادہ سیتۍ آہنگ پیدہ کرنہ یوان۔ ہندی زبانۍ ہند مقبول وزن چوپایی چھہ سادہ ماترا وزنچ مثال۔ اتھ وزنس منز چھہ پریتھ پد (مصرعہ) شراہن (16) ماتراہن برابر۔ وچھو بنم پریژھ تہ امچ تقطیع:

ایک راگ سے رہتی گاتی
چلے رات دن کہیں نہ جاتی

ایک راگ سے رہتی گاتی =   16   ماترا
12 12 2 11 2 22
چلے رات دن کہیں نہ جاتی =   16   ماترا
1 2 12 11 1 2 1 22

دۅشونی مصرعن منز چھیہ ماترا تعداد برابر مگر ماتراہن ہنز چھیہ نہ مصرعن منز کانہہ خاص ترتیب یمہ کنۍ سادہ ماترا وزنن منز پدۍ قایم چھہ نہ گژھان۔

سادہ ماترا وزن چھہ ہندی علاوہ واریاہن ہندوستانۍ زبانن منز ورتاونہ یوان۔ یہ ورتاون واجینۍ بیاکھ زبان چھیہ جاپانۍ۔ اتھ زبانۍ منز چھہِ ماترا اصطلاح پاٹھۍ haku یا onji ونان۔ عام طور چھہ جاپان نیبر یہ زاننہ آمت زِ امہِ زبانۍ ہنزِ شعرہ ذٲژ ہایکوہس منز چھیہ پانژھ ہیجلۍ، ستھ ہیجلۍ، پانژھ ہیجلۍ ترتیب۔ مگر حقیقتا چھیہ امچ ترتیب پانژھ ماترا، ستھ ماترا، پانژھ ماترا۔ ییتہِ نس روزِ نہ ماتراہو مطابق اکہ جاپانۍ ہایکوہچ تقطیع دلچسپی نش خالی۔اسۍ دمون ہایکو انگریزی اچھرن منز۔ ماتراہن ہند ژھین ییہِ ہایفن سیتۍ ظاہر کرنہ۔

na-ra ma-na-e
shi-chi-do-o ga-ra-n
ya-e za-ku-ra

اتھ منز چھیہ خاص کر دوٚیم لٲن توجہس لایق۔ اتھ منز چھہِ ضرورتہ مطابق ستھ ماترا، مگر پانژے ہیجلۍ۔ ہایکوہچ دوٚیم لٲن گژھہِ ستن ماتراہن برابر آسنۍ۔ گۅڈنکہِ لفظک ٲخری ہیجل چھہ doo یس دۅن ماتراہن(do-o) برابر چھہ۔ یتھے پاٹھۍ چھہ دوٚیمہِ لفظک ٲخری ہیجل ran دۅن ماتراہن (ra-n) برابر

کاشرس منز سادہ ماترا وزنہ چہ مثالہِ خاطرہ وچھون کہن (11) ماتراہن ہند یہ لل واکھ:

کُس ڈنگہِ تہ کُس زاگہِ
2 12 1 2 12 11
کٚس سر وترِ تیلی
2 2 12 22 11
کُس ہرس پوزِ لاگہِ
2 21 12 12 11
کُس پرمہ پد میلی
2 12 2 22 11

پیٹھمہ پریژھہِ ہندس چوپایی وزنس پیٹھ وچھون یہ لل واکھ:

تلہ چھے زیس تے پیٹھہ چھکھ نژان
ونتہ مالہِ وۅندہ کیتھہ پژان چھے
سورے سۅمرتھ ییتۍ چھے مۅژان
ونتہ مالہِ ان کیتھہ رۅژان چھے

تلہ چھے زیس تے پٮٹھہ چھکھ نژان 16 ماترا
11 2 2 2 11 2 1 2 1
ونتہ مالہِ وۅندہ کٮتھہ پژان چھے 16 ماترا
2 1 12 11 1 1 1 2 1 2
سورے سۅمرتھ ییتۍ چھے مۅژان 16 ماترا
2 2 22 2 2 1 2 1
ونتہ مالہِ ان کٮتھہ رۅژان چھے 16 ماترا
2 1 12 2 1 1 1 2 1 2

وچھو امہِ واکھہ کین کینژن لفظن ہنز ماترا تفصیل:

لل دیدِ ہندِ واکھہ کین کینژن لفظن ہند ماترا تعداد

کل ماترا

دوٚیم ہیجل

گۅڈنیک ہیجل

لفظ
پوٚت آواز تھوٚنگ گۅڈہ آواز پوٚت آواز تھوٚنگ گۅڈہ آواز
إ ل زبر ت تلہ
2 1 x 1 x
إ ٹھ ی پ پیٹھہ
2 1 x 1 x
إ د زبر وۅ وۅندہ
2 1 x 1 x
إ تھ   1 ی ک کیتھہ
2 1 x 1 x
زیر ل آ (ا+ا) م مالہِ
3 1 x 2 x
پیش+زیر     2 چھ چھے
2 2 x
زبر+زیر   3 ت تے
2 2 x
إ ت ن زبر و ونتہ
3 1 x 1 1 x
س زیر+پیش ز زیس
3 1 2 x
کھ پیش چھ چھکھ
2 1 1 x
تۍ   4 زبر ی ییتۍ
2 1 1 x
ن زبر ان
2 1 1
ن آ(ا+ا) ژ زبر پ پژان
4 1 2 x 1 x
ن آ(ا+ا) ژ ۅ م مۅژان
4 1 2 x 1 x
ن آ(ا+ا) ژ ۅ ر رۅژان
4 1 2 x 1 x
تھ اِ ر م ۅ س سۅمبرتھ
4 1 1 x 1 1 x

(1) دوچشمی اچھر چھہِ اکۍ سے مصمتس پیٹھ مشتمل۔ (2) "چھے” لفظس منز چھہِ تھوٚنگس منز زہ مصوتہ یتھ ڈپتھانگ dipthong ونان چھہِ۔ پیش تہ زیر۔

(3) "تے”لفظس منز تہِ چھہِ تھوٚنگس منز زہ مصوتہ یعنی ڈپتھانگ۔ زبر تہ زیر۔ اتھ لفظس ہیکہِ نیم مصوتہ /ی/ سیتۍ تہِ یتھہ پاٹھۍ تقطیع سپدتھ: /ت+ زبر+ ی/۔ امہِ تقطیع کنۍ تہِ چھہ یہ دۅن ماتراہن برابر۔ (4) یہ پوٚت آواز چھیہ نہ دۅن مصمتن پیٹھ مشتمل، بلکہ اکس مصمتس پیٹھ یتھ منز اوٚڈ یے /ت/ صمتچ تالریت palatalizationہاوان چھہ۔ /تۍ/ چھہ مفرد تالرۍ مصمتہ۔

ماترا وزن سمجنہ خاطرہ کرۍ میہ یم واکھ پیش، حالانکہ یمن واکھن ہنز یہ ماترا برابری چھیہ اتفاقی تکیازِ یمن واکھن ہند بنیادی وزن چھہ ہیجلۍ وزنے۔ یتھے پاٹھۍ چھیہ کینژن واکھن ہنز تاکیدی برابری مدنظر کینژن واکھن منز تہ پورہ کاشرِ شاعری منز تاکیدی وزن آسنک دوکھہ لوٚگمت۔

اردو ہندی یس منز مستعمل بحر متقاربکۍ نام نہاد مزاحف وزن چھہِ دراصل ماترا وزنے یم اکہ خاص طریقہ ورتاونہ یوان چھہِ۔ یم خاص وزن یمن اردو والیو بحر میر تہِ ناو کوٚرمت چھہ، چھہ کاشرس منز رفیق رازن ورتاومتۍ۔ اکہ غزلک ماترا تجزیہ چھہ پیش:

سانہِ شہارہ چھہِ قبرستانکۍ ہی آثار
12 121 1 2222 2 122 23
شامہ پتے انہراے کراں چھہ نہ کانہہ بیمار
12 21 122 21 11 2 122 23
اندرہ چھِوا توٚہۍ بٲژ گرکۍ سٲری محفوظ
12 21 2 12 21 22 122 23
نیبرہ میہ وچھمو تۅہہ تہِ چھہ وسۍ پیومت دیوار
12 1 22 11 1 1 2 22 122 23
تاپھ چھہ شامس تام دوان انسانس برٮم
12 1 22 12 121 222 2 23
دورِ چھہ باساں سٮکھ تامتھ گاہے سبزار
12 1 22 2 22 22 122 23
اسۍ چھہِ مسافر یارب اسہِ تتھۍ وتہِ کُن لاگ
2 1 221 22 11 2 11 2 12 23
یتھ وتہِ ترٮن ترٮن دۅہن چھیہ روزاں مشکنۍ دار
2 11 2 2 21 1 22 22 12
یا گوٚو تاپھ عدالت وانن منز ہلکارۍ
2 2 12 221 22 2 122 23
یا تھووکھ سنگین قلاین منز شہجار
2 22 122 221 2 122 23

رفیق راز چھہ اتھ اردو والین ہنزِ پیروی منز 12 ماترا + 10 ماترا (کل 22 ماترا) مانان یس غلط چھہ۔ اردو والۍ چھہِ دراصل اتھ افاعیلن منز (عربی عروض کین پدین منز) گنڈنچ کوشش کران۔ رفیق رازن تہِ چھہِ امہ وزنکۍ شیہ رکن مانۍ متۍ، حالانکہ اتھ وزنس منز چھہ نہ رکنن ہند کانہہ خاص دخل۔ امہ وزنک آہنگ چھہ اتھ بے محل رکن بندی ییرہ والان۔ یہ چھہ بنیادی طور سادہ ماترا وزن یتھ نہ پدین منز گنڈنچ کانہہ خاص ضرورت یا جواز چھہ۔ پدۍ یا افاعیل یا رکن بندی چھہ آہنگ کہ دوٚگن معیارک جواز پیدہ کران مگر یمن وزنن منز چھہ نہ ٹاکارہ پاٹھۍ پدین ہند کانہہ مکرر نمونہ۔

امین کاملن چھیہ 1970 پیٹھے عربی وزنن ہندۍ افاعیل ژٹۍ ژٹۍ لیکھنچ سفارش کرمژ۔ واضح چھہ زِ اتھ سفارشہ پتہ کنہِ چھیہ یہ بصیرت زِ یم وزن چھہِ ژکہِ ماترا وزن تہ یہند یہ کردار چھہ افاعیل ژٹۍ ژٹۍ لیکھنہ سیتی نوٚن نیران۔ اتھ موقفس کٔر تمۍ "میون عروضی سوچ” مقالس منز مزید وضاحت آوازن ہندِ مقابلہ حرفن ہند تصور رٔٹتھ یتھ اسۍ زیادہ انزۍ منزۍ چھہِ۔ تمۍ کرۍ افاعیلن ہندۍ حرف یلہ، بند تہ نتھۍ قسمن منز تقسیم۔ یہ چھیہ دراصل افاعیلن ہنز ماترا تقسیم۔ سہ چھہ اکھ ماترا والین حرفن یلہ آواز ونان، زہ ماترا والین حرفن بند آواز ونان تہ نتھۍ حرفن (مثلا نار، اسمان، سوچ لفظن ہندۍ /ر/، /ن/ تہ /چ/) ہنزِ آوازِ تہِ اکھ ماترا گنزراوان۔ کامل سندین عروضی مقالن منز چھیہ آوازِ، آہنگس تہ لیہ زیادہ اہمیت۔ سہ چھہ نہ قطعا عروضس روایتی تصورن تہ اصطلاحن ہندِ ذریعہ پیش کران۔ حقیقت چھیہ یہ زِ تسندۍ عروضی تجربہ تہِ چھہِ روایتی عروضی ہنرمندی ہنزِ نمایشہ بدلہ مخصوص مقصدن تہ ضرورژن تحت امکاناتن ہندۍ بر کھولان۔ (بحوالہ میون مضمون "کاشرس منز عروضی تجربن ہنز اہمیت”)

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s